جہانگیر چوک۔رامباغ فلائی اُوور کا دوسرا حصہ ٹریفک کیلئے کھل گیا

سرینگر/ریاست کے گرمائی دارلحکومت سرینگر میں ریاستی گورنر ستیہ پال ملک نے بدھ کو جہانگیر چوک۔رامباغ فلائی اُوور کے دوسرے حصے کا افتتاح کرکے اس کو ٹریفک کیلئے کھول دیا ۔اس موقع پر کئی اعلیٰ سرکاری حکام بھی موجود تھے۔ حکام کے مطابق مذکورہ فلائی اُوور کا پہلا حصہ ایک سال قبل شروع ہوا تھاتاہم اس کا دوسرا حصہ آج ٹریفک کیلئے کھولا گیا۔ انہوں نے کہا کہ فلائی اُوور کے تیسرے اور آخری حصے کو ماہ جون میں ٹریفک کیلئے کھولا جائے گا۔ اس فلائی اُوور کی تعمیر کا آغاز اکتوبر2013کو ہوا تھا اور یوں پانچ سال میں سرینگرمیں اپنی نوعیت کا اب تک کا یہ سب سے بڑا پروجیکٹ کم و بیش مکمل ہوگیا ہے۔ آج جس حصے کا افتتاح ہوا، وہ رامباغ سے آلوچی باغ تک1.04کلومیٹر پر مشتمل ہے اور اس پر37.5کروڑ روپے کی لاگت آئی ہے۔ حکام کے مطابق فلائی اُوور کا یہ حصہ شروع ہونے سے گاڑیوں کیلئے 15منٹ کا سفر محض ایک منٹ م

امر ناتھ یاترا2019:گورنر نے اعلیٰ سطحی میٹنگ میں سلامتی بندوبست کا جائیزہ لیا

سرینگر/گورنر ستیہ پال ملک جو شری امر ناتھ جی شرائین بورڈ کے چیئرمین بھی ہیں، نے منگل کو یہاں ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ میں یکم جولائی سے بال تل اور پہلگام روٹوں سے شروع ہونے والی شری امر ناتھ جی یاترا کے لئے سلامتی بندوبست کا جائیزہ لیا۔ میٹنگ میں گورنر کے صلاحکار کے۔ وجے کمار، چیف سیکرٹری، ڈی جی پی، جی او سی15 ویں کور، جی او سی وکٹر فورس، شرائین بورڈ کے سی ای او، داخلہ سیکرٹری، مرکزی اور ریاستی سراغرساں ایجنسیوں کے سربراہاں کے علاوہ فوج، پولیس اور ائیر فورس کے سنیئر افسران نے شرکت کی۔ گورنر نے یاترا کے احسن انعقاد کے لئے تمام متعلقہ ایجنسیوں کے مابین بہتر اور قریبی تال میل پر زور دیا۔ سیکورٹی ایجنسیوں کی طرف سے ریاست کے سلامتی منظر نامے کے بارے میں تفصیلی پریذنٹیشن دی گئی۔ میٹنگ میں یاترا علاقہ میں کسی بھی امکانی صورتحال سے نمٹنے کے لئے کی جارہی تیاریوں ، یاتریوں کی پُر تحفظ نق

شمالی کشمیر کے جنگل سے دو سال قبل لاپتہ شہری کا ڈھانچہ بر آمد

سرینگر/شمالی کشمیر کے کپوارہ ضلع میں منگل کو مقامی لوگوں نے ہندوارہ کے ہنگنی کوٹ جنگلی علاقے سے دو سال قبل لاپتہ شہری کا ہڈیوں کا  ڈھانچہ بر آمد کرلیا۔ خبر رساں ایجنسی جی این ایس کے مطابق کچھ مقامی لوگوں ،جو جنگل میں مشروم جمع کررہے تھے ، نے کوئی انسانی ڈھانچہ پایا جس کے ساتھ ہی ایک شناختی کارڈ بھی پایا گیا۔ کارڈ پر محمد اکرم میر ولد عبدالعزیز میر ساکنہ شرکوٹ ویلگام کا نام لکھا تھا۔ اطلاعات کے مطابق میر شیپ اینڈ انیمل ہسبنڈری محکمہ میں ملازم تھا جو22مئی2017سے لاپتہ تھا۔ میر کے گھروالوں نے اُس کے لاپتہ ہونے سے متعلق پولیس کے پاس ایک رپورٹ بھی درج کرائی تھی۔    

جہانگیر چوک۔رامباغ فلائی اُوور کے دوسرے حصے کا افتتاح کل

سرینگر/ریاست کے گرمائی دارلحکومت سرینگر میں حکام نے منگل کو کہا کہ جہانگیر چوک۔رامباغ فلائی اُوور کے دوسرے حصے کا افتتاح کل یعنی بدھ 22مئی کو ہونے والا ہے۔ حکام کے مطابق مذکورہ فلائی اُوور کا پہلا حصہ ایک سال قبل شروع ہوا تھاتاہم اس کا دوسرا حصہ کل ٹریفک کیلئے کھولا جائے گا۔ اس فلائی اُوور کی تعمیر کا آغاز اکتوبر2013کو ہوا تھا اور یوں پانچ سال میں سرینگرمیں اپنی نوعیت کا اب تک کا یہ سب سے بڑا پروجیکٹ مکمل ہوگیا۔ کل جس حصے کا افتتاح ہوگا، وہ رامباغ سے آلوچی باغ تک1.04کلومیٹر پر مشتمل ہے اور اس پر37.5کروڑ روپے کی لاگت آگئی ہے۔ حکام کے مطابق فلائی اُوور کا یہ حصہ شروع ہونے سے گاڑیوں کیلئے 15منٹ کا سفر محض ایک منٹ میں طے ہوگا اور لالچوک جانے والی گاڑیوں کیلئے بہت ہی آرام دہ ثابت ہوگا۔ حکام کے مطابق اس سے علاقے میںروز مرہ کے ٹریفک جام سے بھی کافی حد تک راحت ملے گی۔ &

جنوبی ضلع شوپیان کے جنگلی علاقے میں معرکہ آرائی کا آغاز

سرینگر/جنوبی ضلع شوپیان کے جنگلی علاقہ میں منگل کو جنگجوئوں اور فورسز کے مابین معرکہ آرائی کا آغاز ہوگیا۔ پولیس ذرائع کے مطابق فوج ، سی آر پی ایف اورایس او جی کی ایک مشترکہ ٹیم نے کیلر کے جنگلات میں یارون نامی علاقے میں جنگجوئوں کی موجودگی کی مصدقہ اطلاع کے بعد تلاشی آپریشن ہاتھ میں لیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ فورسز آپریشن کے دوران چھپے جنگجوئوں نے فورسز پر فائرنگ کی جس کے جواب میں فورسز نے بھی گولی چلائی اور یوں معرکہ آرائی شروع ہوگئی۔ انہوں نے کہا کہ طرفین کے مابین گولیوں کا تبادلہ آخری اطلاعات ملنے تک جاری تھا۔    

میرواعظ فاروق اور غنی لون کی برسی پرہڑتال سے وادی کے معمولات متاثر

سرینگر/وادی کشمیر میں منگل کو سابق میرواعظ مولوی محمد فاروق اور سابق حریت لیڈر عبد الغنی لون کی برسی کے سلسلے میں ہڑتال کی وجہ سے روز مرہ کے معمولات متاثر ہوگئے۔ شہر سرینگر میں تمام دکان اور کاروباری ادارے بند ہیں جبکہ پبلک ٹرانسپورٹ بھی نہیں چل رہی ہے ۔ پائین شہر میں حکام نے لوگوں کی نقل و حمل روکنے کیلئے پابندیاں نافذ کر رکھی ہیں۔ اطلاعات کے مطابق وادی کے سبھی ضلع صدر مقامات پر بھی ہڑتال کا خاصا اثر ہے۔  سابق میرواعظ مولوی محمد فاروق اور سابق حریت لیڈر عبد الغنی لو ن کی یاد میں ہڑتال کی کال حریت کانفرنس (ع) نے دے رکھی ہے۔  

پائین شہر میں عید گاہ مارچ روکنے کیلئے پابندیوں کا نفاذ

سرینگر/حکام نے منگل کو سرینگر کے پائین علاقوں میں علیحدگی پسندوں کا مجوزہ عید گاہ مارچ روکنے کیلئے پابندیاں نافذ کی گئی ہیں۔ حریت کانفرنس (ع) نے عید گاہ میں جامع مسجد سے عید گاہ میں قائم مزار شہدا ء تک سابق میر واعظ مولوی محمد فاروق اور سابق حریت لیڈر عبد الغنی لون کی یاد میں مارچ کا اعلان کر رکھا ہے۔ دونوں لیڈران کی برسیاں ایک ہی دن پڑتی ہیں۔ سابق میرواعظ کو1990جبکہ لون کو2002میں حملہ آئوروں نے جاں بحق کیاتھا۔ موجودہ میرواعظ اور حریت کانفرنس (ع) کے چیئر مین میرواعظ عمر فاروق کے والد مولوی محمد فاروق کو21مئی1990 کواُن کے گھر میں جبکہ سجاد غنی لون اور بلال غنی لون کے والد عبد الغنی لون کو21مئی 2002کو مزار شہدا میں منعقدہ ایک تقریب کے دوران گولیاں مار کر جاں بحق کیا گیا۔ سرکاری ذرائع کے مطابق علیحدگی پسندوں کے مارچ کو روکنے کیلئے خانیار،رعناواری،نوہٹہ،ایم آر گنج اور صفا ک

کل میرواعظ جامع مسجد سے عید گاہ تک جلوس کی قیادت کریں گے:عوامی ایکشن کمیٹی، ہڑتال کا اعلان

سرینگر/عوامی ایکشن کمیٹی کا ایک اجلاس سوموار کو میرواعظ منزل راجوری کدل میں منعقد ہوا جس میں کل یعنی منگل کو مرحوم میرواعظ مولوی محمد فاروق کی برسی کے سلسلے میں عید گاہ جلسے کو حتمی شکل دی گئی۔ ایک بیان میں بتایا گیا کہ اجلاس کی سربراہی میرواعظ عمر فاروق نے انجام دی جس میں فیصلہ لیا گیا کہ کل جامع مسجد سے عید تک میرواعظ کی قیادت میں ایک پر امن جلوس نکالا جائے گا ۔ بیان کے مطابق یہ جلوس نماز ظہر کے بعد نکالا جائے اور اس میں سماج کے سبھی طبقوں سے وابستہ لوگ شامل ہونگے۔ بیان میں مزید بتایا گیا کہ کل یعنی منگل کو مرحوم میرواعظ کی برسی کے سلسلے میں کشمیر میں ہڑتال کی جائے گی ۔  

پیلٹ متاثرین کا سرینگر میں احتجاج، استعمال پر پابندی کا مطالبہ

سرینگر/پیلٹ ویکٹمز ویلفیئر ٹرسٹ سے وابستہ پیلٹ متاثرین نے سوموار کو پریس کالونی، سرینگر میں آکر احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے  پولیس و فورسز کے ذریعے پیلٹ بندوقوں کے استعمال پر پابندی کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے پیلٹ بندوقوں کے استعمال پر پابندی کے مطالبے کو لیکر کہا کہ اس سے سینکڑوں افراد کی بینائی بلا لحاظ عمر متاثر ہوئی ہے۔ انہوں نے پیلٹ متاثرین کی امداد کی بھی اپیل کی جو انتہائی کٹھن حالات کا شکار ہیں۔ مظاہرین میں پیلٹ سے متاثرہ کمسن بچی ،ہبا نثار بھی شامل تھی جسے اپنی ماں نے گود میں اٹھا رکھا تھا۔ ہبا، جب نومبر2018میں18ماہ کی تھی تب اُس کی آنکھوں پر پیلٹ لگے تھے۔ یہ واقعہ جنوبی کشمیر کے شوپیان ضلع کے کاپرن نامی گائوں میں پیش آیا تھا ۔ بعد میں سرکار نے ہبا کی مالی معاونت کا اعلان کرتے ہوئے اُس کے اکائونٹ میں ایک لاکھ روپے جمع کئے تھے۔    

زکورہ میں سی آر پی ایف کو لینڈ ٹرانسفر فیصلہ کیخلاف ضرورت پڑنے پر کورٹ بھی جائیں گے:کے سی سی آئی

سرینگر /کشمیر چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری (کے سی سی آئی) نے گورنر انتظامیہ کے اس فیصلہ پر سوموار کو تشویش کا اظہار کیا ،جس میں زکورہ میں سی آر پی ایف کو60کنال انڈسٹریل اراضی منتقل کی گئی ہے۔ کے سی سی آئی کے ایک ترجمان نے کہا کہ ریاست کی تاجر برادری پہلے ہی زمین کی عدم دستیابی کی وجہ سے متاثر ہورہی ہے۔ انہوں نے ایک بیان میںکہا''کے سی سی آئی نے گورنر سے پہلے ہی کہا ہے کہ گورنمنٹ پبلک سیکٹر انڈر ٹیکنگ یونٹوں کے زیر قبضہ زمین کو تجارتی مقاصد کیلئے میسر کیا جائے''۔ بیان میں مزید بتایا گیا ہے کہ یہ انتہائی حیران کن تھا جب حکومت نے حال ہی میں اس کے برعکس فیصلہ لیا حالانکہ کافی زمین پہلے ہی فورسز کے قبضے میں پڑی ہے۔ بیان کے مطابق زینہ کوٹ انڈسٹریل اسٹیٹ کی کم و بیش300کنال اراضی پہلے ہی فورسز کو منتقل کی گئی ہے۔ یہ زمین سابق ہندوستان مشین ٹولز (ایچ ایم ٹی) سے 201

بھدرواہ میں کرفیو میں نرمی،انٹرنیٹ سروس کی معطلی جاری

سرینگر/ضلع انتظامیہ نے بھدرواہ میں سوموار کو جاری کرفیو کے اندر چار گھنٹوں کی نرمی کا اعلان کردیا۔علاقے میں تاہم انٹرنیٹ سروس کی معطلی جاری ہے۔ یہ کرفیو بھدرواہ اور ملحقہ علاقوں میں گذشتہ جمعہ کو مبینہ طور گائو رکھشکوں کے ہاتھوں ایک شہری کی گولی مار کر ہلاکت کے بعد نافذ کیا گیا تھا۔ حکام نے کہا کہ کرفیو میں پہلے ساڑھے دس سے بارہ بجے تک نرمی کی گئی جس کے بعد اس کو اڑھائی بجے تک بڑھادیا گیا اور اس دوران کسی ناخوشگوار واقعہ کی کوئی اطلاع نہیں آئی۔ نعیم شاہ نامی مویشیوں کے تاجرکا قتل محلہ قلعہ میں ہوا تھا اور اس کیخلاف علاقے میں شدید احتجاج ہوا تھا جس کے بعد حکام نے یہاںکرفیو نافذ کردیا۔ بھدرواہ کے تحصیلدار ذیشان طاہر نے کہا کہ علاقے میں دفعہ144کے تحت پابندیوں کا سلسلہ جاری رہے گا تاکہ بقول اُنکے امن و قانون کی صورتحال کو بنایا رکھا جاسکے۔ انہوں نے مزید کہا کہ کرفیو پور

گولی لگنے سے زخمی پی ڈی پی کارکن سکمز میں چل بسا

سرینگر/پیپلز ڈیمو کریٹک پارٹی (پی ڈی پی) کا جو کارکن گذشہ شام نامعلوم بندوق برداروں کے ہاتھوں جنوبی کشمیر میں زخمی ہوا تھا، وہ سوموار کو میڈیکل انسٹی چیوٹ، صورہ (سکمز)میں زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھا۔ محمد جمال(65) کو گذشتہ شام ضلع کولگام کے زنگلپورہ نامی گائوں میں نقاب پوش افراد نے اپنے ہی گھر میں گولی مار کر زخمی کیا تھا جس کے فوراً بعد اُسے سکمز لایا گیا تھا۔ سکمز ذرائع نے زخمی جمال کے چل بسنے کی تصدیق کی۔  

ٹیٹوال بلاک میں تیز آندھی سے رہائشی مکانات کو نقصان

 سرینگر/تیز آندھی کے سبب کرناہ کے بلاک ٹیٹوال کے متعدد علاقوں میں گذشتہ رات درجنوں مکانوں، دکانوں یہاں تک کہ سکولوں کی چھتوں کو نقصان پہنچا اورکئی ایک درخت بھی جڑ سے اکھڑ گئے جبکہ تیز ہوائوں کی وجہ سے بجلی کے کھمبے بھی گرگئے جس کے نتیجے میں بجلی نظام بھی درہم برہم ہو گیا ۔ اطلاعات کے مطابق گذشتہ شام قریب ساڑھے دس بجے ٹیٹوال ، درنگلہ ، درگڑ اور ٹیٹوال اور دیگر ملحقہ علاقوں میں بارشوں کے ساتھ تیز آندھی آئی جس نے دیکھتے ہی دیکھتے اُن علاقوں میں رہنے والوں کو نقصان سے دوچار کیا ۔تاہم کہیں سے کسی جانی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔ مقامی ذرائع کے مطابق تیز آندھی سے مکانات کے چھتیں اُڑ گئیں ،یہاں تک کہ درخت بھی گر کر سڑکوں پر آگئے ہیں جس کے نتیجے میں نقل و حمل بھی متاثر ہورہی ہے ۔  مقامی آبادی نے انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ اُن علاقوں میں املاک کے نقصان کا جائزہ لیکر لوگ

بانڈی پورہ کے لاپتہ اُستاد کی لاش جھیل ولر سے بر آمد

سرینگر/شمالی کشمیر کے ضلع بانڈی پورہ سے جو اُستاد گذشتہ ہفتے لاپتہ ہوا تھا، اُس کو سوموار کے روز مردہ حالت میں پایا گیا اور اُس کی لاش جھیل ولر سے بر آمد کی گئی۔ حکام کے مطابق مشتاق احمد لون ساکنہ شیخپورہ، مانتری گام کی لاش آج صبح لہراولپورہ علاقے میں جھیل ولر سے بر آمد ہوئی۔ مشتاق کی لاش کو مقامی لوگوں نے دیکھ کر پولیس کو اس بارے میں مطلع کیا۔ حکام کے مطابق لاش کی شناخت مشتاق کے بھائی نے کی اور بعد میں اس کوپاسٹ مارٹم کیلئے ضلع اسپتال باندی پورہ لیجایا گیا ۔ مشتاق 3مئی کو لاپتہ ہوا تھا۔وہ گورنمنٹ ہائی سکول چونٹھ مولہ میں اُستاد کی حیثیت سے تعینات تھا ۔  

پلوامہ پنز گام معرکہ آرائی میں جاں بحق تین جنگجوئوں کی شناخت ہوگئی

سرینگر/جنوبی کشمیر میں ضلع پلوامہ کے پنزگام گائوں میں سنیچر کو فورسز نے ایک کارروائی کے دوران جن تین جنگجوئوں کو جاں بحق کیا اُن کی شناخت ہوگئی ہے۔   پولیس  کے مطابق جاں بحق ہونے والے جنگجوئوں میں شوکت احمد ڈار ساکنہ پنزگام،عرفان احمد ساکنہ  وڈورہ سوپور اور مظفر احمد  شیخ ساکنہ ٹہاب پلوامہ شامل ہیں۔تینوں کا تعلق حزب المجاہدین سے تھا۔ فوجی ترجمان کرنل راجیش کالیا کے مطابق پنزگام معرکہ آرائی کے دوران تیسرے جنگجو کے جاں بحق ہو نے کے بعد آپریشن ختم کیا گیا۔ پولیس ذرائع کے مطابق فورسز نے جنگجوئوں کی موجودگی کی مصدقہ اطلاع کے بعد علی الصبح پنزگام کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن شروع کیا ۔ چھپے جنگجوئوں نے فورسز پر فائرنگ کی جس کے جواب میں فورسز نے بھی گولیاں چلائیں اور یوں معرکہ آرائی کا آغاز ہوگیا۔ فوج اور پولیس ذرائع کے مطابق کچھ گھنٹوں تک جاری رہنے

گولیوں کے مختصر تبادلے کے بعدا ننت ناگ ضلع میں فورسز آپریشن ختم

سرینگر/جنوبی کشمیر کے اننت ناگ میں جنگجوئوں اور فورسز کے مابین مختصر گولیوں کے تبادلے کے بعد فورسز کا آپریشن ختم کیا گیا کیونکہ ابتدائی فائرنگ کے بعد جنگجوئوں اور فورسز کا آمنا سامنا نہیں ہوا۔ فورسز نے آج صبح دہرن نامی گائوں کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن کا آغاز کیاتھا۔  پولیس ذرائع کے مطابق فورسز نے محاصرے کے بعد جونہی اُس جگہ کی طرف پیش قدمی کی جہاں اُنہیں جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع تھی تو وہاں چھپے جنگجوئوں نے گولیاں چلائیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ابتدائی گولیوں کے تبادلے کے بعد وہاں خاموشی چھاگئی جو آخری وقت تک جاری رہی ۔ باور کیا جاتا ہے کہ یہاںجنگجو فورسز کو چکمہ دیکر بحفاظت نکلنے میں کامیاب ہوگئے ۔ مقامی ذرائع کے مطابق مظاہرین نے آپریشن کے دوران فورسز کو کئی بار سنگباری کا نشانہ بنایا۔    

کرناہ میں کنٹرول لائن پر پاکستانی شہری گرفتار

 سرینگر/کرناہ میں کنٹرول لائن پر فوج نے سنیچر کو ایک پاکستانی شہری کی گرفتاری عمل میں لانے کا دعویٰ کیا ہے ۔  فوجی ذرائع کے مطابق فوج کی17بہار ریجمنٹ سے وابستہ اہلکاروں نے امروہی سیکٹر میں مشکوک نقل حرکت دیکھی جس کے بعد انہوں نے ایک شخص، جو کنٹرول لائن عبور کر کے آیا تھا، کی گرفتاری عمل میں لائی ۔ پولیس ذرائع نے بھی اس واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ شخص کو ابھی پولیس کے حوالے نہیں کیا گیا ہے البتہ فوج کی جانب سے مذکورہ پاکستانی شہری کی پوچھ تاچھ جاری ہے ۔ گرفتار شدہ پاکستانی شہری کی شاخت شبیر احمد ولد میر ولی ساکنہ منجاکوٹ کے بطور کی گئی ہے ۔    

سوپور علاقے میں فورسز محاصرے کے بعد انٹرنیٹ سروس معطل

سرینگر/شمالی کشمیر کے سوپور میں فورسز نے سنیچر کو ہتھ لنگو علاقوں کو محاصرے میں لیکر خانہ تلاشیوں کا سلسلہ شروع کیا ہے۔ یہ کارروائی پولیس ذرائع کے مطابق گائوں میں جنگجوئوں کی موجودگی کی مصدقہ اطلاع کے بعد عمل میں لائی گئی ہے۔ اطلاعات کے مطابق فوج،سی آر پی ایف اور ایس او جی اہلکاروں نے گائوں میں گھر گھر تلاشی کا آغاز کیا ہے۔ حکام نے فورسز کارروائی شروع ہوتے ہی علاقے میں انٹر نیٹ سروس معطل کردی۔  

اننت ناگ ضلع میں گولیوں کے مختصر تبادلے کے بعد گائوں کا فورسز محاصرہ

سرینگر/جنوبی کشمیر کے اننت ناگ میں جنگجوئوں اور فورسز کے مابین مختصر گولیوں کے تبادلے کے بعد فورسز نے گائوں کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن کا آغاز کیا ہے۔ پولیس کے مطابق کہ یہ واقعہ دہرن نامی گائوں میں پیش آیا ۔ اطلاعات کے مطابق فوج اور ایس او جی اہلکاروں نے پورے علاقے میں ممکنہ طور چھپے جنگجوئوں کی تلاش کیلئے تلاشی کارروائی شروع کی ہے۔ خبر رساں ایجنسی جی این ایس نے ایک پولیس آفیسر کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ فورسز نے محاصرے کے بعد جونہی اُس جگہ کی طرف پیش قدمی کی جہاں اُنہیں جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع تھی تو وہاں چھپے جنگجوئوں نے گولیاں چلائیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ابتدائی گولیوں کے تبادلے بعد وہاں خاموشی چھائی ہے تاہم علاقے کے سبھی راستے بند کئے گئے ہیں اور تلاشی آپریشن جاری ہے۔    

پلوامہ ضلع کے پنز گام میں فورسز کے ہاتھوں دو جنگجوجاں بحق

سرینگر/جنوبی کشمیر میں ضلع پلوامہ کے پنزگام گائوں میں سنیچر کو فورسز نے ایک کارروائی کے دوران دو جنگجوئوں کو جاں بحق کردیا۔ پولیس ذرائع کے مطابق فورسز نے جنگجوئوں کی موجودگی کی مصدقہ اطلاع کے بعد علی الصبح پنزگام کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن شروع کیا ۔ چھپے جنگجوئوں نے فورسز پر فائرنگ کی جس کے جواب میں فورسز نے بھی گولیاں چلائیں اور یوں معرکہ آرائی کا آغاز ہوگیا۔ فوج اور پولیس ذرائع کے مطابق کچھ گھنٹوں تک جاری رہنے والی معرکہ آرائی میں دو جنگجو جاں بحق ہوگئے جن کی لاشیں بر آمد ہو گئی ہیں۔ ایک جاں بحق جنگجو کی شناخت شوکت احمد ڈار ساکنہ پنزگام کے طور ہوئی ہے جس کا تعلق حزب المجاہدین کے ساتھ تھا۔ دوسرے جاں بحق جنگجو کی شناخت ابھی نہیں ہوئی تھی۔