آنگن واڑی ورکر گورنر سے ملاقی

جموں//آنگن وارڈی ورکروں اور ہیلپروں کی یونین کے ایک وفد نے یہاں راج بھون میں گورنر ستیہ پال ملک کے ساتھ ملاقات کی۔وفد کے ممبران نے اپنے مسائل گورنرکی نوٹس میں لاتے ہوئے 10دس سے زائد کام کر رہے ورکروں اور ہیلپروں کی مستقلی کا مطالبہ کیا۔ اُنہوں نے کہا کہ ایسے ورکروں اور ہیلپروں کو مستقل کئے جانے تک اُن کے مشاہرے میں اضافہ کر کے اس کو بالترتیب10 ہزار روپے اور 6ہزار روپے کیا جانا چاہیئے ۔ اُنہوں نے سبکدوشی پر آنگن وارڈی ورکروں کو 5لاکھ روپے اور ہیلپروں کو 3 لاکھ روپے دئیے جانے کا مطالبہ کیا۔وفد نے پندرہ روز کی سرمائی چھٹیوں اور 45روز کی گرمائی چھٹیوں کی مانگ بھی کی ۔ وفد نے اپنے کئی دیگر مطالبات گورنر کی نوٹس میں لائے ۔گورنر نے وفد کو یقین دلایا کہ ان کی نوٹس میںلائی گئی مانگوں پر غور کیا جائے گا۔ گورنر نے لگن اور تن دہی کے ساتھ کام کرنے کے لئے آنگن وارڈی ورکروں اور ہیلپروں کی سراہنا ک

آیوشمان بھارت ۔ پردھان منتری جن آروگیایوجنا

جموں//چیف سیکرٹری بی وی آر سبھرامنیم نے ریاست میں آیوشمان بھارت ۔ پردھان منتری جن آروگیا یوجنا کو یکم دسمبر 2018 ء کو متعار ف کرنے کے لئے کی جارہی تیاریوں میں تیزی لانے کی ہدایت دی ہے۔اس مرکزی سکیم کو متعارف کرنے کی تمام ڈپٹی کمشنروں کے ساتھ ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے تیاریوں کا جائزہ لیتے ہوئے چیف سیکرٹری نے انہیں اپنے اپنے اضلاع میں اس بارے میںجانکاری عام کرنے کی تلقین کی تاکہ استفادہ کرنے والے افراد اس سکیم سے مناسب استفادہ کرسکیں۔چیف سیکرٹری نے ڈپٹی کمشنروں کو ہدایت دی کہ وہ اس معاملے کو سنجیدگی کے ساتھ لیتے ہوئے پہلی ترجیح دیں اور ایک چیف ایگزیکٹیو کے ساتھ قریبی تال بنائیں تاکہ اس سکیم کے مستحقین کااندراج عمل میں لایا جاسکے۔میٹنگ میں پرنسپل سیکرٹری صحت و طبی تعلیم اٹل ڈولو ، مشن ڈائریکٹر این ایچ ایم بھوپندر کمار اور دیگر افسران موجود تھے۔ میٹنگ میں بتایا گیا کہ آیوشمان بھارت ۔ پ

پروڈنٹ فنڈ ریکارڈ کی ڈیجیٹائزیشن

جموں//محنت و روزگار محکمہ کے کمشنر سیکرٹری سوربھ بھگت نے کل جموں وکشمیر ایمپلائز پروڈنٹ فنڈ آرگنائزیشن کے دفتر واقع ریل ہیڈ کمپلیکس جموں میں پروڈنٹ فنڈ ریکارڈ کی ڈیجیٹائزیشن کے عمل کا جائزہ لیا۔اس دوران اُنہوں نے پونچھ ، راجوری اور کٹھوعہ کے ورکروں کے ڈیجیٹل ریکارڈ کا افتتاح بھی کیا۔سوربھ بھگت نے کہا کہ پروڈنٹ فنڈ ریکارڈ کو ڈیجیٹائز کرنے کا مقصد ورکروں کے معاملات کو بروقت نمٹانا ہے۔اُنہوں نے کہا کہ حکومت نے 4.5لاکھ ورکروں کے ریکارڈ کی ڈیجیٹل کرنے کے لئے 100دِنوں کا نشانہ مقرر کیا ہے تاہم اب تک 2.6لاکھ ورکروں کا ریکارڈ مکمل کیا گیا ہے۔سوربھ بھگت نے کہا کہ پونچھ ، راجوری ، کٹھوعہ ، اننت ناگ ، بارہمولہ ، کپواڑہ ، کولگام ، بانڈی پورہ ، کرگل اور لیہہ اضلاع کے ریکارڈکو مکمل کیا گیا ہے جب کہ باقی اضلاع کا ریکارڈ تکمیل کے آخری مراحل میں ہیں۔اُنہوں نے کہا کہ ریکارڈ کی ڈیجیٹل کرنے کے بعد ورکرو

تازہ ترین