تازہ ترین

ایمز جموں کاقیام ،عبداللہ بستی ہی نشانے پر کیوں؟

 سرینگر //سرپرست نیشنل کانفرنس نے محبوبہ مفتی کو ایک تحریری خط لکھ کر جموں میں وجے پور علاقے میں ایمزکیلئے نشاندہی کی گئی گوجربستی کے متاثرین کی بازآبادکاری کیلئے اقدام اٹھانے کامطالبہ کیاہے۔ فاروق عبداللہ کی جانب سے تحریرایک خط میں لکھاگیاہے کہ وجے پور سانبہ کے گوجروں کاایک وفد ان سے ملاقی ہوا جس نے بتایاکہ ایمزجموں کیلئے منتخب کی گئی جگہ سے 250 گوجرکنبوں کودربدرہوناپڑے گا۔انہوں نے کہاکہ انتظامیہ کی طرف سے گوجروں کوبستی چھوڑنے کیلئے کہاجارہاہے اوران کو ایک نالے کے قریب بٹھایاجارہاہے جہاں پران کی حفاظت کیلئے کوئی انتظام نہیں ہے اوربارش سے تباہی ہوسکتی ہے۔فاروق عبداللہ نے متاثرین کی بازآبادکاری کیلئے اقدامات کامطالبہ کیاہے۔دریں اثنانیشنل کانفرنس کے سینئر لیڈر اور ایم ایل اے کنگن میاں الطاف احمد نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ AIIMSکے قیام کیلئے جموںپٹھان کوٹ نیشنل ہائے وے پ

پنتھرس پارٹی کے9ستمبرکے اجلاس سے متعلق تبادلہ خیال

 جموں//نیشنل پنتھرس پارٹی کے سرپرست اعلی پروفیسر بھیم سنگھ نے پنتھرس پارٹی کے لداخ، کشمیر اور جموںکے لیڈروں سے 9ستمبر، 2017کوجموں میں ہونے والے خصوصی اجلاس کے تعلق سے بات چیت کی ۔پارٹی نے کشمیری قیادت کی تعریف کی جنہوں نے تمام ذمہ داریوں کے ساتھ وادی میں خصوصی اجلاس منعقد کرنے کی دعوت دی۔ پروفیسربھیم سنگھ نے پارٹی کی لداخ اور جموں کی قیادت سے تبادلہ خیال کے بعد کشمیر ی قیادت کو یقین دلایا کہ پارٹی کے نمائندوں اور سرگرم اراکین کا ایک خصوصی اجلاس اکتوبر 2017میں کشمیر میں کرایا جائے گا۔انہوں نے کہاکہ پارٹی کا الیکشن ایک طویل عمل ہے جسے تھوڑے وقت میں کشمیر میں کرانا آسان نہیں ہوگا۔راجوری، پونچھ، کٹھوعہ اور جموں کے سرحدی علاقوں کے نمائندوں نے بھی کشمیر میں سالانہ خصوصی اجلاس میں شرکت سے معذور ی کا اظہار کیاتھا کیونکہ تھوڑ ے وقت کے علاوہ موسم کے حالات وہاں آنے جانے کے موافق نہیں ہیں۔پرو

’بیسک کمیونی کیشن ، انٹرپرینرشپ اینڈ ٹیکنالوجی ‘

 جموں//شعبہ اُردوجموں یونیورسٹی کی جانب سے ’’بیسک کمیونی کیشن ، انٹرپرینرشپ اینڈ ٹیکنالوجی ‘‘ کے موضوع پر پروفیسرگیان چندجین سیمینار ہال شعبہ اُردوجموں یونیورسٹی میں یک روزہ ورکشاپ کاانعقاد کیاگیا ۔اس دوران فنشنگ انسٹی چیوٹ نئی دہلی کے ذوالفقاراحمد ریسور پرسن تھے جبکہ ان کے ہمراہ برانڈ ایون جیلسٹ آف فنشنگ سٹڈیو شیکھا مہاجن بھی تھیں۔ ورکشاپ میں طلباء، اسکالرس اورشعبہ اُردوکے فیکلٹی ممبران نے شرکت کی۔ اس موقعہ پر صدرشعبہ اُردو جموں یونیورسٹی پروفیسرشہاب عنایت ملک نے شرکاء کو ریسورس پرسن ذوالفقار احمد کاتعارف پیش کیا۔انہوں نے ورکشاپ کے انعقادکے اغراض ومقاصد بھی بیان کئے۔ ذوالفقار احمد نے ’’بیسک کمیونی کیشن ، انٹرپرینرشپ اینڈٹیکنالوجی ‘‘ یعنی بنیادی بول چال، کاروباراور ٹیکنالوجی کے موضوع پرتفصیلی خیالات کااظہارکیا۔ انہوں نے کہاکہ اللہ ت

جگٹی رنگ روڈ کی تعمیرکی سمت بدلنے کامعاملہ

 جمّوں// نگروٹہ تحصیل کے جگٹی علاقہ میں رنگ روڈ کی تعمیرکی سمت بدلنے کے سلسلے میں مالکان اراضی دیہہ کا ایک وفدشری چھیل سنگھ سابقہ جودیشنل چیئرمین جگٹی صدرت میں محکمہ مال کی طرف سے مانگے گئے عذرات کو لیکر ضلع ترقیاتی کمشنر جمّوں سے ملاقی ہوا ۔کشمیر عُظمیٰ سے باچیت کرتے ہوئے وفد نے مشترکہ طور پر بتایا کہ انہوں نے اپنے تحریری عذرات ضلع ترقیاتی کمِشنرکو پیش کئے ہیں اس ضمن میں ضلع ترقیاتی کمشنر کی طرف سے وفد کو ئی تسلی بخش یقین دہانی نہیں کرائی گئی ہے جس سے علاقہ کے عوام سراپا احتجاج ہیںانہوں نے الزام لگایا کہ مالکان آراضی کی اس نسبت میں بارہا مانگوں کے باجود نیشنل ہائی وئے اتھارٹی آف انڈیا نے متذکرہ بالا رنگ روڈکو سرکاری زمین زیر خسرہ نمبر 1166واقع لنک روڈ ٹانڈہ پر تعمیر کرنے کے بجائے دیدہ دانستہ طور پر ناروا سلوک کے چلتے بذریعہ محکمہ مال مالکان دیہہ کی ملکیتی آراضی کی ہی نشاندہی ک

بجلی اورپانی کی عدم دستیابی کیخلاف احتجاجی ریلی

 جموں//پینے کے پانی اوربجلی کی عدم دستیابی کو لے کر کافی تعدادمیں شیوسینااورڈوگرہ فرنٹ کے کارکنوں نے احتجاجی مظاہرہ کیااورپریڈ، موتی بازار میں ریلی نکا ل کرآمدورفت میں خلل پیدا کیا۔موتی بازار، دیوان مندر،پکہ ڈنگا، جین بازارورانی پارک علاقوں کے لوگ باہرنکل آئے اورپریڈگرائونڈکے نزدیک زورداراحتجاج کیا۔ مظاہرین کاکہناتھاکہ شہرجموں میں بجلی اورپینے کے پانی کی کمی کی وجہ سے ان کاجینادوبھرہوگیاہے۔امس کے ساتھ ساتھ شہر میں سڑکوں کی حالت بہت ہی خستہ ہوچکی ہے کہ راہ چلنا دشوار بن گیاہے۔خاص طور سے جب بارش ہوتی ہے کہ شہرجموں کی خستہ حال سڑکیں تالابوں اور جھیلوں میں تبدیل ہوجاتی ہیں۔انہوں نے کہاکہ حکومت کے پاس ان سڑکوں کی حالت کوبہتربنانے سے متعلق نہ تو کوئی منصوبہ ہے اور نہ ہی اس ضمن میں کوئی قدم اٹھایاجارہاہے جس کے نتیجہ میں ان سڑکوں کی حالت دن بدن خراب سے خراب ترہوتی چلی جارہی ہے ۔اشوک گپت

اے۔ آئی ورکروں کی تعیناتی کیلئے جاری نوٹیفکیشن میں ترمیم کامطالبہ

 جموں//اگرچہ محکمہ انیمل ہسبنڈری جموں کی جانب سے درجنوں بارہویں پاس نوجوانوں کو اے۔آئی ورکر یعنی انیمل انسمی نیشن (پیرابیٹ)کے پانچ ماہ کے تربیتی کورس کے تحت تربیت دی گئی ہے تاکہ ضرورت پڑنے پردرجہ چہارم کے طورپر محکمے کی افرادی قوت بڑھاتے وقت باصلاحیت اورتربیت یافتہ نوجوانوں کومحکمہ میں خدمات کیلئے منتخب کیاجائے لیکن ڈائریکٹوریٹ آف انیمل ہسبنڈری تالاب تلوجموں کی جانب سے مورخہ 2اگست 2017 کوایڈورٹائزمنٹ نوٹس نمبر 78، ڈی اے ایچ آف 2017،اے آئی ورکروں کی تعیناتی کیلئے طلب کی گئی درخواستوں میں آے۔آئی ورکرکی پانچ ماہ کی تربیت حاصل کرنے والے اُمیدواروں کیلئے الگ سے نمبرات نہیں رکھے ہیں جس کی وجہ سے تربیت یافتہ درجنوں نوجوانوں میں شدیدناراضگی پائی جارہی ہے۔ان کاکہناہے کہ محکمہ کی جانب سے پانچ ماہ کی تربیت دینے کاکیافائدہ ہے اگر اے آئی ورکرکیلئے طلب کی گئی درخواستوں کی نوٹیفکیشن میں ا

مسلم پرسنل لاء میں مداخلت ناقابل قبول :شیراز ازہری

 جموں// جمیعت علما فروغ تعلیمات اسلامی جموں و کشمیر نے طلاق ثلاثہ جیسے  مذہبی معاملات میں بے جا مداخلت ناقابل قبول ہے ۔یہاں جاری پریس بیان میں جمیعت علما فروغ تعلیمات اسلامی جموں و کشمیرکے ریاستی صدرشیراز ازہری نے کہا کہ عرصہ دراز سے کچھ عناصر سپریم کورٹ کا سہارا لے کر مسلمانوں کو مذہب کے نام پرحراساں کرتے چلے آرہے ہیں جسے بغور سماعت کرنے کے بعد سپریم کورٹ کو معاملہ پالیمنٹ کو بھیجا اور چھ ماہ کے اندر اس پر قانون بنانے کے لئے کہا۔ ازہری نے کہا کہ ہم سپریم کورٹ کا احترام کرتے ہیں ساتھ ہی چھ ماہ کے طویل عرصہ تک طلاق ثلاثہ پر لگائی گئی پابندی کے سلسلے میں ہم عدالت کو رجوع کریں گے تاکہ اس مدعے کو زیادہ طول نہ دے کر سرے سے خارج کیا جائے اور آئینی طور پر تمام مذاہب کے ساتھ مسلمانوں کو جو مذہبی آزادی حاصل ہے اسے برقراررکھا جائے ۔ازہری نے کہا کہ دنیا کا کوئی بھی ایسا مسئلہ نہیں ہے

ایمبولینس گاڑی کی عدم دستیابی پر راجوری میں پرتشدد مظاہرے

راجوری //ضلع ہسپتال راجوری کے باہر اس وقت حالات کشیدگی اختیار کرگئے اور پرتشدد مظاہروں کے دوران ایڈیشنل ایس پی ،ایس ایچ او اور پولیس اہلکاروں سمیت آٹھ افراد زخمی ہوئے جب ہسپتال میںایمبولینس گاڑی نہ ملنے پر کالج طلباء نے شدید احتجاج کیا ۔اٹھارہ سالہ کالج طالب علم تنویر حسین ولد محمد حفیظ ساکن نیروجال تھنہ منڈی کالج جارہاتھا جس دوران کالج کے گیٹ پر پہنچنے پر اچانک سے اس کی حالت بگڑ گئی اوراسے دیگر ساتھیوں نے اٹھاکر ہسپتال پہنچایاجہاں ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دیا۔اس دوران طلباء نے ساتھی کی لاش ہسپتال کے باہر رکھ کر نعرے بازی شروع کردی اور الزام لگایاکہ انہیں ایمبولینس گاڑی فراہم نہیں کی گئی ۔ ان کے احتجاج میں شدت آگئی اور پھر وہ ہسپتال سے نکل کر نیچے سڑک پر آگئے جہاں کھیورہ کے مقام انہوںنے روڈ بند کرکے محکمہ صحت کے خلاف شدید نعرے بازی کی ۔حالات کو دیکھتے ہوئے ایس ایچ او راجوری الطاف اح

پر اسرار حالات میں بال کٹنے کے3 تازہ واقعات

جموں //گزشتہ 24گھنٹے کے دوران پر اسرار حالات میں بچیوں کے بال کاٹے جانے کے 3تازہ واقعات کے بعد علاقہ میں سراسیمگی پھیل گئی ہے ، اس طرح پچھلے چند دنوں میں اس طرح خواتین کے بال کاٹے جانے کے واقعات کی تعداد 10ہو گئی ہے ۔دو معاملات سانبہ ضلع میں پیش آئے جہاں دونوں بچیوں کی عمر 10برس کے قریب ہے ۔ خوشی دختر دیسراج ساکن راکھا سانبہ شام کے وقت اپنا اسکول بیگ لینے کیلئے گھر کے چھت پر گئی تو اس نے چیخ ماری اور وہ بیہوش ہو گئی۔ لڑکی کی ماں فوری طور پر چھت پر پہنچی اور اس نے شور مچایا، اہل خانہ نے لڑکی کو ہسپتال منتقل کیا جہاں ڈاکٹروں نے اسے 4گھنٹے تک نگرانی میں رکھنے کے بعد ڈسچارج کر دیا۔ قابل ذکر ہے کہ گزشتہ روز بشناہ اور آر ایس پورہ میں دو خواتین کے بال پر اسرار طور پر کٹے ہوئے پائے گئے تھے جب کہ اس سے قبل جموں کے دیہاتی علاقوں میں 5ایسے واقعات پیش آ چکے ہیں۔ سانبہ میں پیش آئے دوسرے واقعہ م

نوجوان ریاست کی تعمیروترقی میں اپنارول اداکریں:ذوالفقار

جموں//وزیربرائے اطلاعات، خوراک، سول سپلائز اورامورصارفین چودھری ذوالفقار علی نے نوجوانوں سے کہاکہ وہ تعمیروترقی کے عمل میں مشعل راہ بنیں اورجموں کشمیرکو ملک کی ایک ترقی یافتہ ریاست بنانے میں نمایاں کرداراداکریں۔وزیرموصوف یہاں گورنمنٹ کالج برائے خواتین گاندھی نگر جموں میں طلباء اورکالج کے عملہ سے خطاب کررہے تھے ۔ اس تقریب کاانعقاد محکمہ اطلاعات وتعلقات عامہ کی جانب سے ایک ہفتہ سے جاری جشن ِ آزادی کی تقریبات کے ایک حصہ کے طور پر کیاگیاتھا اورآج اس کالج میں جشن آزادی کی آخری تقریب تھی۔ وزیر نے کہاکہ ہمارے رہنمائوں نے ملک کوغیر ملکی سامراج سے آزاد کرانے کے لئے بیش بہاقربانیاں دی ہیں ۔اس لیے ملک کی تیز تر ترقی اورآزادی حفاظت کرناہم سب کافرضِ اولین ہے۔  

جموں یونیورسٹی میں عربی اورفارسی زبانوں کے شعبہ جات قائم کرنے کامطالبہ

جموں//خطہ جموں کے سب سے بڑی کلیدی ادارہ ’جموں یونیورسٹی‘میں فارسی اورعربی شعبوں کے نہ ہونے کی وجہ سے مذکورہ یونیورسٹی کے ساتھ منسلک کالجوں میں فارسی اورعربی مضامین میں تعلیم حاصل کرنے کے بعد پوسٹ گریجویٹ سطح پر ان مضامین میں داخلے کے خواہشمندطلباکو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہاہے۔ قابل ذکرہے کہ ’جموں یونیورسٹی‘ سے ریاسی،اودھم پور،کٹھوعہ،سانبہ ،رام بن،ڈوڈہ ،کشتواڑ، راجوری اورپونچھ اضلاع کے براہ راست درجنوں کالج منسلک ہیں جن میں انڈرگریجویٹ سطح پر فارسی اور عربی مضامین کی تعلیم دی جاتی ہے لیکن جموں یونیورسٹی میں پی جی میں عربی اورفارسی کے شعبے ہی قائم نہیں کئے گئے ہیں جس کی وجہ سے راجوری پونچھ ، ڈوڈہ ،کشتواڑ،رام بن وغیرہ اضلاع سے کثیرتعدادمیں عربی اورفارسی مضامین کواعلیٰ تعلیم میں اپنانے کے خواہشمند طلباء کاخواب چکناچورہوجاتاہے۔واضح رہے کہ  ریاست جموں و کشم

ریاستی سرکار وجے پور کی عبداللہ بستی کو اجاڑنے پر بضد

جموں//ضلع سانبہ کی انتظامیہ جموں سے 25کلو میٹر دور ، وجے پور کے مقام پر بر لب شاہراہ آباد خانہ بدوشوں کی ایک بستی کو جموں ایمز کے قیام کےلئے اجاڑنے کے لئے کمر بستہ ہے ، اگر چہ ارد گرد اور بھی کئی بستیاں آباد ہیں لیکن ایمز کی تعمیر کے لئے بنائی گئی منصوبہ بندی کا اگر بغور مطالعہ کیا جائے تو یہ بات پوری طرح عیاں ہو جاتی ہے کہ اس عبداللہ بستی کو جان بوجھ کر نشانہ بنایا جا رہا ہے ۔ 200سے زائد خانہ بدوش کنبوں کا 18برس سے بنا ہوا یہ مسکن 1999میں اس وقت آباد ہوا تھا جب حکومت نے انہیں از خود بسایا تھا۔ ایمز کی تعمیر کے لئے اگر چہ کئی متبادل اپنائے جا سکتے تھے لیکن مقامی لوگوں کا الزام ہے کہ مقامی ممبر اسمبلی جو کہ کابینہ وزیر بھی ہیں ، کی ہدایات پر انتظامیہ اس بستی کو اجاڑنے کے درپہ ہیں۔ ان کاکہنا ہے کہ وجے پور حلقہ کے رکھ بروٹیاں کی عبداللہ بستی اس وقت بھی بی جے پی لیڈرکی آنکھوںکا کانٹا بنی ہ

سہ روزہ کیلاش یاترا اختتام پذیر

بھدرواہ //سہ روزہ کیلاش یاترا اتوار کو کیلاش کنڈ جھیل میں پوتر اشنان کے ساتھ ہی اختتام کو پہنچی۔ قریب 16000شردھالوﺅں نے سطح سمندر سے14500فٹ کی بلندی پر واقع اس جھیل میں پوتر اشنان کیا ۔ اس سے قبل چھڑی مبارک تاریخی ناگ مندر گاٹھا بھدرواہ سے شروع ہوئی تھی ، راہ میں بھلیسہ، بسنت گڑھ ، بنی ، ڈوڈو، بلاور اور نالٹھی و مٹھولہ سے آئی ہوئی آدھ درجن کے قریب چھڑی مبارک ملتی گئیں اور اس طرح ہزاروں کی تعداد میں عقیدتمند مذہبی جوش و جذبہ کے ساتھ21کلو میٹر کے انتہائی دشوار گزار راستہ پر آگے بڑھتے گئے۔ اٹھارہ اور انیس اگست کو ہایان و رامتنڈ میں قیام کرنے کے بعد آج ہی صبح یاتری کیلاش کنڈ پہنچے تھے جہاں انہوں نے یخ بستہ پانی میں ڈبکی لگا کر شوجی اور دیوتا واسکی ناگ کا آشیر واد لیا۔ قابل ذکر ہے کہ کیلاش کنڈ سیوج دھار کے وسط میں واقع جھیل کا محیط قریب 1.50میل ہے جہاں درجہ حرارت نقطہ انجماد کے قریب رہتا ہے

حزب اختلاف 35اےکو تنازعہ بنارہا ہے:جتندر سنگھ

جموں//مرکزی وزیر جتندر سنگھ نے حزب اختلاف پر دفعہ35Aکے معاملے پر مسئلہ بنانے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ جو لوگ اقتدار سے باہر ہیں وہ اس کو تنازعہ بنانے کی کوشش کر رہے ہیں۔انہوں نے جموں کشمیر میں عسکریت آخری مرحلے میں داخل ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم نے آئندہ5برسوں میں بھارت کو انتہا پسندی سے پاک کرنے کا ہدف مقرر کیا ہے۔ ڈاکٹر سنگھ جموں میں ایک تقریب کے حاشیہ پر نامہ ناگاروں کے سوالات کا جواب دے رہے تھے۔انہوں نے کہا کہ’ اقتدار سے باہر جو لوگ ہیں وہ دفعہ35Aکو ایک ایشو بنانے کی کوشش کر رہے ہیںاور وہ اس کو پیچیدہ بنا رہے ہیں“۔  

ٹریکٹر حادثے میں نوجوان کی موت

مینڈھر/ بٹوت//مینڈھر میں ایک ٹریکٹر حادثے میں جواں سالہ لڑکے کی موت ہوگئی جس کے بعد مقامی لوگوں اور پولیس کے درمیان ٹھن گئی ہے ۔ٹریکٹر اڑی چیتری علاقہ سے تیز ر فتاری سے مینڈھر کی طرف جارہاتھاجس دوران دھار کس پر بنے ہوئے پل سے وہ نیچے لڑھک کر نالے میں جاگراجس کے باعث جواں سالہ لڑکے کی موت ہو گئی جس کی پہچان وجاحت حسین ولد محمد ریاض سکنہ اڑی کے طور پر ہوئی ہے۔ اگرچہ اسے وہاںسے اٹھاکرلوگوںنے سب ضلع ہسپتال مینڈھر منتقل کیا تاہم ڈاکٹروں نے اس کو مردہ قرار دیا۔ بتایا جاتا ہے کہ اڑی چیتری میں ایک بزرگ خاتون کی موت ہو گئی تھی اور یہ لڑکا اس کا قریبی رشتہ د ار تھا جو گھر سے سامان لے کر واپس مینڈھر آ رہا تھا کہ ٹریکٹر حادثے میں لقمہ اجل بن گیا ۔وجاحت حسین اپنے گھر میں اکیلا بھائی تھا جس کی موت کی خبر پھیلتے ہی علاقہ میں صف ماتم بچھ گئی ۔اس حادثے کے بعد جائے حادثہ پر بڑی تعداد میں لوگ جمع ہوگئے ج

سب ضلع ہسپتال منڈی کا خدا ہی حافظ

منڈی // سب ضلع ہسپتال منڈی میں عوام کیلئے دن بدن پریشانیاں بڑھتی جارہی ہیں۔ آئے روز ہسپتال کی حالت بہتر ہونے کے بجائے بدتر سے بد تر ہوتی جارہی ہے ۔منڈی کی آبادی ایک لاکھ سے زائد نفوس پر مشتمل ہے جس کےلئے سرکار کی طرف سے تحصیل سطح پر ایک سب ضلع اسپتال تو بنایاگیاہے مگر اس میں ڈاکٹروں کی متعدد اسامیاں خالی پڑی ہیں جس کی وجہ سے یہاں کے لوگوں کو پونچھ ضلع اسپتال کا رخ کرنا پڑتا ہے۔تحصیل کا یہ واحد ہسپتال ہے جہاں دور دراز کے علاقوں سے ہزاروں مریض اپنی بیماریوں کی تشخیص کے لئے آتے ہیں لیکن ڈاکٹروں کی عدم موجودگی سے انہیں دوسرے ہسپتالوں کارخ کرناپڑتاہے۔ذرائع کے مطابق سب ضلع اسپتال منڈی میں صرف دو ڈاکٹر تعینات ہیں جبکہ ماہر ڈاکٹروں کی تمام اسامیاں خالی پڑی ہیں۔ہسپتال میں ڈاکٹروں کی کمی اور عوام کی پریشانیوں پربات کرتے ہوئے بلاک میڈیکل آفیسر منڈی مشتاق حسین شاہ نے بتایا کہ ہسپتال میں مشکلات کی

نجی ہسپتال میںڈاکٹر کی مبینہ لاپرواہی سے جواں سال خاتون کی موت

بانہال // اپنی آنجہانی بیٹی کو انصاف دلانے کی کوشش میں رام بن کا ایک کنبہ پچھلے دس ماہ سے در در کی ٹھوکریں کھارہا ہے۔ چیف منسٹر گریوینس سیل سے لیکر مرکزی وزیر صحت ، چیف ویجلنس کمشنر، میڈیکل کونسل آف انڈیا تک رسائی کے باوجود انکی فریاد ان سنی کر دی گئی ہے۔ جموں کے ایک نجی ہسپتال میں 13 اکتوبر 2016 کو ایک چھوٹے سے اپریشن کے بعد ڈاکٹروں کی مبینہ لاپرواہی سے جاں بحق ہوئی29 سالہ آشا دیوی زوجہ امت کمار ساکنہ رام بن ایک پانچ سالہ بیٹے کی ماں تھی اور اعلی تعلیم یافتہ ہونے کے ساتھ ساتھ پیشے سے ٹیچر تھی۔ اس کی ہلاکت کے دوسرے روز 14 اکتوبر 2016 کو ستواری پولیس تھانہ میں ایک کیس زیر دفعہ304-A درج کیا گیا لیکن دس ماہ کا طویل عرصہ گذرجانے کے باوجود بھی اس کیس میں کوئی پیش رفت نہیں ہوئی ہے اور پولیس پوسٹ مارٹم رپورٹ اور چارج شیٹ کو پیش کرنے میں عدم دلچسپی کا مظاہرہ کر رہی ہے۔ آشا کماری کو ادھ مری حال

سرحدی علاقوں میں پختہ بنکروں کی تعمیر ....

مینڈھر//اگر چہ موجودہ حکومت نے بر سر اقتدار آنے سے قبل سرحدی علاقوں میں بسنے والوں کو محفوظ مقامات پر پلاٹ فراہم کرنے کی یقین دہانی کروائی تھی تاہم اقتدار میں آنے کے بعد جہاں دوسرے کئی وعدوں کی طرح بر سر اقتدار اتحاد، بالخصوص بی جے پی کا یہ وعدہ بھی سراب ثابت ہوا وہیں پچھلی کئی دہائیوں سے بین الاقوامی سرحد اور حد متارکہ کے قریبی علاقوں میں بنکروں کی تعمیر کا مسئلہ ٹیڑھی کھیر بنا ہوا ہے ۔ اگر چہ مرکزی حکومت کی طرف سے 100بنکروں کی تعمیر کے لئے رقومات کی فراہمی کا دعویٰ بھی کیا جاتا رہا ہے لیکن اول تو یہ بنکر بھی تعمیر نہ ہو سکے اور جو ہو بھی رہے ہیں ان میں ان رہائشی علاقوں کو پور ی طرح سے نظر انداز کر دیا گیا ہے جو آئے روز آر پار فائرنگ کی زد میں رہتے رہے ہیں۔ قابل ذکر ہے کہ ریاستی حکومت نے قریب 6000بنکروں کی تعمیر کی ضرورت ظاہر کی ہے لیکن مرکز نے صرف 100بنکروں کی تعمیر کو ہری جھنڈی دکھا

فوجی اہلکار اپنی ہی گولی لگنے سے زخمی

مینڈھر//مینڈھر کے سرحدی علا قہ منکو ٹ میں تعینات فوجی اہلکار حادثاتی طور پر گو لی چلنے سے زخمی ہو گیا۔ فو جی ذرائع کے مطابق مینڈھر کے سر حد ی علا قہ منکوٹ سیکٹر میں حا دثاتی طور پر گو لی چلنے سے فوجی اہلکار سنجے کمار جو کہ 15مہار راجمنٹ سے وابستہ ہے، زخمی ہوگیا۔ذرائع نے بتا یا کہ فو جی اہلکار گشت کے دوران گر گیا اور اس کی بند وق سے اچانک گو لی چل گئی جس کے نتیجہ میں وہ زخمی ہو ا تاہم ساتھی اہلکاو ں نے اسے فو ری طور پر فو جی اسپتال پہنچایا جہا ں پر بنیا دی علا وج و معالجہ کر نے کے بعد آرمی اسپتال پو نچھ منتقل کر دیا ۔اس کی حالت خطرے سے باہر بتائی جارہی ہے ۔  

۔7سال کی ملازمت کے بعد برخاست 231پولیس وائر لیس اوپریٹر وں کا مستقبل مخدوش

بانہال// 2010 میں ریاست جموں وکشمیر کے 15 اضلاع سے کل 1052 امیدواروں میں سے محکمہ پولیس میں 231 امیدوار بطور کانسٹبل، وائر لیس آپریٹر بھرتی کئے گئے ۔ریاستی پولیس بورڈ کی نگرانی میںجسمانی ، تحریری اور زبانی امتحانات پاس کرنے کے بعدمنتخب کئے گئے اعلیٰ تعلیم یافتہ ان نوجوانوں نے 7 سال تک ریاست کے اکناف و اطراف میں اپنا فرض ادا کیا لیکن انہیں اسی سال کے اوائل میں نوکری سے یہ کہہ کر برخاست کر دیا گیا ہے کہ بھرتی کا یہ عمل ضلع سطح کے بجائے ریاستی سطح پر ہونا چاہئے تھا۔ 13 ماہ تک وجے پور اور کٹھوعہ کے پولیس تربیتی مراکز میں ہتھیاروں اور تکنیکی تربیت کے بعد ریاست جموں وکشمیر کے مختلف علاقوں میں ریاستی پولیس کی مختلف ونگوں میں سات سال تک اپنا فرض انجام دینے والے ان 231 امیدواروں کیلئے جاری یہ حکمنامہ انتہائی دشوار گزار ثابت ہورہا ہے۔ ضلع اور ریاستی کیڈرکی بھرتی کے عمل کی چپقلش اور پولیس کے اس ف