کنٹرول لائن سے آر پار تجارتی سرگرمیاں معطل: وزارت داخلہ کا آرڈر

سرینگر/مرکزی وزارت داخلہ نے جمعرات کو ایک حکمنامہ جاری کرتے ہوئے کنٹرول لائن کے آر پار تجارت کو معطل کردیا۔ کشمیر کے منقسم حصوں کے مابین کنٹرول لائن سے تجارتی سرگرمیوں کو معطل کرنے کا فیصلہ لیتے ہوئے مرکزی وزارت داخلہ نے کہا کہ اس کراس ایل او سی ٹریڈ کا''غلط استعمال'' کیا جارہا تھا۔ وزارت داخلہ کے آرڈر میں بتایا گیا ہے''حکومت ہندوستان کو اطلاعات موصول ہورہی تھیں کہ ایل او سی ٹریڈ کا پاکستانی عناصر کے ہاتھوں غلط استعمال ہورہا تھا اور اس کو ہتھیار، کرنسی اور نشیلی چیزیں یہاں بھیجنے کیلئے کام میں لایا جاتا تھا''۔ آرڈر میں مزید بتایا گیا ہے کہ این آئی اے کے ہاتھوں کئی کیسوں کی تحقیقات کے دوران یہ بات سامنے آئی ہے کہ کراس ایل او سی ٹریڈ کے ساتھ وابستہ افراد کا تعلق غیر قانونی تنظیموں کے ساتھ ہے جو علیحدگی پسندی کو بڑھاوا دے رہے ہیں۔ آرڈر کے مط

لوک سبھا پولنگ: تین بجے تک کٹھوعہ میں سب سے زیادہ 64.6فیصد ، سرینگر میں سب سے کم5.7فیصد ووٹنگ ریکارڈ

سرینگر/جموں کشمیر کی دو نشستوں پر جمعرات کو لوک سبھا کی دوسرے مرحلے کی ووٹنگ کے دوران تین بجے تک مجموعی طور پر38.5فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی تھی۔ اُدھمپور پارلیمانی نشست میں کٹھوعہ ضلع کے اندر اس مدت تک سب سے زیادہ یعنی64.4فیصد ووٹنگ ریکارڈ ہوئی تھی۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق سرینگر پارلیمانی نشست پرضلع بڈگام میں دن کے تین بجے تک 17.1فیصد ،ضلع گاندربل میں14.4فیصد جبکہ ضلع سرینگر میں5.7فیصدو وٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ سرینگر کی پارلیمانی نشست انہی تین اضلاع پر مشتمل ہے۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ضلع ریاسی میں تین بجے تک62.7فیصد،کٹھوعہ میں64.4فیصد،اُدھمپور میں63.1فیصد،رامبن میں50.8فیصد،ڈوڈہ میں57.2فیصد اور ضلع کشتوار میں50.4فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ اُدھمپور پارلیمانی نشست انہی چھ اضلاع پر مشتمل ہے۔ ووٹنگ آج صبح سات بجے شروع ہوئی جو شام چھ بجے تک جاری رہے گی۔  

چاڈورہ میں پولنگ مرکز کے نزدیک فورسز کے ساتھ جھڑپوں میں تین زخمی

سرینگر/ایک خاتون سمیت تین شہری جمعرات کو وسطی کشمیر کے چاڈورہ علاقے میں اُس وقت زخمی ہوگئے جب فورسز اور مظاہرین کے درمیان ایک مقامی پولنگ مرکز کے نزدیک جھڑپیں ہوئیں۔ سرکاری ذرائع نے کہا کہ مظاہرین نے بڈگام ضلع کے ہفرو گائوں میں فورسز پر پتھرائو کیا جس کے جواب میں فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے پیلٹ فائر کئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ فورسز کی کارروائی میں ایک خاتون سمیت تین شہری زخمی ہوگئے۔ زخمی خاتون کو علاج کیلئے سرینگر منتقل کیا گیا جبکہ باقی ماندہ دو زخمیوں کا علاج چاڈورہ اسپتال میں جاری تھا۔ سرینگر۔بڈگام پارلیمانی نشست پر لوک سبھا انتخابات کے دوسرے مرحلے میں ووٹنگ جاری ہے۔  

لوک سبھا پولنگ: ریاست میں ایک بجے تک30فیصد ووٹنگ درج

سرینگر/جموں کشمیر کی دو نشستوں پر جمعرات کو لوک سبھا کی دوسرے مرحلے کی ووٹنگ کے دوران د ن کے ایک بجے تک مجموعی طور پر29.6فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ضلع بڈگام میں ایک بجے تک 11.4فیصد ،ضلع گاندربل میں11.0فیصد جبکہ ضلع سرینگر میں4.8فیصدو وٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ سرینگر کی پارلیمانی نشست انہی تین اضلاع پر مشتمل ہے۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ضلع ریاسی میں ایک بجے تک49.2فیصد،کٹھوعہ میں49.7فیصد،اُدھمپور میں48.7فیصد،رامبن میں39.3فیصد،ڈوڈہ میں43.2فیصد اور ضلع کشتوار میں39.3فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ اُدھمپور پارلیمانی نشست انہی چھ اضلاع پر مشتمل ہے۔ ووٹنگ آج صبح سات بجے شروع ہوئی جو شام چھ بجے تک جاری رہے گی۔  

لوک سبھا پولنگ: ریاست میں11بجے تک17فیصد سے زیادہ ووٹنگ ریکارڈ

سرینگر/جموں کشمیر کی دو نشستوں پر جمعرات کو لوک سبھا کی دوسرے مرحلے کی ووٹنگ کے دوران صبح گیارہ بجے تک مجموعی طور پر17.8فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ضلع بڈگام میں گیارہ بجے تک 6.4فیصد ،ضلع گاندربل میں6.5فیصد جبکہ ضلع سرینگر میں2.3فیصدو وٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ سرینگر کی پارلیمانی نشست انہی تین اضلاع پر مشتمل ہے۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ضلع ریاسی میں گیارہ بجے تک28.8فیصد،کٹھوعہ میں28.5فیصد،اُدھمپور میں28.7فیصد،رامبن میں19.5فیصد،ڈوڈہ میں28.6فیصد اور ضلع کشتوار میں23.6فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ اُدھمپور پارلیمانی نشست انہی چھ اضلاع پر مشتمل ہے۔ ووٹنگ آج صبح سات بجے شروع ہوئی جو شام چھ بجے تک جاری رہے گی۔  

لوک سبھا پولنگ: ریاست میں پہلے چار گھنٹوں کے دوران6فیصد ووٹنگ ، سرینگر میں1.23فیصد ریکارڈ

سرینگر/جمعرات کو صبح نو بجے تک جموں کشمیر کی دو نشستوں پر مجموعی طور پر6.1فیصد ووٹران نے اپنی رائے کا اظہار کیا تھا ۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق سرینگر کی پارلیمانی نشست پر محض1.23فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی تھی جبکہ اُدھمپور میں 8.6فیصد ووٹنگ درج کی گئی تھی۔ حکام کے مطابق تا ہم ووٹنگ کا سلسلہ سرینگر اور اُدھمپور حلقوں کے اندر پُر امن طریقے سے جاری  تھا۔  

کشمیر میں پولنگ والے علاقوں میں ہڑتال، انٹرنیٹ سروس معطل

سرینگر/سرینگر پارلیمانی حلقے میں آنے والے تین اضلاع، سرینگر، بڈگام اور گاندربل میں جمعرات کو ہڑتال کی جارہی ہے۔ ریاست کے سرینگر اور اُدھمپور پارلیمانی حلقوں میں آج لوک سبھا کیلئے دوسرے مرحلے کی پولنگ جاری ہے ۔ ہڑتال کی اپیل علیحدگی پسندوں نے کر رکھی تھی۔ ادھر حکام نے پولنگ والے علاقوں میں موبائیل انٹرنیٹ سروس معطل کر رکھی ہے۔ پولیس ذرائع کے مطابق یہ اقدام ''امن و قانون کی صورتحال'' بنائے رکھنے کیلئے اُٹھایا گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق سرینگر، بڈگام اور گاندربل اضلاع میں تمام دکان اور کاروباری ادارے بند ہیں جبکہ سڑکیں بھی سنسان نظر آرہی ہیں۔  

لوک سبھا پولنگ: سرینگر میں کم اور اُدھمپور میں بھاری ووٹنگ جاری

سرینگر/سرینگر اور اُدھمپور پارلیمانی حلقوں میں لوک سبھا کیلئے دوسرے مرحلے کی پولنگ جمعرات کوجاری ہے ۔  جہاں سرینگر پارلیمانی حلقے میں صبح کم رفتار پر ووٹنگ شروع ہوئی، وہیں اُدھمپور حلقے سے بھاری ووٹنگ کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ حکام کا کہنا ہے کہ دونوں حلقوں کے اندر پولنگ پُر امن طریقے سے جاری ہے۔ اُدھمپور کے کٹھوعہ حلقے سے موصولہ اطلاعات کے مطابق کٹھوعہ، ریاسی اور اُدھمپور اضلاع میں پولنگ سٹیشنوں پر رائے دہندگان کا رش ہے۔ ادھر سرینگر، بڈگام اور گاندربل اضلاع میں علیحدگی پسندوں کی اپیل پر مکمل ہڑتال کی جارہی ہے اور لوگ ایک ایک کرکے ہی پولنگ سٹیشنوں پر نظر آرہے ہیں۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق صبح نو بجے تک ضلع سرینگر میں 0.9فیصد، ضلع بڈگام میں 1.6فیصد اور ضلع گاندربل میں 1.2 فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی تھی۔ حکام نے پولنگ والے علاقوں میں موبائیل انٹرنیٹ سروس م

لوک سبھا چنائو: سرینگر میں فرضی پولنگ روکنے کیلئے انتظامات کو حتمی شکل

سرینگر/ایک سرکاری بیان میں بدھ کو بتایا گیا کہ سرینگرمیں پارلیمانی نشست کے منصفانہ اورغیر جانبدارانہ چنائو کے انعقاد کے لئے انتظامات کو حتمی شکل دی گئی ہے اوراس سلسلے میں اہم اقدامات کے طورپر فرضی پولنگ روکنے کے لئے کثیر سطحی انتظامات کئے گئے ہیں جن میں فلائنگ سکارڈس ،مائیکرو مشاہدین اورویڈیو گرافرس کی تعیناتی کے علاوہ ضلع بھر میں زونل اورسیکٹر مجسٹریٹس کی تعیناتی شامل ہے۔ بیان کے مطابق فرضی اور ناجائز ووٹنگ کی شکایات کے لئے سکارڈ ہیڈس کے ساتھ فون پر رابطہ قائم کیاجاسکتا ہے۔  

سینٹرل جیل سرینگر میں قیدیوں کی ہڑتال معطل

سرینگر/سینٹرل جیل سرینگر میں قیدیوں نے بدھ کو اپنی ہڑتال ختم کی جو جیل کے اندر حالیہ واقعہ کے بعد متعدد قیدیوں کیخلاف کیس درج کرنے کیخلاف کی جارہی تھی۔ ذرائع نے کہا کہ آج تحصیلدار خانیار عبد الرحمان ڈار ضلع انتظامیہ کی نمائندگی کرتے ہوئے جیل کے اندر قیدیوں سے ملے جس کے بعد قیدی اپنی ہڑتال ختم کرنے پر رضامند ہوگئے۔ قیدیوں کی ہڑتال اپریل5سے جاری تھی جب جیل کے اندر تشدد بھڑک اُٹھا تھا۔ گذشتہ روز قیدیوں کے رشتہ داروں نے پریس کالونی میں آکر احتجاج کرتے ہوئے قیدیوں کیخلاف دائر کیسوں کی منسوخی کا مطالبہ کیا تھا۔  

جنوبی کشمیر میں مجسٹریٹ پر حملہ: پولیس نے کیس درج کرلیا

 سرینگر/پولیس نے بدھ کو جنوبی کشمیر کے اننت ناگ ضلع میں ایک مجسٹریٹ پر فوج کے مبینہ حملے کو لیکر ایف آئی آر درج کرلیا۔ سب ڈویژنل مجسٹریٹ (ایس ڈی ایم) ڈورو اننت ناگ، غلام رسول وانی پر مبینہ طور فوجی اہلکاروں نے گذشتہ روز حملہ کرکے مارا پیٹا اور اُن کی سرکاری گاڑی کو نقصان پہنچایا۔ یہ واقعہ قاضی گنڈ کے اُجرو علاقے میں سرینگر۔جموں شاہراہ پر منگل کو پیش آیا۔ وانی کے مطابق وہ الیکشن سے متعلق ایک میٹنگ میں شرکت کی غرض سے ویسو جارہے تھے جب فوجی اہلکاروں نے اُنہیں روک کر اُن پر حملہ کیا اور پولنگ کا سامان بھی تہس نہس کرکے چھین لیا۔  ایس پی کولگام گورندر پال سنگھ نے اس بات کی تصدیق کی کہ واقعہ کولیکر پولیس سٹیشن قاضی گنڈ میں کیس درج کرلیا گیا ہے۔  

کشمیر شاہراہ پر آج سیولین ٹریفک کیلئے کوئی پابندی نہیں

سرینگر/حکام نے بدھ کو کہا کہ سرینگر۔جموں شاہراہ پر آج کسی فورسز کانوائے کو گذرنے کا پروگرام طے نہیں تھا اس لئے مذکورہ ہائی وے پر آج کسی قسم کی کوئی پابندیاں عاید نہیں کی گئی ہیں اور سیولین ٹریفک کو بھی اس پر چلنے کی اجازت دی گئی ہے۔ ٹریفک پولیس کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ آج کیلئے سرینگر ۔جموں شاہراہ پر کوئی پابندی عاید نہیں رہے گی کیونکہ سی آر پی ایف نے فون کے ذریعے مطلع کیا ہے کہ آج اُن کی کسی کانوائے کا پروگرام نہیں ہے۔ واضح رہے کہ اپریل7کو یہ اعلان کیا گیا تھا کہ کشمیر شاہراہ ہفتے میں دو دن، اتوار اور بدھ، کو سیولین ٹریفک کیلئے بند رہا کرے گی۔ یہ پابندیاں 31مئی تک کیلئے عاید کی گئی ہیں۔ یہ حکمنامہ فروری14کے اُس جنگجویانہ حملے کے بعد جاری کیا گیا جس میں کم و بیش40فورسز اہلکار ضلع پلوامہ میں ایک خود کُش حملے میں ہلاک ہوگئے۔ کشمیرشاہراہ پر عاید پابندی

لوک سبھا انتخابات کے پیش نظر سرینگر کیلئے ٹریفک پولیس ایڈوائزری جاری

سرینگر/ سرینگر نشست کیلئے لوک سبھا انتخابات کے پیش نظر بدھ کو ضلع مجسٹریٹ سرینگر کے حکمنامے کے مطابق ٹریفک پولیس نے سرینگر کیلئے ٹریفک ایڈوائزری جاری کردی۔  ایڈوائزری میں بتایا گیا ہے کہ18اپریل کو نشاط، شالیمار، ہارون اور متصلہ علاقوں کیلئے بڈیاری چوک اور گپکار کے راستے سے ٹریفک چلنے کی اجازت نہیں ہوگی۔ اسی طرح نشاط، شالیمار، ہارون اور متصلہ علاقوں کیلئے ایس کے آئی سی سی کے راستے ٹریفک چلنے کی اجازت نہیں ہوگی۔  ایڈوائزری کے مطابق جو لوگ ہارون، شالیمار، نشاط سے لالچوک کا سفر کرنے کے خواہشمند ہوں، وہ فور شور، روڑ اور حضرت بل کا راستہ اختیار کریں۔ جو ڈلگیٹ یا لالچوک علاقوں سے ہارون ،شالیمار، نشاط وغیرہ جانا چاہیں، اُنہیں نوپورہ۔خانیار۔رعنا واری کا راستہ اختیار کرنے کی ہدایات دی گئی ہے۔  

سرینگر اور اُدھمپور کی پارلیمانی نشستوں کیلئے الیکشن مہم کی مدت ختم

سرینگر/سرینگر اور اُدھمپورکی پارلیمانی نشستوں کیلئے الیکشن مہم چلانے کی مدت منگل کی  شام  کو ختم ہوگئی ۔ سرینگراور اُدھمپور کی سیٹوں کیلئے جمعرات کو انتخابات کے دوسرے مرحلے کے تحت ووٹ ڈالے جائیں گے۔ سرینگر میں صرف نیشنل کانفرنس صدر فاروق عبد اللہ ہی مہم چلاتے ہوئے زیادہ نظر آئے جو لوک سبھا میں چوتھی بار پہنچنے کیلئے پارٹی کی ٹکٹ پر چنائو لڑ رہے ہیں اور جنہیں بظاہر کسی سخت مقابلے کا سامنا نہیں ہے۔ فاروق کے مد مقابلہ پی ڈی پی کے آغا محسن،پیپلز کانفرنس کے عرفان انصاری اور بھاجپا کے خالد جہانگیر کو ملاکر نو اُمیدوار ہیں۔ حکام کے مطابق سرینگر ضلع میں کل ملاکر46چناوی ریلیاںمنعقد ہوئیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ سرینگر کی نشست 12,90,318ووٹران پر مشتمل ہے جن کیلئے 1716پولنگ سٹیشن قائم کئے گئے ہیں۔ مائیگرنٹ ووٹران کیلئے جموں، اُدھمپور اور نئی دلی میں 26پولنگ سٹیشن ق

کے ای اے چیئر مین یاسین خان کے نام این آئی اے کی سمن

سرینگر/قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) نے منگل کو کشمیر اکونومک الائنس کے چیئر مین محمد یاسین خان کے نام مبینہ فنڈنگ کیس کے سلسلے میں سمن جاری کی۔ سمن میں خان سے کہا گیا ہے کہ وہ این آئی اے کے صدر دفتر واقع نئی دلی میں 18اپریل کو پیش ہوجائیں۔ خان کے نام یہ سمن این آئی اے ،ایس پی ہیڈکوارٹرس، نئی دلی کی طرف سے جاری ہوئی ہے۔  

پونچھ ۔رائو لاکوٹ پوئنٹ سے کراس ایل او سی ٹریڈ بحال،70ٹرکوں کا آر پار سفر

سرینگر/پونچھ۔رائولاکوٹ پوئنٹ سے کنٹرول لائن کے آر پار تجارت منگل کو بحال ہوگئی ۔ حکام نے کہا کہ یہ تجارت آج دو ہفتے بعد بحال ہوئی اور دونوں طرف کی70مال بردار گاڑیوں نے کنٹرول لائن پار کی۔ تجارتی کی بحالی سے تاجر برادری نے اطمینان کی سانس لی ہے۔ کنٹرول لائن پر تجارت بھارت اور پاکستان کی افواج کے مابین گولیوں اور مارٹر شیلنگ کے تبادلے کے بعد یکم اپریل کو بند ہوئی تھی۔ اس کراس ایل او سی فائرنگ میں ایک لڑکی،ایک خاتون اور بی ایس ایف اہلکار جاں بحق جبکہ پانچ اہلکاروں سمیت24دیگر زخمی ہوئے تھے۔ پونچھ پوئنٹ (چکندا باغ)سے گذشتہ روز مسافر بس سروس بحال ہوئی تھی جبکہ آج آر پار تجارت بحال ہوگئی۔  

جنوبی کشمیر کے اننت ناگ میں فوج کے ہاتھوں ایس ڈی ایم ڈورو کی مبینہ مارپیٹ

سرینگر/فوج نے منگل کو جنوبی کشمیر کے ضلع اننت ناگ میں ایس ڈی ایم ڈورو کی مبینہ طور مارپیٹ کی اور اُن کی سرکاری گاڑی کو نقصان پہنچایا۔ یہ واقعہ جنوبی کشمیر میں اننت ناگ کے اُجرو علاقے میں پیش آیا جب فوج کے ایک آفیسر اور ایس ڈی ایم ڈورو کے مابین کسی بات کو لیکر تکرار ہوئی۔  اطلاعات کے مطابق ایس ڈی ایم ڈورو،غلام رسول وانی کو فوج کے آفیسر کے ساتھ اُس وقت تکرار ہوئی جب اہلکاروں نے ایس ڈی ایم کی گاڑی کو قاضی گنڈ جاتے ہوئے روکا۔ ذرائع کے مطابق ایس ڈی ایم کو فوجی اہلکاروں نے مارا پیٹا جس کے بعد ضلع کمشنر اننت ناگ جائے واردات پر پہنچ گئے۔ فوج کے ترجمان کرنل راجیش کالیا کے مطابق وہ معاملے کی تفاصیل حاصل کررہے ہیں۔  

ترال میں نیشنل کانفرنس کی الیکشن تقریب کے نزدیک جنگجوئوں کا گرینیڈ دھماکہ

سرینگر/جنگجوئوں نے منگل کو جنوبی کشمیر کے ترال میں نیشنل کانفرنس کی الیکشن تقریب کے نزدیک گرینیڈ دھماکہ کیا تاہم اس سے کوئی نقصان نہیں ہوا۔ پولیس ذرائع نے کہا کہ نیشنل کانفرنس کی الیکشن تقریب پارٹی کے مقامی لیڈر محمد اشرف بٹ کے گھر پر ہورہی تھی جس کے دوران گھر کے نزدیک گرینیڈ دھماکہ ہوا۔ پولیس ذرائع نے کہا کہ گرینیڈ زور دار دھماکے کے ساتھ پھٹ گیا لیکن اس سے کسی قسم کا کوئی نقصان نہیں ہوا۔ علاقے کو دھماکے کے فوراً بعد محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن شروع کیا گیا۔  

شمالی کشمیر میں الیکشن ریلی کے دوران زخمی پیپلزکانفرنس کارکن چل بسا

سرینگر/پیپلز کانفرنس کارکن، جو شمالی کشمیر میں ایک الیکشن ریلی کے دوران حادثے کا شکار ہوکر زخمی ہوا تھا، منگل کو اسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاکرچل بسا۔ مشتاق احمد میر ولد غلام محمد میر ساکنہ بھون وٹسر، راجوار کپوارہ ضلع کے ہندوارہ علاقے میں پیپلز کانفرنس کی ایک ریلی کے دوران 9اپریل کوگاڑی سے گر کر زخمی ہوا تھا۔ پیپلز کانفرنس کے چیئر مین سجاد لون نے اپنی پارٹی کے کارکن مشتاق کے انتقال پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔ لون نے ایک ٹویٹ میں مشتاق کو خراج عقیدت پیش کیا۔    

کشتوار میں دن کا کرفیو ہٹا، دفعہ144کے تحت پابندیوں کا سلسلہ جاری

سرینگر/کم و بیش ایک ہفتے تک نافذ رہنے والاکرفیو منگل کو کشتوار قصبہ سے ہٹایا گیا۔ یہ کرفیو گذشتہ ہفتے اُس وقت عائد کیا گیا تھا جب وہاں ہندو شدت پسند تنظیم آر ایس ایس کے ایک مقامی لیڈر، چندر کانت کو گولی مار کر ہلاک کیا گیا تھا۔ اس حملے میں چندر کانت کا ایک محافظ بھی جاں بحق ہوگیا تھا۔  سرکاری حکام کے مطابق حالات میں بہتری کے پیش نظر اگر چہ دن کا کرفیو پوری طرح ہٹایا گیا ہے تاہم رات کا کرفیو مسلسل جاری رہے گا اور دن میں بھی دفعہ144کے تحت چار سے زیادہ افراد کے جمع ہونے پر پابندی عاید رہے گی۔ ذرائع نے کہا کہ قصبہ سے فوج کو بھی ہٹایا گیا ہے جس کو چندرکانت کی ہلاکت کے بعد حالات پرقابو پانے کیلئے تعینات کیا گیا تھا۔ ادھر پولیس ذرائع کے مطابق چندر کانت کی ہلاکت کے کیس کے سلسلے میں متعدد افراد کی گرفتاری عمل میں لائی گئی ہے جن سے پوچھ ہورہی ہے۔  

تازہ ترین