تازہ ترین

شجر کاری مہم شروع کرنے کی ہدایت

  جموں //وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی نے اکھنور اور جوریاں کا دورہ کر کے دریائے چناب پر انسدادِ سیلاب سے متعلق مختلف کاموں کی رفتار کا جائزہ لیا۔انہوںنے سنگرام پورہ ، مائرہ اور گیر دیہات کا دورہ کر کے دریائے چناب کے باندھوں اور دیگر تحفظاتی ڈھانچوں کا معائینہ کیا۔ محبوبہ مفتی کو اس موقعہ پر بتایا گیا کہ علاقے میں دریا پر انسدادِ سیلاب سے متعلق 195کروڑ روپے مالیت کے پروجیکٹ کے تحت یہ کام جاری ہے جن کی تکمیل کے بعد نہ صرف دریا کے کناروں پر رہنے والے لوگوں کو سیلاب کے خطرات سے تحفظ فراہم ہوگا بلکہ سیلاب کے نتیجے میں ڈھہ جانے والی اراضی میں سے سالانہ 15ہزار کنال اراضی بحال ہوگی۔سنگرام پورہ میں وزیراعلیٰ کو بتایا گیا کہ تقریباً 60فیصد تحفظاتی کام مکمل کئے گئے ہیں اور باقی ماندہ کاموں پر کام جاری ہے۔اس کے علاوہ اسی طرح کے کام منچک ، بکور ،منہاسن ، گرہ ،مائرہ اور دیگر دیہات میں بھی جاری ہے

این سی کانگریس دھوکہ بازی کی علامت

 سرینگر//ریاست کی تباہی کے لئے عبداللہ خاندان کو ذمہ دار قرار دیتے ہوئے پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی نے کہا ہے نیشنل کانفرنس اور کانگریس اتحاد جموں وکشمیر میں دھوکہ بازی اور بے اعتباری کی ایک زندہ مثال ہے ۔جمعہ کو یہاں پارٹی ہیڈ آفس پر سرینگر بڈگام پارلیمانی حلقہ انتخاب ،جہاں سے پارٹی نے نظیر احمد خان کو بطور امیدوار کھڑا کیا ہے، کی انتخابی تیاریوںسے متعلق پارٹی سنیئر لیڈر اور ریاستی عمر ان رضا انصاری کی صدارت میںمنعقدہ جائزہ میٹنگ کے بعدنامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے پارٹی کے سنیئر رہنما اور ریاستی وزیر نعیم اختر نے کہا کہ نیشنل کانفرنس اور کانگریس اتحاد کی وجہ سے ہمیشہ لوگوں کے مصائب و مشکلات میںاضافہ ہوا ہے اور تاریخ گواہ ہے کہ دونوں پارٹیوں کے اتحاد کی وجہ سے آج تک ریاست کے لئے کچھ اچھا نہیں ہوا۔انہوں نے کہا کہ دونوں پارٹیوں کی قیادت نے سمجھ لیا ہے کہ وہ پی ڈی پی کے مقابلے تنہا مید

دوغلی پالیسی اور دہری زبان این سی کا شیوہ : نذیرخان

 سرینگر// پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کے لیڈر اور سرینگر پارلیمانی انتخابی امیدوار نذیر احمد خان نے حلقہ انتخاب بیروہ کے بٹہ پورہ، رازون، رٹھسن، اوہن گام، بیروہ، آروہ وغیرہ علاقوں کا دورہ کرنے کے دوران الزام عائد کیا کہ نیشنل کانفرنس نے ہمیشہ سے ریاستی عوام کے احساسات اور جذبات کے ساتھ کھلواڑ کرکے اپنے حقیر ترین مفادات کو پورا کیاہے۔ انہوں نے کہا کہ دوغلی پالیسی اور دہری زبان اس جماعت کا شیوہ رہا ہے۔ نذیر احمد خان نے نیشنل کانفرنس کی لیڈر شپ پر آئے دن بیانات بدلنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ کبھی یہ جماعت پاکستان اور مظفرآباد پر بمباری کی وکالت کرتی ہے اور کبھی حریت کے ہڑتالی کیلنڈر کو جائیز قرار دیکر اپنے ورکروں کو پتھر بازی اور حکومت کے خلاف آواز اٹھانے کے لئے مشورے دیتی ہے۔ انہوں نے نیشنل کانفرنس لیڈران کو مشورہ دیا کہ ایک منشور اور پالیسی کو اپنا کر عوام کے سامنے اپنا حقیقی موقف

این سی انتخابی جنگ ہار چکی :عمران انصاری

 سرینگر//پارلیمانی حلقہ انتخاب سرینگر بڈگام کے لئے انتخابی مہم کو آگے بڑھاتے ہوئے سنیئر پی ڈی پی لیڈر اور کابینہ وزیر عمران رضا انصاری نے کہا کہ نیشنل کانفرنس ایک ہاری ہوئی جنگ لڑ رہی ہے ۔جمعہ کو چاڈورہ کے مختلف علاقوں میں عوامی ریلیوں سے خطاب کرتے ہوئے عمران رضا انصاری نے کہا کہ نیشنل کانفرنس اپنی دوغلی پالیسوں کی وجہ سے عوام کے سامنے ایکسپوز ہوچکی ہے اور رائے دہندگان نے جہاں پہلے ہی انہیں اپنے کارناموں کی وجہ سے رد کاہے وہیں دوبارہ اب یہ پارٹی کانگریس کاسہارا لیکر اپنے وجود کو بچانے کی کوششوں میں لگی ہوئی ہے۔اس سے قبل عمران انصاری،جو سرینگر پارلیمانی نشست کے لئے پارٹی کے انچارج بھی ہیں،نے سرینگر میں پارٹی کی ایک اہم میٹنگ کی صدارت کی جس میں پارٹی امیدوار نظیر احمد خان سمیت دیگر پارٹی عہدداروں اور ممبران قانون سازیہ نے شرکت کی جن میں تعمیرات عامہ کے وزیر نعیم اختر ،وزیر زراعت غلا

جن سنگھ کو راہداری دینے کیلئے پی ڈی پی ذمہ دار: قرہ

 سرینگر//نیشنل کانفرنس اور کانگریس کی جانب سے شیو پورہ سرینگر میں ایک انتخابی جلسے کا انعقاد ہوا جس میں دونوں جماعتوں کے قائدین نے شمولیت کی۔ چناو¿ی جلسے سے کانگریس کے رہنما ءاور سابق ممبر لوک پارلیمنٹ طارق حمید وانی ( قرہ ) نے خطاب کرتے ہوئے کشمیری عوام سے اپیل کی کہ وہ جن سنگھی اور ملک کے کٹر فرقہ پرست ( آر ایس ایس ) کے خلاف متحد ہو جائیں جو ہمارے ملی اتحاد کے سب سے بڑے دشمن ہیں۔ اس وقت ریاست کے لوگوں کے سامنے ایک بڑا چیلنج اور غیرت کا سوال ہے کہ وہ ان طاقتوں کے خلاف صف آراءہو جائیں جوہمارے دینی مسائل میں بے جا مداخلت کرنے کے درپے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آر ایس ایس اور دیگر بھگوا جماعتوں کو گذشتہ70سال سے جموںوکشمیر کی خصوصی پوزیشن، دفعہ370اور سٹیٹ سبجیکٹ قانون کھٹکتا آیا ہے ۔ 70سال کی مسلسل ناکامیوں کے بعد پی ڈی پی نے ان بھگوا جماعتوں کو نہ صرف ریاست کے اندر داخل ہونے کا مو

جبر وزیادتیوں کے دوران انتخابات فرسودہ عمل ثابت :ملک

 سرینگر// لبریشن فرنٹ کے محبوس چیئرمین محمد یاسین ملک نے کہا ہے کہ جے کے ایل ایف دفتر واقع آبی گزر کو بھی محصور کررکھا گیا تھا اور پولیس نے وہاں سے ایک رکن محمد عرفان خان کو بھی گرفتار کیا جو انتہائی پرامن طریقے پر اپنی سیاسی کاوش انجام دے رہا تھا۔یاسین ملک نے کہا کہ ظلم و جبر اور جمہوریت کشی کی یہ مذموم داستان اسلئے رقم کی جارہی ہے کیونکہ بھارت اور اسکے ریاستی حامی یہاں الیکشن کا ڈرامہ کامیاب بنانا چاہتے ہیں حالانکہ اسی ظلم و جبر نے اس ڈرامے کو ایک فلاپ شو اور فرسودہ عمل ثابت کردیا ہے۔یاسین ملک نے کہا کہ اگر حکمرانوں، ہند نواز سیاست کاروں اور انکی جماعتوں نیز ان کی پولیس کے اندر ذرا بھر بھی جرات ہوتی تو انہوں نے مزاحمتی خیمے کو بھی اپنی جمہوری اور پرامن بائی کاٹ مہم چلانے کی اجازت دی ہوتی لیکن یہ بزدل لوگ جو صرف عوامی آواز کو پولیسی طاقت سے دبانا جانتے ہیں بخوبی آگاہ ہیں کہ اگر ا

مخلوط حکومت غریب دشمن :میر

 سرینگر//ریاستی کانگریس صدر غلام احمد میر نے قبائلی ویلفیئر فورمکے ایک وفد سے ملاقات کے دوران پی ڈی پی بھاجپا مخلوط حکومت کو غرےب عوام کش قرار دےتے ہوئے کہا کہ موجودہ حکومت جان بوجھ کر بقول انکے سےاسی بنےادوں پر غرےب طبقے کی آواز کو دبا رہی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ موجودہ مخلوط حکومت غرےب اور پسماندہ طبقوں کے مشکلات ومسائل کو حل کرنے مےں مکمل طور پر ناکام رہی کےونکہ موجودہ مخلوط حکومت نے انکے تئےں ماےوس کن اپروچ اختےار کےا ۔ان کا کہنا تھا کہ اےک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت پسماندہ طبقوں کو نظر انداز کےا جارہا ہے اور ےہ کہ فرقہ وارانہ اےجنڈے کے تحت پی ڈی پی بھاجپا مخلوط حکومت غرےب طبقوں کے ساتھ سوتےلی ماں جےسا سلوک رواں رکھ رہی ہے ۔ غلام احمد مےر کا کہنا تھا کہ قبائلی اور گجر طبقے کو حال ہی مےں جموں مےں شدےد خطرہ لاحق ہوگےا تھا کےونکہ انکے خلاف بھاجپا نے امتےازی کارروائی عمل مےں لائی

عازمین حج2017 5اپریل تک 81000روپے جمع کریں

 سرینگر//ایگزیکٹیو آفیسر سٹیٹ حج کمیٹی کے مطابق جن زائرین کا حج2017کے تحت عبور ی طور انتخاب عمل میں لایا گیا ہے،انہیں 5اپریل2017ءتک پیشگی ادائیگی کے تحت پہلی قسط کے طور پر 81000 روپے جمع کرنا ہوں گے۔انہوںنے کہا ہے کہ یہ رقم حج کمیٹی آف انڈیا کی ویب سائٹ www.hajcommittee.gov.inکے ذریعے آن لائین جمع کی جاسکتی ہے۔یا پھر اس رقم کو آف لائین کے تحت سٹیٹ بنک آف انڈیا کے اکاﺅنٹ نمبرFEE TYPE -25 ,32175020010یا یونین بنک آف انڈیا کے اکاﺅنٹ نمبر318702010406009میں جمع کرایا جاسکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ جو منتخب زائرین حج پہلی قسط کے طور پر رقم جمع کرانے میں ناکام ہوں گے اُن کا انتخاب رد سمجھا جائے گا۔ایگزیکٹیو آفیسر نے کہا کہ زائرین کو پروفارما کے تحت 5اپرےل تک میڈیکل سرٹیفکیٹ کے علاوہ پے ان سلپ پیش کرنا ہوگا ۔پروفارما پہلے ہی حج کمیٹی آف انڈیا کی ویب سائٹ یا سٹیٹ حج کمیٹی کی ویب سائٹ www.jkshc.

مزاحمتی خیمہ کیخلاف کریک ڈاﺅن اور گرفتاریاںباعث شرم: طاری

 سرینگر//فریڈم پارٹی نے الےکشن بائےکاٹ مہم کی شروعات کیں اور لوگوں میں پوسٹر اور ہینڈ بلز تقسیم کئے ۔ سرینگر اور بڈگام کے علاقوں سے مہم کا آغاز کرتے ہوئے انتخابی ڈرامے سے الگ تھلگ رہنے کی اپیل کی ۔ارکین لوگوں کو انتخابات سے متعلق واضح کررہے ہیں کہ ہمیں اجتماعی طور اس Sell out کے خلاف اپنا احتجاج درج کرنا ہوگا۔ادھرفریڈم پارٹی کے جنرل سیکریٹری مولانا محمد عبداللہ طاری نے مزاحمتی خیمے کے خلاف حکومتی سطح کے کریک ڈاون ،جگہ جگہ گرفتاریوں اور محبوسین سے متعلق عدالتی احکامات ٹھکرائے جانے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکمران ٹولہ تضادات کا شکار ہے ۔انھوں نے لوگوں کو غور فکرکی دعوت دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں اس بات پر ضرور سوچنا چاہے کہ ہمارے جن بچوں نے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا ،کیا ووٹ دے کر اس کا سودا صاحب اقتدار لوگوں سے کیا جانا ممکن ہے اور کیا اس طرح ان خانوادوں کی توہین نہیں ہوگی

گیلانی 2010سے عملاًبغیر اعلان عمر قید میں: حریت (گ)

 سرینگر//حریت (گ)چیئرمین سید علی گیلانی بدستور نظربند ہیں جبکہ حریت جنرل سیکریٹری شبیر احمد شاہ، تحریک حریت جنرل سیکریٹری محمد اشرف صحرائی، نعیم احمد خان، ایاز اکبر، الطاف احمد شاہ، راجہ معراج الدین اور محمد اشرف لایا بھی اپنے اپنے گھروں میں مسلسل مقید رہے اور پولیس نے انہیں جمعہ کی نماز پڑھنے کی اجازت بھی نہیں دی۔ حریت(گ) نے حکومتی کارروائی کو ریاستی ظلم و ستم اور مداخلت فی الدین کی کارروائی قرار دیتے ہوئے کہا کہ جموں کشمیر میں لوگوں کے سیاسی اور مذہبی حقوق بے دریغ سلب کئے جارہے ہیں اور ریاست کو عملاً ایک بڑے قید خانے میں تبدیل کردیا گیا ہے۔ حریت (گ) نے میر واعظ عمر فاروق کی گھر میں اور محمد یٰسین ملک کی جیل میں نظربندی جبکہ محمد یوسف میر، سید امتیاز حیدر اور محبوس محمد امین پرے شوپیان کے بھائی کی گرفتاری کی بھی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔ بیان میں کہا گیا کہ گیلانی کو 2010 سے عمل

دینی سرگرمیوں پر قدغن میرواعظ تیسرے روز بھی نظر بند: حریت (ع )

 سرینگر//حریت (ع) ترجمان نے ریاستی حکمرانوں کی جانب سے چیئرمین میرواعظ عمر فاروق کی سرگرمیوں پر عائد مسلسل قدغن اور طاقت کے بل پر انہیں نماز جمعہ کی ادائیگی اور منصبی فرائض کی انجام دہی سے روکنے کی شدید مذمت کی ہے۔ ترجمان نے کہا کہ ریاستی حکمرانوں نے ضمنی پارلیمانی انتخابات کے پیش نظر جس طرح میرواعظ اور دیگر مزاحمتی قیادت کو گھروں اور جیل خانوں میں مقید کردیا ہے اور ان کی سرگرمیوں پر پہرے بٹھا دیئے ہیں وہ حکمرانوں کی آمرانہ سیاست کاری کی اوچھی مثال ہے۔ترجمان نے کہا کہ ایک طرف ریاستی حکمران اور ان کی حلیف جماعتیں بے پناہ فوجی جمائو کے بل پر انتخابات کا انعقاد کرکے دنیا کو یہ باور کرانے کی کوشش کررہے ہیں کہ کشمیر میں سب کچھ ٹھیک ہے جبکہ حقیقت یہ ہے کہ پوری ریاست کو پولیس سٹیٹ میں تبدیل کردیا گیا ہے اور حریت پسند قیادت اور دیگر مزاحمتی قائدین کو خانہ و تھانہ نظر بند کرکے اپنے خلاف ا

۔4ماہ سے گریز بانڈی پورہ شاہراہ بند

بانڈی پورہ //داورگریز میںتحصیل ہیڈکوارٹر کے امام حی وخطیب کی قیادت میں سینکڑوں افراد نے ریاستی حکومت کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ 4ماہ سے مسلسل بند پڑی گریز بانڈی پورہ شاہراہ کو فوری طور پر کھول دیا جائے تاکہ سرحدی علاقوں میں  محصور لوگوں کے درپیش گوناگوں مشکلات ومصائب کا ازالہ ہوسکے۔ احتجاجی لوگوں نے ہیلی کاپٹر سروس روزانہ چلانے کابھی مطالبہ کیا تاکہ بڑی تعداد میں درماندہ مسافروں کو بانڈی پورہ گریز جانے میں دقتوں اور طویل انتظار سے چھٹکارا مل سکیں ۔ احتجاجیوں نے الزام لگایا ہے کہ ہیلی کاپٹر سروس مہینے میں دو تین مرتبہ چلائی جاتی اور منظور نظر افراد کو ہی ائر لفٹ کیاجاتا ہے جبکہ بیمار وغیرہ تڑپتے رہتے ہیں۔  24 مارچ کوہیلی کاپٹر سروس کے دوران بڑوآب اور نیرو کے درماندہ مسافروں کو گریز پہنچایا گیا جبکہ باقی ماندہ علاقوں کی بڑی تعداد کو ایر لفٹ نہ کرنے کی وجہ سے سنر

گاندربل کی رابطہ سڑکوں کی حالت ناگفتہ بہہ

گاندربل//گاندربل کی رابطہ سڑکوں کی خستہ حالی جہاں عوام کیلئے دردِ سر بنی ہوئی ہے وہیں روزانہ سینکڑوں ٹپروں کی آمدورفت سے پریشانیوں میں مزید اضافہ ہورہا ہے۔ لوگوں کاکہنا ہے کہ تولہ مولہ اور بارسو کی رابطہ سڑکوں کی حالت ناگفتہ بہہ ہے اور تولہ مولہ میں زیر تعمیر سینٹرل یونیورسٹی کیلئے خاک بجری اوردیگر میٹریل لے جانے والی ٹپروں کے چلنے سے صورتحال مزید ابتر ہورہی ہے۔ لوگوں کاکہنا ہے کہ سڑکیں پہلے ہی خستہ حال ہے اورٹپروں کی آمدورفت سے گردوغبار ، اورکیچر اٹھنے کے سبب دکانداروں، طلاب اور راہگیروں کو سخت دشواریوں کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ لوگوں کاکہنا ہے کہ بارشوں کے بعد سڑکوں پر موجود گہرے کھڈوں میں پانی جمع ہوجاتا ہے اور ٹپروں کے چلنے سے اٹھنے والی کیچڑ سے عوام کے کپڑے اور طلاب کی وردیاں گندی ہوجاتی ہیں۔ مقامی لوگوں نے سنٹرل یونیورسٹی کے اعلی حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ تولہ مولہ اور بارسو کی را

بیوائوں اور ناخیز افرادکے ماہانہ مشاہرہ میں اضافہ

سرینگر //ریاستی حکومت نے بیوائوں اور جسمانی طور ناخیز افراد کے ماہانہ مشاہرے میں اضافہ کردیا ہے لیکن ایسے تمام افراد کو31مارچ تک اپنے آدھار کارڈ کی نقل متعلقہ سوشل ویلفیئر آفیسر کے دفتر میں جمع کرنے کیے لئے کہا ہے۔مارچ کے بعد ایسے افراد کے بنک کھاتوں میں مشاعرے کی رقم جمع نہیں کی جائے گی جن کے آدھار نمبر نہیں دئے گئے ہوں۔ڈائریکٹر سوشل ویلفیئر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ ریاستی حکومت نے بیوائوں،جسمانی طور ناخیزاور اولڈ ایج افراد کے ماہانہ مشاہرے میں اضافہ کردیا گیا ہے جس کا اطلاق اپریل2016سے ہوگا اور اس ضمن میں باضابطہ طور پر نومبر میں احکامات صادر کئے گئے اور متعلقہ ضلع سوشل ویلفیئر افسران کو رقومات کی ادائیگی بھی کرائی گئی ہے۔انکا کہنا تھا کہ بیوائوں اور او لڈ ایج افراد کے حق میں ماہانہ اب ایک ہزار روپیہ دیا جائے گا  جنہیں اس سے پہلے دو دو سو روپے دئے جاتے تھے۔ اسی طرح جسمانی ط

کشمیر امن و قانون کا مسئلہ نہیں

سرینگر//حریت(گ) نے بھارتی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ کے بیان کہ ’’وہ کشمیر کی صورتحال کو نارمل بنانے کے لیے تمام متعلقین کے ساتھ بات چیت کے لئے تیار ہیں اور یہ کہ سارا ہندوستان چاہتا ہے کہ کشمیر کے حالات ٹھیک ہوں‘‘ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیر کوئی امن وقانون کا مسئلہ ہے اور نہ حالات کی خرابی کوئی بنیادی پرابلم ہے، بلکہ یہ لوگوں کے بنیادی اور پیدائشی حق، حقِ خودارادیت کا مسئلہ ہے، جس کی واگزاری کا بھارت نے ان کے ساتھ وعدہ کیا ہے۔ بیان میں کہا گیا کہ راجناتھ سنگھ نے راجیہ سبھا میں کشمیر کے حوالے سے جو بیان دیا ہے، اُس میں نئی بات کوئی نہیں ہے، بلکہ یہ وہی رسمی باتیں ہیں، جن کا اعادہ وہ بار بار کرتے رہتے ہیں۔ بھارتی وزیر داخلہ کا یہ کہنا ’’وہ کشمیر کا مسئلہ حل کرنے کے لیے تین بار وہاں گئے تھے اور انہوں نے اس سلسلے میں ٹویٹ بھی کیا‘‘ نہ ص

واڈوروہ سوپور میں سرکاری راشن ضبط،تحقیقات شروع

سوپور //سوپور کے واڈورہ پائین میں پولیس نے سرکاری راشن گھاٹ سے تقسیم ہونے والے راشن سے بھری 17 بوریاں ایک مقامی دکاندار سے ضبط کئے ہیں ۔ان بوریوں پرمحکمہ خواک کی مہر لگی ہوئی ہے ۔سوپور قصبہ میں سرکاری راشن کو نجی دکانوں کو فروخت کرنے کے الزامات کی تحقیقات کے دوران پولیس نے جمعرات کو واڈورہ پائین سوپور میں ایک مقامی دکاندار کی دکان پر چھاپا مارا اور دکان سے 17بیگ چاول برامد کئے جن پر محکمہ سی اے پی ڈی کی مہر لگی ہوئی ہے ۔پولیس ذرائع کے مطابق اس سے یہ صاف ظاہر ہو رہا تھا کہ چاول سرکاری راشن گھاٹ کے ہیںاو ر اُسے بلیک میں فروخت کیا گیا تھا ۔اس ضمن میں پولیس سٹیشن بومئی سوپور نے ایک ایف آئی ار زیر نمبر 22/2017دیر دفعہ 409/109درج کر کے تحقیقات شروع کر دی ہے ۔ اس حوالے سے محکمہ خوراک کے تحصیل سپلائیر افسر محمد اشرف نے کہا ہم نے محکمانہ تحقیقات شروع کر دی ہے اور قصورواروں کو جلد بے نقاب کیا ج

نندی مرگ قتل عام

 سرینگر//سال2003کے نندی مرگ قتل عام اور دیگر واقعات کی تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہوئے جموں و کشمیر کولیشن آف سول سوسائٹی نے کہا ہے کہ پچھلے20سال کے دوران ریاستی اور غیر ریاستی طاقتوں کی طرف سے کئے گئے قتل عام کی دوبارہ تحقیقات کیا جائے۔ جموں و کشمیر کولیشن آف سول سوسائٹی نے نندی مرگ میں قتل عام کی 14برسی پر کہا کہ پکے شواہد کی عدم موجودگی کی وجہ سے پہلے دو ملزم بری ہوگئے ہیں جبکہ ایک ملزم کے بارے میں بھی کوئی پکے شواہد موجود نہیں ہے۔ جموں و کشمیر کولیشن آف سول سوسائٹی نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ نامعلوم بندوق برداروں نے 23اور 24مارچ کی درمیانی رات کو 12خواتین ، 2بچوں سمیت 24کشمیری پنڈتوں کو شوپیاں کے نندی مرگ میں جان بحق کیا تھا۔ مقتول کشمیری پنڈتوں نے سال 1990میں کشمیر میں ہی رہنے کو ترجیح دی تھی۔نندی قتل عام  کے بعد دیگر کشمیری بنڈت بھی وادی چھوڑ کر چلے گئے تھے۔ بیان میں کہا

جموں وکشمیر سے متعلق وزیرداخلہ کا بیان

 جموں//ایک سرکاری ترجمان نے جموں وکشمیر سے متعلق وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ کے بیان کو یو این آئی اردو سروس کی طرف سے توڑ مروڑ کر پیش کرنے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایک معروف خبر رساں ایجنسی سے یہ توقع نہیں ہے کہ وہ راجیہ سبھا میں وزیر داخلہ کی طرف سے دئیے گئے بیان کو غیر سنجیدگی سے رپورٹ کرے۔واضح رہے کہ 22؍مارچ 2017ء کو راجیہ سبھا میں چودھری سکھ رام سنگھ یادو کی طرف سے جموں وکشمیر کی صورتحال سے متعلق پوچھے گئے ایک سٹارڈ سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر داخلہ نے اپنے تفصیلی جواب میں اُن اقدامات کا ذکر کیا تھا جو ریاستی اور مرکزی حکومتیں کشمیر میں سلامتی اور سیاسی محاذوں پر کر رہی ہیں۔جموں وکشمیرمیں سیاسی آوٹ ریچ کا ذکر کرتے ہوئے راجناتھ سنگھ نے ایوان کو مطلع کیا کہ پچھلے برس نامساعد حالات کے دوران ایک کل جماعتی وفد نے وادی کا دورہ کیا اور وزیرا علیٰ محبوبہ مفتی نے ایک مکتوب ک

وائرل متاثرہ بچوں کا علاج لازمی،حاضری کی پرواہ نہ کریں

سرینگر//پرائیوٹ سکول ایسوسی ایشن آف کشمیر نے والدین کو مشورہ دیا ہے کہ وہ اپنے بچوں کی حاضری کی پرواہ کئے بغیر انکا علاج و معالجہ کرائیں جو وائرل فلو کے شکار ہے۔ ایسوسی ایشن نے کہا ہے کہ ایسے بچے حاضری کی پراوہ کئے بغیر ٹھیک ہونے تک گھروں میں آرام کرسکتے ہیں۔ ایسوسی ایشن نے تمام والدین کو ہدایت دی ہے کہ وہ محکمہ صحت کی طرف سے جاری کی گئی ایڈوائزری پر عمل کرکے وائرل فلو کو قابو کرنے میں اپنا رول ادا کرے۔ ایسوسی ایشن کے چیر مین جی این وار نے کہا کہ ہم سکولوں اور محکمہ صحت رابطے میں ہیں جبکہ ہم اپنے بچوں کو محفوظ رکھنے کی تمام کوششیں کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ تاہم ہم تمام والدین کو مشورہ یں گے کہ وہ ان بچوں کا گھروں میں ہی علاج کریں جو کسی وائرل انفیکشن کے شکار ہوگئے ہیں۔ انہوں نے کہا ’’ ہمیں تعلیم کے دنوں کی پرواہ کئے بغیر انکا علاج کرنا چاہئے اور سکول ایسے بچوں کیلئیاضافی ک

انتخابات میں فرقہ وارانہ جذبات کو ہوا دینا تشویش ناک:سوز

سرینگر//پردیش کانگریس کے سابق صدر اور سابق مرکزی وزیر پروفیسر سیف الدین سوز نے اترپردیش ریاست میں انتخابی نتائج اور وہاں فسطائی طاقتوں کو اقتدار ملنے پر تشویش کااظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ اس صورتحال نے سیکولر اور جمہوری نظریہ کو خطرے میں ڈال دیا ہے تاہم اس صورتحال میں الیکشن کمیشن آف انڈیا کی دانستہ یا نادانستہ خاموشی بھی ایک اہل رول کرنے کا موجب بنا ہے ۔پروفیسر سوز نے کہاکہ ’’اب اس بات میں شک کی کوئی گنجائش نہیں ہے کہ مرکزی سطح پر برسر اقتدار جماعت بڑی سنجیدگی سے ہندوستان کو ایک ہندو سٹیٹ بنانے کیلئے سرگرم عمل ہے۔ وزیر اعظم مودی اور انکے قریبی ساتھی امیت شاہ نے اترپردیش اور اترا کھنڈ میں برا ہ راست ہندوتوا فلسفے کا پرچار کیا جو اترپردیش اور اتراکھنڈ میں انتخابات کے آخری دنوںمیں ایسی صورت اختیار کر گیا جیسے تمام تر ترقی (وکا س) ہندو لفظ اور ہندوتو کے فوارے سے ہی پھوٹتا ہو!ج