تازہ ترین

۔2014کے سیلاب میں تباہ ہو ا پل ابھی تک تعمیر نہ ہوسکا

 سرنکوٹ// پنچایت لور پوٹھ کے وارڈ نمبر چھ بیلہ میں محکمہ تعمیرات عامہ کی جانب سے تعمیر کردہ پل 2014میں آئے سیلاب کی وجہ سے تباہ ہو گیا تھا جس کی وجہ سیپوٹھ ،بیلہ ،کلر کٹل ودیگر علا قوں کا راستہ منقطع ہو گیا تھا لیکن مقامی و ضلع انتظامیہ کی جانب سے ابھی تک مذکورہ پل کی مرمت نہیں کی گئی جس کی وجہ سے مقامی لوگوں کو شدید مشکلات کا سا منا کرنا پڑرہا ہے ۔مقامی لوگوں نے ضلع انتظامیہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ مذکورہ علا قوں کی عوام کیساتھ ساتھ طلباء گزشتہ پانچ برسوں سے مشکلات کا سامنا کرر ہے ہیں لیکن متعدد بار انتظامیہ سے رجوع کرنے کے باوجود بھی مقامی لوگوں کوسہولیات میسر نہیں کی گئی ہے ۔اس سلسلہ میں پوٹھ لوہر پنچایت کے سرپنچ شیخ محمد بشیر نے کہا کہ متعلقہ محکمہ نے جو 2014 کے سیلاب کے بعد غفلت شعاری کا مظاہرہ کیا ہے ۔انہوں نے کہاکہ اس پل کے ٹوٹ جانے کی وجہ سے عام لوگوں کے علاوہ

رینہ محلہ میں چوری کی واردات

 تھنہ منڈی //طار ق شال //تحصیل تھنہ منڈی کے رینہ محلہ میںہوئی ایک چوری کی واردات میں 11لاکھ سے زائد روپے نقدی و زیورات چوری کرلئے گئے ۔پولیس ذرائع کے مطابقوحید مراد ولد حاجی لطیف وانی کے گھر چوروں نے دن کے ایک بجے چوری کی واردات کو انجام دیا ۔کنبے کے افراد کے مطابق انہوں نے کسی لین دین کے سلسلہ میں مذکورہ رقم گنتی کر کے گھر میں رکھی اور پھر وہ اپنے گھر کو تالا لگا کر شادی کی تقریب میں شرکت کیلئے چلے گئے جبکہ شادی کی تقریب سے واپس آنے پر انہوں نے گھر کا تالا توڑا ہو پا یا جبکہ گھر کے اندر سارا سازو سامان بکھرا پڑا تھا ۔انہوں نے فوری طور پر پولیس کو اطلاع دی جس کے بعد ایس ایچ ائو کی قیادت میں پولیس کی ایک ٹیم موقعہ پر پہنچی اور موقعہ دیکھنے کے بعد مزید تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں ۔ایس ایچ ائو تھنہ منڈی نے کہاکہ قصبہ سے ضلع سے باہر جانے والے راستوں پر سیکورٹی بڑھا دی گئی ہے جبکہ ہر ا

مینڈھر ہسپتال میں سپیشلسٹ ڈاکٹروں کی عدم موجودگی

مینڈھر//سب ڈسٹر کٹ ہسپتال مینڈھر میں سپیشلسٹ ڈاکٹروں کی عدم موجودگی میں مریضوں بالخصوص سرحدی فائرنگ میں زخمی ہونے والے افراد کو راجوری اور جموں ریفر کر دیا جاتا ہے۔مقامی لوگوں نے انتظامیہ پر الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ مینڈھر کے سرحدی علا قوں میں لگاتار چل رہی فائرنگ و دیگر واقعات کے پیش آنے کے باوجود سب ضلع ہسپتال مینڈھر میں ماہر ڈاکٹروں کی تعینات و حاضری کی ممکن نہیں بنایا جا رہاہے ۔سپیشلسٹ ڈاکٹروں کی تعیناتی کے معاملہ پر متعلقہ محکمہ کے اعلیٰ آفیسران کی جانب سے بھی مختلف بیانات دئیے جارہے ہیں جن سے صاف ظاہر ہے کہ متعلقہ محکمہ کی ملی بھگتی کی وجہ سے مینڈھر میں ڈاکٹروں کی تعینات عمل میں نہیں لائی جارہی ہے ۔انتظامیہ کی جانب سے گزشتہ ماہ ایک سرجن سپیشلسٹ ڈاکٹر کو ہسپتا ل میں تعینات کیا گیا تھا لیکن مذکورہ ڈاکٹر ڈیوٹی پر ابھی تک حاضر نہیں ہوا ۔مقامی لوگوں نے محکمہ صحت پر الزام عائد کرتے

منریگا کاموں کی اجرت کی وگزاری کا معاملہ

مینڈھر//گزشتہ چار برسوں سے منریگا اسکیم کے تحت کئے گئے کاموں کی اجرت نہ ملنے سے تنگ آکر پٹھانہ تیر گائوں کے لوگوں نے بی ڈی او دفتر مینڈھر کے سامنے احتجاج کیا ۔مظاہرین نے محکمہ دیہی ترقی پر الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ منریگا اسکیم کے تحت کئے گئے کاموںکی اجرت نہیں دی جارہی ہے جس کی وجہ سے ان کو احتجاج کا راستہ احتیار کرنا پڑر ہا ہے ۔انہوں نے کہاکہ گزشتہ کئی برسوں سے وہ متعلقہ محکمہ کے دفتر کے چکر کاٹ رہے ہیں لیکن ہر بار ان کو یقین دہانیاں کروا کر واپس بھیج دیا جاتا ہے لیکن پیسہ وگزار نہیں کئے جارہے ہیں ۔احتجاج کے دوران فضل حسین شاہ نے غم وغصہ کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ’’ میں غریب خاندان سے تعلق رکھتا ہوں اور بڑی مشکل سے میں اپنے بال بچے کی روزی روٹی چلا رہا ہوں جبکہ میرے پاس بچوں کیلئے سکول کے داخلہ کیلئے پیسے نہیں ہیں‘‘۔ان کا کہنا تھا کہ تین سال قبل کام کروایا لیکن

ساتھرہ تمرامیں جام سے طلباء و مسافر پریشان

منڈی//عشرت حسین بٹ//تحصیل منڈی کے ساتھرہ تمرا کے مقام پر جام لگنے کی وجہ سے مسافروں اور طلباء کو کئی گھنٹوں تک جام میں انتظار کرنا پڑتا ہے ۔مسافروں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ گزشتہ دو ماہ سے مذکورہ سڑک کی کشادگی کا کام کیا جارہا ہے جس کی وجہ سے جام لگنا ایک معمول بن چکا ہے ۔انہوں نے کہاکہ انتظامیہ کے غفلت شعاری کی وجہ سے طلباء سکولوں میں تاخیر سے پہنچتے ہیں جبکہ اسی طرح ملازمین اور مریضوں کو بھی دقتوں کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔انہوں نے کہاکہ گزشتہ روز دن کے ایک بجے سے شام کو چھ بجے تک لگے جام کی وجہ سے مسافروں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ۔مسافروں نے کہاکہ مذکورہ علا قہ کی تعمیر و ترقی کیلئے سڑک کی کشادگی ضروری ہے لیکن انتظامیہ کی غفلت شعار اور ٹھیکیدار کی من مانی کی وجہ سے مسافروں کو دقتوں کا سامنا کرنا پڑ تاہے ۔انہوں نے کہا کہ اس سے قبل بھی کئی مرتبہ ضلع انتظامیہ پر نچھ سے مذکورہ

محلہ ترکھانہ اور ڈاراں کی عوام سڑک سے محروم

منڈی//تحصیل صدر مقام منڈی سے 5 کلو میٹر کی دوری پر واقع گاؤں بیدار بی کے محلہ ترکھانہ اور ڈاراں کی عوام اس ترقی یافتہ دور میں بھی سڑک جیسی بنیادی سہولیت  سے محروم ہے جس کی وجہ سے ان علاقوں میں رہنے والے لوگ مشکلات کا سامنا کرنے پر مجبور ہو چکے ہیں ۔1200 سے زائد نفوس پر مشتمل ان دو علاقوں کے لوگ ترقی یافتہ دور میں بھی پیدل چلنے پر مجبور ہیں ۔مقامی لوگوں نے انتظامیہ پر الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ سڑک کی عدم موجودگی کی وجہ سے ان کے بچوں کو کئی کلو میٹر کی پیدل مسافت طے کر کے سکول جانا پڑرہاہے ۔ اسی سلسلہ میں اتوار کو بیدار بی کے محلہ ترکھانہ اور ڈاراں کے معزز لوگوں کا ایک اجلاس منعقد ہوا جس میں انہوں نے سڑک کے سلسلہ میں گفت و شنید کرتے ہوئے انتظامیہ سے محلہ ٹھکراں سے محلہ ڈاراں تک رابطہ سڑک فراہم کرنے کی اپیل کی ۔ اعجاز احمد نامی ایک شخص نے بتایا کہ  عرصہ دراز سے یہاں کی عوام بن

مڈل سکول نیلی کی خستہ حالی سے طلباء کی تعلیم متاثر

بنیادی سہولیات بھی میسر نہیں    منجا کوٹ //ایجوکیشن ون منجاکوٹ کے گور نمنٹ مڈل سکول نیلی کی خستہ حالی کی وجہ سے زیر تعلیم طلباء کی پڑھائی متاثر ہو رہی ہے ۔مقامی لوگوں نے متعلقہ محکمہ او ر مقامی انتظامیہ پر الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ بچوں کی پڑھائی کیلئے بنیادی سہولیات ہی فراہم نہیں کی جارہی ہیں ۔انہوں نے کہاکہ نیلی میں 1995میں ایک پرائمری سکول قائم کیا گیا تھا جبکہ 2004میں اس سکول کا درجہ بڑھا کر مڈل سکول بنا دیا گیا تھا لیکن اس سکول میں طلباء کو معیاری سہولیات فراہم کرنے کی جانب کوئی توجہ نہیں دی جارہی ہے ۔اس سکول میں آٹھ جماعتوں کے 100سے زائد طلباء زیر تعلیم ہیں جبکہ ان کیلئے انتظامیہ کی جانب سے 6ٹیچر تعینات کے گے ہیں جبکہ اس کے علا وہ کمپیوٹر ٹیچر ،فیزیکل ایجوکیشن اور چپرسی کی اسامیاں خالی پڑی ہوئی ہیں ۔مقامی لوگوں نے کہاکہ سکول کی عمارت بھی خستہ حالی کی شکار ہوتی

مزید خبرں

خزانہ افسر کی قیادت میں شجر کاری مہم کا آغاز نیوزڈیسک   پونچھ// ضلعی خزانہ افسر پونچھ کی قیادت میں شجر کاری مہم کا آغاز کیا گیا۔ اس شجر کاری مہم میں معاون ضلع خزانہ افسر سلیم ملک اور اور محکمہ فنانس کے دیگر عملے کے ارکان موجود تھے۔اس دوران میڈیا کمپلیکس پونچھ کے احاطہ میں مختلف قسم کے پودے لگائے گئے جہاں پر پونچھ کے معزز شہری بھی شامل ہوئے ۔اس حوالے سے بات کرتے ہوئے ضلعی خزانہ افسر پونچھ محمد اکرم ٹھکر نے کہا کہ اگر ہر انسان ایک درخت لگا ئے تو ہمارا ماحول صاف و شفاف ہو سکتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ پونچھ ایک پہاڑی ضلع ہے جہاں کے جنگلات اب آہستہ آہستہ ختم ہو رہے ہیں اور اس وجہ سے آب و ہوا متاثر ہو رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ اس طرح کے شجر کاری جسے اقدام آب و ہوا کی تبدیلی، خرابی اور گلوبل وارمنگ کے خراب اثرات کو کم کرنے میں مددگار ثابت ہوگا۔ انہوں نے زور دیا کہ ہر ایک کو اپ