محمد مارڈیوک پکتھال | پہلامسلم انگریز ترجمہ کار

دنیا میںکچھ لوگ ایسے بھی ہوتے ہیں جن کو اللہ تعالیٰ دین اسلام کی سربلندی اور پھیلائو کے لیے منتخب کرتا ہے۔ اللہ تعالیٰ ان کو کفر و شرک کی دنیا سے نکال کر ایمان واطمینان کی دولت عطا کر کے ایسا کام لیتا ہے جو ہمارے لیے ہر لحاظ سے قابل تقلید اور قابل رشک ہوتا ہے۔ ان ہی درخشاں ستاروں میں سے ایک نمایاں ستارہ برطانیہ کے مسیحی گھرانے کے چشم وچراغ محمد مارڈیوک پکتھال ہیں۔ محمد مارڈیوک پکتھال نے ایک ناول نگار، معلم، سیاح اور ایک مشہور ومعروف مترجم قرآن کی حیثیت سے نہ صرف عالم اسلام میں بلکہ یورپی دنیا میں بھی انمٹ نقوش چھوڑے ہیں۔ محمد مارڈیوک پکتھال ۱۷؍ اپریل ۱۸۷۵ء میں لندن کے ایک عیسائی پادری ولیم پکتھال کے گھر میں پیدا ہوئے۔ محمد پکتھال بچپن سے ہی مذہبی رجحان کے حامل تھے، ان کی دو بہنیں بھی چرچ میں راہبات (Nuns)کی حیثیت سے مذہبی ذمہ داریوںپر فائز تھیں۔ انہوں نے تکمیل تعلیم کے بعد ۱۸۹۴ء میں ف

زندگی کی حقیقت | معبود حق کی عبادت

’’لوگو! بندگی اختیار کرو اپنے اُس ربّ کی جو تمہارا اور تم سے پہلے لوگ ہو گزرے ہیں اُن سب کا خالق ہے، تمہارے بچنے کی توقع اِسی صورت سے ہو سکتی ہے۔‘‘ اگرچہ قرآن کی دعوت تمام انسانوں کے لیے عام ہے، مگر اس دعوت سے فائدہ اُٹھانا یا نہ اُٹھانا لوگوں کی اپنی آمادگی پر اور اس آمادگی کے مطابق اللہ کی توفیق پر منحصر ہے۔ لہٰذا قرآن کے سورۃ البقرہ میں پہلے انسانوں کے درمیان فرق کر کے واضح کر دیا گیا کہ کس قسم کے لوگ اس کتاب کی رہنمائی سے فائدہ اُٹھا سکتے ہیں اور کس قسم کے نہیں اُٹھا سکتے۔ اِس کے بعد تمام نوعِ انسانی کے سامنے وہ اصل بات پیش کی جاتی ہے، جس کی طرف بلانے کے لیے قرآن آیا ہے۔ یعنی ’’عبادت‘‘ اسی لیے فرمایا گیا ہے کہ ’’لوگو! بندگی اختیار کرو اپنے اُس ربّ کی جو تمہارا اور تم سے پہلے لوگ ہو گزرے ہیں اُن سب کا خالق ہے۔&lsq

رمضان ہمدردی اور ایثار کا مہینہ

 رمضان ہمدردی کا مہینہ ہے۔ اس ماہ مقدس کا تقاضا ہے کہ معاشرے کے غریب اور سفید پوش طبقات کی جانب توجہ دی جائے، اپنے پڑوس اور محلے میں دو  وقت کے کھانے سے محروم فاقہ زدہ خاندانوں کو تلاش کرکے ان کی مدد کی جائےتاکہ ان کی سحری و افطاری بھی ہو سکے اور وہ نعمتیں جو مال دار طبقہ کو قدرت نے نصیب فرمائیں ،ان سے غرباء کا دسترخوان بھی سج سکے۔ حضور ﷺ  کا  ارشاد ہے کہ جو شخص بھوکے کو کھانا کھلاۓ یا ننگے کو کپڑا پہناۓ یا مسافر کو رات گزارنے کی جگہ دے تو اللہ تعالیٰ اس کو قیامت کی سختیوں سے محفوظ فرما دے گا۔ ایک اور حدیث میں رسول اللہ ﷺ  نے ارشاد فرمایا اللہ تعالیٰ قیامت کے دن کہے گا : اے آدم کے بیٹے ! میں نے تجھ سے کھانا مانگا تھا لیکن تو نے نہیں کھلایا تو وہ کہے گا کہ اے میرے رب! میں تجھے کیوں کر کھلاتا جب کہ تو سب لوگوں کی پرورش کرنے والا ہے؟ اللہ کہے گا کہ تجھے خبر نہی

تازہ ترین