تازہ ترین

شادی بیاہ ۔۔۔ فضولیات کا گورکھ دھندا!

   عید الالفطر کے فوراً بعد وادی میں شادیوں کا سیزن شدو مد سے شروع ہوچکا ہے اور یہ سلسلہ حسب ِ سابق نومبر کےآواخر تک طول پکڑے گا۔ عام مشاہدہ یہ ہے کہ جب کبھی یہاں حالات خراب رہے اکثر  لوگوں نے دعوت نامے منسوخ کر کے شادیاں بڑی سادگی کے ساتھ انجام دیتے ہیں مگر جونہی حالات میں ٹھہراؤ آتا شادیوں منگنیاں بڑی دھوم دھام اور نمود ونمائش کے ساتھ رچائی جاتی ہیں ۔ ہمارے یہاں شادی بیاہ کے مواقع پر اکثر و بیشتر اسراف وتبذیر اور نمود ونمائش کا ایک میلہ سالگتا ہے جن میں فضولیات اور حماقتوں کی حد یں پارکی جا تی ہیں۔ جہیزی لین دین، رسوماتِ قبیحہ، بے ہنگم وازہ وان، ا?تش بازی ، چراغاںاور ہمچو قسم کی فضول خر چیاں ہمیں اجتماعی طور حرافات کے کس دلدل میں پھنسا چکی ہیں ، اس سے ہر کو ئی ذی ہوش باخبر ہے۔ اس میں دوائے نہیں کہ اہلِ کشمیر کی معاشی سرگرمیوں میں شادی بیاہ کا ایک کلیدی کردار ہو تا م