پولٹری فارموں کو انشورنس دائرے میں لانے کا فیصلہ

جموں//پولٹری سیکٹر میں مقامی کارخانہ داروں کی طرف سے زیادہ سے زیادہ سرمایہ کاری کو یقینی بنانے کیلئے حکومت نے ریاست میں پولٹری فارموں کو انشورنس کے دائرے میں لانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ یہ فیصلہ پرنسپل سیکرٹری پشو و بھیڑ پالن ڈاکٹر اصغر حسن سامون کی صدارت میں منعقدہ ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ کے دوران لیا گیا ۔ میٹنگ میں ڈائریکٹر انیمل ہسبنڈری جموں ڈاکٹر وکٹر کول ، ڈائریکٹر انیمل ہسبنڈری کشمیر ڈاکٹر ایم وائی چاپری اور کئی دیگر افسروں نے بھی شرکت کی ۔ علاوہ ازیں مختلف انشورنس کمپنیوں کے نمائندوں اور پولٹری صنعت سے وابستہ معروف افراد غلام محمد بٹ اور بلجیت سنگھ نے بھی میٹنگ میں شامل تھے ۔ پولٹری سیکٹر کو انشورنس کے دائرے میں لانا ریاست کے پولٹری فارمروں کی ایک دیرینہ مانگ تھی ۔ ڈاکٹر سامون نے کہا کہ انشورنس کوور فراہم کرنے سے یہاں کے پولٹری فارمر اپنی تجارت کو بڑھاوا دینے اور پیدا وار میں اضافہ کرن

کنگن میں منافع خوروں کے وارے نیارے

گاندربل//کنگن میں ناجائز منافع خوروں کی بے تحاشہ لوٹ کھسوٹ جاری رہنے سے مقامی آبادی نے برہمی کا اظہار کیا ہے۔سرینگر جموں شاہراہ کے مسلسل بند رہنے کے باعث اشیاء خورد و نوش کی قلت پیدا ہونے سے ناجائز منافع خوروں نے محکمہ امور صارفین کے مقرر کردہ نرخ ناموں کو بالائے طاق رکھ کر قیمتوں میں ہوشربا اضافہ کرکے صارفین کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے۔اکہال کنگن کے ایک شہری فیاض احمد بٹ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ کنگن میں سبزی فروشوں،میوہ فروشوں، قصابوں،مرغ فروشوں اور ایل پی جی گیس ڈیلروں نے اپنی مرضی کے مطابق  قیمتوں میں اضافہ کردیا ہے۔جموں سرینگر شاہراہ کے بند ہونے سے قبل مرغ 120 روپے فروخت کئے جاتے تھے جو آج 250 روپے فروخت کئے جارہے ہیں۔ اسی طرح سبزیوں اور میوہ جات بھی چوگنی قیمت پر فروخت کئے جارہے ہیںاور ضلع انتظامیہ کی جانب سے کوئی کارروائی نہیں کی جارہی ہے۔ادھر وسن کنگن میں رسوئی گیس 780 روپ

حالیہ برفباری سے بارہمولہ کے کئی میوہ باغات کو نقصان

بارہمولہ//حالیہ برفباری سے ضلع بارہمولہ کے کئی علاقوں میں میوہ باغات میں موجود درختوں کو بھاری نقصان ہوا ہے۔ضلع بارہمولہ کے رفیع آباد ،سوپور ،پٹن ،نارواو ،بونیار اور ٹنگمرگ کے کئی دیہات کے باغ مالکان نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ حالیہ بھاری برفباری کی وجہ سے سینکڑوں کی تعداد میں اکثردرخت جڑ سے اکھڑ گئے ہیں اورکئی درختوں کی شاخیں ٹوٹ گئی ہیں۔انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ وہ نقصانات کا تخمینہ لگانے کیلئے ٹاسک فورس تشکیل دیں ،جو بروقت نقصان کا تخمینہ لگا سکے اور اس صنعت سے جڑے افراد میں امداد فراہم کریں۔ا س وران ضلع انتظامیہ کا کہنا ہے کہ نومبر میں ہوئی برفباری سے ہوئے نقصانات کے سلسلے میں پہلے ہی کسانوں میںسات لاکھ روپے تقسیم کئے جاچکے ہیں۔ادھر فروٹ گروئورس و ڈیلرس ایسوسی ایشن فروٹ منڈی سوپورکے صدر فیاض احمد ملک عر ف کاکا جی نے کہا کہ شمالی کشمیر میںحالیہ برف باری سے باغ مالکان کو کروڑوں روپے

تازہ ترین