تازہ ترین

سیاسی بساط پر مسلمانانِ ہند | سفینہ ہے ٹوٹا سمندر ہے بپھرا

ہندوستان   میں سات مراحل پر مشتمل لوک سبھا الیکشن کا اختتام ہفتہ عشرہ میں ہونے والاہے۔ ۲۰۱۹ء کے لوک سبھا الیکشن کے اعلان سے دو روز قبل ۹مارچ تک ۲۲۹۳ سیاسی پارٹیاں الیکشن کمیشن آف انڈیا کے تحت رجسٹرڈ ہو چکی تھیں۔ جس میں ’’بھروسا پارٹی‘‘، ’’سب سے بڑی پارٹی‘‘ اور ’’راشٹریہ صاف نیتی پارٹی‘‘ وغیرہ شامل تھیں۔ پارٹیوں کی تعداد یہیں نہیں رکی بلکہ یکم اپریل ۲۰۱۹ء کو ایک اور فہرست الیکشن کمیشن آف انڈیا نے جاری کی اور بتایا کہ ۲۲۹۳ سیاسی پارٹیوں کی تعداد اب بڑھ کر ۲۳۵۴ ہوچکی ہے، فہرست میں نئی پارٹیوں کے نام اور پتے بھی شامل کیے گئے ہیں۔ آپ جانتے ہیں کہ ہندوستان دنیا میں آبادی کے اعتبار سے چین کے بعد دوسرے نمبر پر ہے۔ ۲۰۱۹ء میں تقریباً ۳۷ء۱ بلین آبادی یعنی ۱۳۷کروڑ افراد ہندوستان میں بستے ہیں، وہیں ہندوستان میں ل

کامل انسان کی تلاش ہے ؟ | تُو کجا من کجا

کئی   حضرات قحط الرجال کے اس دور میں حقیقی انسان کو دیکھنے کی متمنی ہیں۔ ذیل کے مضمون میں ایسا معیار درج ہے جس کی روشنی میں انسان کو ناپا تولا جاسکتا ہے۔ اگر کبھی کوئی مل گیا تو مجھے بھی اطلاع دینا نہ بھولئے گا! ایک زمانے سے ایسی نایاب شئے کی تلاش میں چراغ میرے ہاتھ میں بھی ہے ۔ مولانا رومی ؒ فرماگئے ہیں   ؎ دی شیخ با چراغ همی گشت گرد شهر  کز دا و دد ملولم و انسانم آرزوست   ترجمہ:کل (ایک) شیخ بزگوار کو چراغ لئے سارے شہر کے گردگھومتا پایا ( دہائی دے رہا تھا) کہ میں( شیطانوں اور درندوں ) سے دل ملول ہوں اور کسی انسان کا آزرو مند ہوں! Last night the shaikh went all about the city, lamp in hand,  crying, “I am weary of beast and devil, a man is my desire.”  جب سے ہوش سنبھالا تب سے لوگوں کو یہی کہتے سنا یا لکھ

فیشن سیلاب | زمانے کےا نداز بدلے گئے

بالیوں  تک تو ٹھیک تھا لیکن مردانہ ماڈلنگ کی کچھ تصاویر دیکھ کر دل اچھل کر حلق میں آگیا ہے۔ اچھے خاصے نوجوانوں نے میکسیاں پہنی ہوئی ہیں جبکہ ایک جواں مردنے تو باقاعدہ سر پر دوپٹہ بھی لیا ہوا ہے۔۔۔اور قوی اُمید ہے کہ بہت جلد کسی کا گھر بھی بسا دے گا ۔پہلے خیال آیا کہ شاید نوجوانوں میں کوئی ’’سلکی ٹچ‘‘ ہے۔ پھر تحقیق کی تو پتہ چلا کہ ایسی کوئی بات نہیں‘ سب حدود ِ جر م میں آتے ہیں۔میرا واسطہ چونکہ زیادہ تر میڈیا کے لوگوں سے پڑتا ہے اس لیے ہر بے ہودہ فیشن جلد ہی نظروں میں آجاتاہے۔ میرے ایک دوست ہیں‘ اچھے خاصے پروڈیوسر ہیں لیکن ایسا فیشن کرتے ہیں کہ بعض اوقات فیصلہ کرنا مشکل ہوجاتاہے کہ موصوف نے فیشن کیا ہے یا کوئی غلطی۔ایک دن قبلہ دو الگ الگ رنگ کے جوتے پہن آئے۔ دائیں پاؤں میں سرخ اور بائیں پاؤں میں پیلا۔منطق پوچھی تو لاپرواہی سے فرمایا’