تازہ ترین

جنوبی کشمیر میں تباہ کن ژالہ باری سے کروڑوں کا نقصان

پلوامہ//پلوامہ کے درجنوں دیہات میں تباہ کن ژالہ باری، آندھی اور شدید بارشو ں کے نتیجے میں کھڑی فصلوں ،میوہ باغات،درختوں ،گاڑیوں کے ساتھ ساتھ رہائشی مکانات کو شدید نقصان پہنچا ہے۔ضلع ایگریکلچر آفسر پلوامہ نے بتایا کہ سنیچر کی صبح سے ہی محکمہ نے ڈائر یکٹر ایگریکلچر کی نگرانی میں پورے ضلع میں نقصان کا تخمینہ لگانے کے لئے تفصیلات جمع کرنا شروع کئے۔انہوں نے بتایا کہ ضلع میں فصلوں کو100فیصد نقصان ہوا ہے تاہم متاثرین کو مکمل سرکاری امداد فراہم کی جائے گی۔محکمہ باغبانی کے ضلع سربراہ نے بتایا کہ نقصان کا تخمینہ لگانے کیلئے تین محکموں کا عملہ میدان میں ہے اور چند ایک روز میںرپورٹ مکمل کی جائیگی۔ضلع پلوامہ کے متعدد علاقوں پلوامہ قصبہ ، راجپورہ،ترچھل،ببہ گام ،ٹہاب ،مژھ پونہ،مورن،کاکا پورہ ،ٹنگ ہاڑ ،ہال،گابر پورہ ،آری ہل ،کار مولہ، بٹھنور،پنیر جاگیر،نارستان، زاسو، تملہ ہال،وہاب صاحب،لدھو ،اونتی

جے کے بنک میں پیش آئے حالیہ واقعات | سوشیواکنامک کارڈنیشن کمیٹی کا اظہار حیرت

سرینگر//جموں کشمیر سوشیواکنامک کارڈنیشن کمیٹی کے ممبران نے جموں کشمیر بنک میں حالیہ پیش آئے واقعات ،جو اس بنک کے کثیرحصص رکھنے والے حصہ دار یعنی حکومت جموں کشمیر کی ایماپر وقوع پزید ہوئے،پر حیرانی کااظہار کیا ہے ۔ایک بیان کے مطابق بنک کے کچھ اعلیٰ حکام پر بھرتی پالیسی میں ’’بے ضابطگیوں اور کورپشن‘‘ کے الزامات عائد کئے گئے تھے۔پہلے پہل تو حکومت نے بنک کو ایک بہترین عوامی ادارہ ہونے کی سند دی اورکہا کہ یہ مناسب طور جانفشانی اور تندہی سے چلایا جارہا ہے ۔کورپشن کی یہ اطلاعات حکومت حصے بخروں میں افشاں کررہی ہیں۔ایسا لگتا ہے کہ حکام کوکوئی ثبوت ہاتھ میں ہونے کے بغیر ہی ہٹایاگیا ہے اور اس کے بعد ایجنسیوں کو بنک میں ان کے خلاف ثبوت ڈھونڈنے کے کام پر لگایا گیاہے ،جبکہ اس کے برعکس ہونا چاہیے تھا یعنی پہلے ثبوت حاصل کئے جاتے اور پھر حکام کوہٹایا جاتا۔بنک جو ریاست کاباوقار