تازہ ترین

ہندوارہ میں شوہر کے ہاتھوں مبینہ طوربیوی کو آگ لگاکر مارنے کی کوشش: پولیس

سرینگر/پولیس نے منگل کو بتایا کہ اُنہیں یہ اطلاع موصول ہوئی کہ ایک خاتون جو کہ جھلس گئی تھی، کو زخمی حالت میں ہندوارہ اسپتال پہنچایا گیا ہے ۔ پولیس بیان کے مطابق چنانچہ اطلاع ملتے ہی پولیس ٹیم ہندوارہ اسپتال پہنچی جہاں معلوم ہوا کہ مذکورہ خاتون کو مبینہ طورپراپنے ہی شوہر نے آگ لگائی تھی۔ پولیس نے ملزم کی گرفتاری عمل میں لا کر اس سلسلے میں ایف آئی آر زیر نمبر 99/2019کے تحت ہندوارہ پولیس اسٹیشن میں کیس درج کرکے تحقیقات شروع کی اور اس سلسلے میں فارینسک اور فوٹو ریکارڈنگ ٹیموں کو ثبوت و شواہد اکھٹا کرنے کیلئے جائے وقوع کی اور روانہ کیا ۔  

دلی پولیس کے ہاتھوں سرینگر میں جیش سے وابستہ جنگجو گرفتار

سرینگر/دلی پولیس نے منگل کو سرینگر میں جیش محمد سے وابستہ ایک ایسے جنگجو کی گرفتاری عمل میں لائی ہے جس پر دو لاکھ روپے کا انعام تھا۔ حکام نے گرفتار شدہ کی شناخت عبد المجید بابا ساکنہ ماگرے پورہ، سوپور کے طور کی ہے۔ ڈپٹی کمشنر دلی پولیس (سپیشل سیل) سنجیوئو کمار یادو کے مطابق بابا کی گرفتاری سنیچر کو سرینگر کے صورہ علاقے سے عمل میں لائی گئی۔ ذرائع کے مطابق بابا کو چیف جوڈیشل مجسٹریٹ سرینگر کے سامنے پیش کرنے کے بعد دلی منتقل کیا جارہا ہے۔    

گاندربل میں لڑکی کی مبینہ عصمت ریزی، ملزم گرفتار

سرینگر/سمبل سانحہ کیخلاف شدید غم و غصے کے بیچ وسطی کشمیر کے ضلع گاندربل میں منگل کو ایک سولہ سالہ لڑکی کی مبینہ عصمت ریزی کی پاداش میں ملزم کو گرفتار کیا گیا۔  پولیس ذرائع نے کہا کہ لڑکی کے گھروالوں نے اس سلسلے میں شکایت درج کرائی جس کے بعد ملزم کی گرفتاری عمل میں لائی گئی۔ گاندربل کے ایس ایس پی محمد خلیل پوسوال کے مطابق انہیں لڑکی کی عصمت دری کی شکایت اتوار کو ملی جس کے بعد ہرن نامی گائوں کے رہنے والے ملزم کو گرفتار کیا گیا جو کہ متاثرہ لڑکی کا ہمسایہ ہے۔ واضح رہے کہ وادی بھر میں سمبل میں ایک تین سالہ معصوم بچی کی مبینہ عصمت ریزی کیخلاف شدید احتجاج کا سلسلہ جاری ہے۔  

بمنہ اور امر سنگھ کالیج کے باہر مظاہرین اور پولیس کے مابین جھڑپیں

سرینگر/سرینگر میں قائم بمنہ کالیج اور شہر کے گوگجی باغ علاقے میں امر سنگھ کالیج کے باہر منگل کو سمبل سانحہ کیخلاف احتجاج کررہے طالب علموں اور پولیس اہلکاروں کے مابین جھڑپیں ہوئیں۔ عینی شاہدین نے کہا کہ امر سنگھ کالیج کے طالب علموں نے کالیج احاطے میں سمبل سانحہ کیخلاف زور دار احتجاجی مظاہرے کا اہتمام کیا۔ احتجاج کررہے طالبان علم نے جونہی کالیج سے باہرآنے کی کوشش کی تو موجود پولیس کی بھاری تعداد نے اُنہیں روکا جس کے نتیجے میں یہاں جھڑپیں ہوئیں۔ کالیج کے ایک عہدیدار کے مطابق احتجاجی طالب علموں نے کالیج کے اندر سے ہی پولیس اہلکاروں پر سنگباری کی جنہوں نے جواب میں کالیج احاطے کے اندر  آنسو گیس کے گولے پھینکے۔  انہوں نے کہا کہ طرفین میں شدید جھڑپوں کا سلسلہ جاری تھا۔ اسی طرح بمنہ کالیج کے طالب علموں اور پولیس کے مابین بھی جھڑپوں کا سلسلہ جاری ہے۔اس سے قبل یہاں بھی س

سمبل سانحہ کیخلاف کشمیر میں احتجاج کا سلسلہ جاری

سرینگر/وادی کشمیر میں منگل کو سمبل سانحہ کیخلاف احتجاج کا سلسلہ رہا۔ تین سالہ بچی کیساتھ مبینہ عصمت ریزی کا یہ سانحہ ضلع بانڈی پورہ میں8مئی کو پیش آیا۔ اطلاعات کے مطابق زنانہ کالیج، مولانا آزاد روڑ ،سرینگر میں آج اس سانحہ کیخلاف زور دار احتجاج ہوا۔ عینی شاہدین کے مطابق طالبات نے کلاسوں کا بائیکاٹ کرکے کالیج احاطے میں زور دار احتجاج کرتے ہوئے مجرم کیخلاف سخت سزا کا مطالبہ کیا۔ کشمیر یونیورسٹی میں بھی مسلسل دوسرے روز سمبل میں پیش آئے شرمناک واقعہ کیخلاف طالب علموں کا احتجاج جاری رہا۔ یہاں سینکروں طالب علموں نے کشمیر یونیورسٹی سٹوڈنٹس یونین کے بینر تلے جمع ہوکر اپنا احتجاج درج کیا۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ ایسے بھیانک جرائم کیلئے کسی بھی مہذب سماج میں کوئی جگہ نہیں ہے۔  ایک احتجاجی طالب علم کا کہنا تھا ''اُمید ہے کہ معاملے کو سیاست کا شکار نہ بناکر متاثر

جنوبی کشمیر میں ٹول ٹیکس کیخلاف ٹرانسپورٹروں کی ہڑتال سے معمولات متاثر

سرینگر/جنوبی کشمیر میں منگل کو معمولاتِ زندگی متاثر رہی کیونکہ یہاں ٹرانسپورٹر کشمیر شاہراہ پر بھاری ٹول ٹیکس کیخلاف ہڑتال پر ہیں۔ جنوبی کشمیر کے ٹرانسپورٹر کشمیر کی گاڑیوں کو ٹول ٹیکس سے مستثنیٰ رکھنے کا مطالبہ کررہے ہیں۔ واضح رہے کہ اونتی پورہ علاقے میں قائم نئے ٹول پلازا پر اس ماہ کے آغاز سے بھاری ٹول ٹیکس وصولنے کا سلسلہ شروع کیا گیا ہے جس کیخلاف اہل وادی میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے اور ہر خاص و عام اس کو ختم کرنے کا مطالبہ کررہا ہے۔ اطلاعات کے مطابق ٹرانسپورٹروں کی ہڑتال کی وجہ سے مسافروں کو سخت مشکلات درپیش آئی ہیں ۔ ریاستی گورنر ستیہ پال ملک نے یقین دلایا ہے کہ معاملہ مرکزی سرکار کیساتھ اُٹھایا گیا ہے اور مقامی گاڑیوں کو ٹیکس سے مبرا قرار دئے جانے سے متعلق احکامات جاری کئے جائیں گے۔  

سرینگر۔جموں شاہراہ پر پھر پسیاں گر آئیں، پھر بند،ہزاروں درماندہ

سرینگر/سرینگر۔جموں شاہراہ پر منگل کو ایک بار پھر تازہ پسیاں گر آئی ہیں جس کی وجہ سے اس کو پھر ٹریفک کیلئے بند کردیا گیا۔ حکام کے مطابق شاہراہ پر ڈگڈول علاقے میں پتھر بھی گر آئے ہیں۔ ایس ایس پی نیشنل ہائی وے جتیندر سنگھ جوہر کے مطابق شاہراہ کو ڈگڈول علاقے میں تازہ پسیاں گر آنے کے بعد ٹریفک کیلئے بند کیا گیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہزاروں لوگ شاہراہ پر درماندہ ہیں۔ انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ شاہراہ پر سفر سے گریز کریں کیونکہ ابھی شاہراہ ٹریفک کے قابل نہیں ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جب شاہراہ کو ٹریفک کے قابل بنایا جائے گا تو سب سے پہلے درماندہ گاڑیوں کو ہی چلنے کی اجازت ہوگی۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ مسلسل پتھر گر آنے کے سبب بحالی کے کام میں مشکلات پیدا ہورہی ہیں۔