شاہراہ کی بحالی کے ساتھ ہی1000مال بردار گاڑیاں کشمیر روانہ

سرینگر // آئی جی پی ٹریفک الوک کمار نے کہا ہے کہ شاہراہ کے جزوری طور بحال ہوتے ہی جموں سے کشمیر کی طرف قریب 1000سے زیادہ گاڑیوں کو روانہ کیا گیا ۔’کشمیر عظمیٰ ‘کے ساتھ خصوصی بات چیت کے دوران الوک کمار نے کہا کہ شاہراہ کو جزوری طور پر بحال کرنے کے بعد درماندہ ہوئے قریب 500ٹینکر گاڑیوں اور 600دیگر مسافر اور مال برداد گاڑیوں کو کشمیر کی طرف روانہ کیا گیا اور یہ گاڑیاں جواہر ٹنل کو کراس کر کے کشمیر کی طرف روانہ تھیں۔ اُنہوں نے کہا کہ محکمہ ٹریفک اُس وقت شاہراہ پر مسلسل ٹریفک کی بحالی میں لگا ہوا ہے اور شام دیر گئے تک یہ گاڑیاں کشمیر کی طرف روانہ تھی ۔انہوں نے کہا کہ مٹی کے تیل ،پٹرول اورڈیزل سے بھرے ساڑھے 4سو ٹینکر ،500مسافر اور لوڈ کیرئر گاڑیوں کے علاوہ مال سے بھرے 100ٹرک کشمیر پہنچائے گے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ جموں میں اس وقت بہت سی گاڑیوں پر مال بھرا جا رہا ہے تاکہ وہ کشمیر ک

شاہراہ کی بحالی کے ساتھ ہی1000مال بردار گاڑیاں کشمیر روانہ

سرینگر // آئی جی پی ٹریفک الوک کمار نے کہا ہے کہ شاہراہ کے جزوری طور بحال ہوتے ہی جموں سے کشمیر کی طرف قریب 1000سے زیادہ گاڑیوں کو روانہ کیا گیا ۔’کشمیر عظمیٰ ‘کے ساتھ خصوصی بات چیت کے دوران الوک کمار نے کہا کہ شاہراہ کو جزوری طور پر بحال کرنے کے بعد درماندہ ہوئے قریب 500ٹینکر گاڑیوں اور 600دیگر مسافر اور مال برداد گاڑیوں کو کشمیر کی طرف روانہ کیا گیا اور یہ گاڑیاں جواہر ٹنل کو کراس کر کے کشمیر کی طرف روانہ تھیں۔ اُنہوں نے کہا کہ محکمہ ٹریفک اُس وقت شاہراہ پر مسلسل ٹریفک کی بحالی میں لگا ہوا ہے اور شام دیر گئے تک یہ گاڑیاں کشمیر کی طرف روانہ تھی ۔انہوں نے کہا کہ مٹی کے تیل ،پٹرول اورڈیزل سے بھرے ساڑھے 4سو ٹینکر ،500مسافر اور لوڈ کیرئر گاڑیوں کے علاوہ مال سے بھرے 100ٹرک کشمیر پہنچائے گے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ جموں میں اس وقت بہت سی گاڑیوں پر مال بھرا جا رہا ہے تاکہ وہ کشمیر ک

سات روزتک بند رہنے کے بعد سرینگر۔جموں شاہراہ پرٹریفک جزوی طوربحال

سرینگر/سرینگر۔جموں شاہراہ پر درماندہ چھوٹی گاڑیوں اور تیل سے بھرے ٹینکروں کو منگل کے روز وادی کی طرف بڑھنے کی اجازت دیدی گئی جبکہ اس سے قبل شاہراہ سے پسیاں ہٹاکر اس کو جزوی طور ٹریفک کے قابل بنایا گیا۔ رامبن میں مقیم ہائے وے کے ڈی ایس پی ٹی، سریش شرما نے کہا کہ درماندہ ٹینکروں اور چھوٹی گاڑیوں کو سات روز تک درماندہ رہنے کے بعد آج کشمیر کی طرف سفر کی اجازت دیدی گئی۔ حکام کے مطابق جہاں  شاہراہ کو پسیوں سے نقصان پہنچا تھا وہاں اس کو یکطرفہ ٹریفک کے قابل بنایا گیا ہے۔ مذکورہ شاہراہ حالیہ شدید برفباری کے بعد گذشتہ سات روز سے مسلسل بند پڑی ہے جس کے نتیجے میں وادی کے اندر اشیائے ضروریہ کی سنگین کمی واقع ہوئی ہے۔  

دفعہ35اے کیس کی سماعت کیخلاف بدھ اور جمعرات کو ہڑتال: مشترکہ مزاحمتی قیادت

سرینگر/سید علی گیلانی، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل علیحدگی پسندوں کے وفاق مشترکہ مزاحمتی قیادت نے منگل کو اپنے ایک بیان میں عدالت عظمیٰ میں آئین کی دفعہ35اے کی شنوائی کیخلاف بدھ اور جمعرات(13اور14فروری) کو ہڑتال کی اپیل کی۔ بیان میں مذکورہ لیڈران نے کہا کہ وہ بار بار کی ہڑتالوں کے نقصانات سے باخبر ہیں لیکن یہ معاملہ اتنا حساس ہے جس کیخلاف احتجاج ناگزیر ہے۔ لیڈران نے کہا کہ اگر دفعہ35اے کیخلاف فیصلہ آیا تو ریاست بھر میں ٹھیک اُسی وقت سے ایجی ٹیشن کا آغاز کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس کیس کی شنوائی سے متعلق آخری موقع پر تاریخ منظر عام پر لانا اس بات کو ثابت کرتا ہے کہ اس آئینی دفعہ کیخلاف سازشیں رچائی جارہی ہیں۔ واضح رہے کہ آئین کی دفعہ35اے کا تعلق جموں کشمیر کے عوام کی خصوصی شہریت سے ہے اور اس کیخلاف عدالت عظمیٰ میں کئی درخواستیں پیش کی گئی ہیں جن کی

پلوامہ معرکہ میں ایک فوجی ایک جنگجوجاں بحق: پولیس

سرینگر/پولیس نے منگل کو کہا کہ پلوامہ ضلع میں فورسز اور جنگجوئوں کے مابین ہوئی معرکہ آرائی کے نتیجے میں ایک فوجی اہلکار اور ایک جنگجو جاں بحق ہوگئے۔ پولیس نے جاں بحق فوجی کی شناخت بلجیت سنگھ کے طور کی۔ پولیس نے کہا کہ اس معرکہ آرائی میں  دوسرا فوجی اہلکار زخمی ہوگیا ۔  پلوامہ کے رتنی پورہ گائوں میں جنگجوئوں اور فورسز کے درمیان معرکہ آرائی آج صبح شروع ہوئی تھی جو ختم ہوگئی۔ اس سے قبل خبر ساں ایجنسی جی این ایس نے اطلاع دی تھی کہ اس معرکہ آرائی میں  2فوجی اہلکار اور ایک عسکریت پسند جاں بحق اور ایک فوجی اہلکار زخمی  ہوگیا ۔  ذرائع کے مطابق فوج، سی آر پی ایف اور ایس او جی اہلکاروں نے پلوامہ میں رتنی پورہ گائوں کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن کا آغاز کیا جس کے دوران جنگجوئوں اور فورسز کے مابین گولیوں کا تبادلہ ہوا۔  

پلوامہ میں خونین معرکہ،2فوجی ،جنگجو جاں بحق، آپریشن جاری

سرینگر/  جنوبی کشمیر کے پلوامہ ضلع میں منگل کو جنگجوئوں اور فورسز کے درمیان جاری  خونین معرکہ آرائی میں 2فوجی اہلکار اور ایک عسکریت پسند جاں بحق ہوگئے۔ اس جھڑپ میں ایک فوجی اہلکار زخمی بھی ہوگیا جبکہ جنگجوئوں کیخلاف فورسز آپریشن جاری ہے۔ پولیس ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے خبر رساں ایجنسی جی این ایس نے اطلاع دی ہے کہ فوج، سی آر پی ایف اور ایس او جی اہلکاروں نے پلوامہ میں رتنی پورہ گائوں کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن کا آغاز کیا جس کے دوران جنگجوئوں اور فورسز کے مابین گولیوں کا تبادلہ ہوا۔ گولیوں کے اس ابتدائی تبادلے میں ایک کمانڈو سمیت تین فوجی اہلکار زخمی ہوگئے جنہیں سرینگر میں قائم فوجی اسپتال منتقل کیا گیا جہاں دو اہلکار زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھے۔ ہلاک شدہ اہلکاروں کی شناخت سپاہی بلجیت سنگھ اور نائیک سنید جبکہ زخمی اہلکار کی شناخت حوالدار چندر پال کے طور ہ

سرینگر۔جموں شاہراہ مسلسل بند، سڑک نئی پسیوں کی زد میں

بانہال // گذشتہ منگل کی شام سے مسلسل پسیوں اور پتھروں کے گرانے کی وجہ سے جموں ۔سرینگرشاہراہ پر گاڑیوں کی آمدورفت پیر کو چھٹے روز بھی مکمل طور بند رہی۔ سوموار کو شاہراہ پر پرانی پسیوں کے ساتھ ساتھ کئی تازہ پسیوں اور پتھروں کو سڑک سے ہٹانے کا م جاری رہا لیکن ماروگ اور پنتھیال کے مقام پر ملبے اور پتھروں کی وجہ سے شام تک بھی ٹریفک کی بحالی ممکن نہیں ہوسکی۔ ڈی ایس پی ٹریفک نیشنل ہائے وے رام بن سریش شرما نے پیر کی شام سوا سات بجے کشمیرعظمی کو بتایا کہ کل دن کے تین بجے ماروگ میں بھاری پسی کو صاف کرکے سڑک کو ایک طرفہ ٹریفک کے قابل بنانے کا عمل دن بھر جاری رہا اور اس دوران صوبائی کمشنر جموں ، آئی جی پولیس جموں ، آئی جی ٹریفک ، نیشنل وئے وے اتھار ٹی اور ضلع انتظامیہ کے افسران نے ماروگ کے مقام جاری بحالی کے کام کا جائزہ لیا اور متعلقہ تعمیراتی کمپنی کے افسروں پر زور دیا کہ وہ جلد از جلد شاہراہ

یوم مقبول بٹ :مکمل ہڑتال سے معمولات متاثر

سرینگر// مرحوم محمد مقبول بٹ کو تہاڑ جیل میں تختہ دار پر لٹکانے کی35ویں برسی کے موقعہ پر مشترکہ مزاحمتی قیادت کی کال پروادی میںہمہ گیر ہڑتال کے بیچ پولیس نے لالچوک میں مزاحمتی جلوس کو ناکام بناتے ہوئے متعددمزاحمتی کارکنوں اور لیڈروں کو حراست میں لیا۔اس دوران کپوارہ کے ترہگام میں جلوس میں شرکا ء نے مرحوم کے باقیات کی واپس کا مطالبہ کیا۔ ممکنہ احتجاجی مظاہروں میں شرکت کرنے کی پاداش میں تیسرے روز بھی مزاحمتی لیڈر اور کارکن تھانہ و خانہ نظر بند رہے۔جبکہ ریل سروس بھی معطل رہی۔  ناکہ بندی جاری سید علی گیلانی،میرواعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ مزاحمتی قیادت کی طرف سے مرحوم محمد مقبول بٹ کی35ویں برسی کے موقعہ پر مکمل ہڑتال سے عام زندگی مفلوج ہو کر رہ گئی جبکہ کاروباری سرگرمیاں ٹھپ ہوکر رہ گئی۔تجارتی مراکز اور پیٹرول پمپ بند رہے جبکہ سڑکوں پر ٹریفک کی نقل وحرکت مس

محمد مقبول بٹ اور افضل گورو کے باقیات لوٹائے جائیں

سرینگر// تہاڑ جیل میں تختہ دار پر لٹکاگئے گئے دو کشمیری مزاحمتی لیڈران محمد مقبول بٹ اور محمد افضل گورو کی اجساداور باقیات لوٹائے جانے کیلئے مشترکہ مزاحمتی قیادت بشمول سید علی گیلانی ،میرواعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک نے اقوام متحدہ سے رجوع کیا ہے ۔مشترکہ قیادت نے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل اینٹوسینو گوتیرس کے نام ایک مکتوب ارسال کرتے ہوئے محمد مقبول بٹ اور افضل گورو کی باقیات لوٹانے کیلئے بھارت پر دبائو ڈالنے کی اپیل کی۔اپنے متکوب میں مشترکہ قیادت نے کہاہے کہ ’’جموں کشمیر کے لوگوں کی جانب سے ہم سید علی شاہ گیلانی،میروعظ محمد عمر فاروق اور محمد یاسین ملک ،آپ تک ہمارے لوگوں کی اس دیرینہ اور بھر پور خواہش کو پہنچا نا چاہتے ہیں جو وہ اپنے شہداء محمد مقبول بٹ اور محمد افضل گورو کی اجسادخاکی اور باقیات کی کشمیر واپسی کے لئے رکھتے ہیں تاکہ ان شہداء کو ان کے شایان شان کفن دو

صلاح الدین سمیت حزب قیادت کا خراج

مظفر آباد//حزب المجاہدین کے سپریم کمانڈر سید صلاح الدین نے کیلم کولگام میں پی ایچ ڈی اسکالر وسیم بشیر راتھر سمیت پانچ عساکرکیجان بحق ہونے  پر انہیں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہاہے کہ قتل و غارت گری، گرفتاریوں اور نہتی عوام پر فائرنگ سے کشمیریوں کے جذبۂ آزادی کو دبا یانہیں جاسکتا۔ کشمیری قوم تحریک آزادی کو ہر صورت جاری رکھنے کیلئے پُرعزم ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ ایک بڑے مقصد کیلئے گذشتہ ۷۰ برس سے بیش بہا قربانیاں دے رہی ہے۔ سید صلاح الدین نے کہا کہ شہداء ہمارے ہیرو ہیں اور ان کے لہو کی لاج ہر صورت رکھی جائے گی۔اس دوران  نائب امیر سیف اللہ خالد نے کہاکہ کیلم میں جان بحق ہونے والے ساتھی امر و اطاعت کے پیکر تھے اور گذشتہ تین برس سے برسرپیکار تھے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت گذشتہ سات دہائیوں سے عالمی برادری کی توجہ تنازعہ کشمیر سے ہٹانے کیلئے بے شمار حربے استعمال  کرچکا ہے مگر کشمی

بجلی کی بحرانی کیفیت مزید شدت اختیار کرنے کا امکان

سرینگر //پہلے سے ہی بجلی کی بحرانی صورتحال سے گزر رہی ریاست کو اب نیشنل تھرمل پاور کارپوریشن (NTPC)نے انتباہ دیا ہے کہ وہ بجلی کے بقایا جات کی عدم ادائیگی کی صورت میں 18فروری سے سپلائی  بند کر دیں گے تاہم ریاستی سرکار کا کہنا ہے کہ کمپنی سے بات کر کے بجلی سپلائی کو بند نہیں ہونے دیا جائے گا ۔ریاست کو بجلی فراہم کرنے والی این ٹی پی سی نامی کارپوریشن کے مطابق ریاستی سرکار 1,600 کروڑ روپے کی مقروض ہے اور اگر یہ رقوم ادا نہ کی گئی تو کمپنی 18فروری کی نصف رات سے ریاست کو یہ بجلی سپلائی بند کر دے گی ۔ کارپوریشن کے مطابق انہوں نے 5فروری کو دیگر ریاستوں جن میں تلنگامہ ، کرناٹکا ،اور آندراپردیش شامل ہیںکے نام بھی نوٹس جاری کی ہے اور اُن سے کہا گیا ہے کہ وہ 60روز کے اندر اندر  4,138.39کروڑ کی بقایارقم ادا کریں۔ اُن ریاستوں کے خلاف کارروائی اس لئے عمل میں نہیں لائی گئی کیونکہ انہوں

جموں میں کرگل کی مشترکہ قیادت کا احتجاجی مارچ

جموں//نو تشکیل شدہ صوبہ لداخ کا صدر مقام مستقل طور پر لیہہ میں قائم کرنے کے فیصلہ کے خلاف کرگل کے سینکڑوں شہریوں ، جن میں طلاب کی بڑی تعداد بھی شامل تھی،نے جموں میں زور دار احتجاجی مظاہرہ کیا۔ قانون ساز کونسل چیئر مین حاجی عنایت علی کی قیادت میں مظاہرین ہری سنگھ پارک میں اکٹھے ہوئے ایک ریلی کی صورت میں پریس کلب پہنچے۔ اس موقعہ پر کشمیر عظمیٰ سے بات کرتے ہوئے پی ڈی پی لیڈر حاجی عنایت علی نے کہا’ہم لداخ کو صوبہ کا درجہ دئیے جانے کا خیر مقدم کرتے ہیں لیکن کرگل کے ساتھ امتیاز کیا جانا بعید از سمجھ ہے ۔ہم پورے لداخ کیلئے انصاف چاہتے ہیں، ہمارا احتجاج ہندوستان کے قومی پرچم تلے ہے ، ہمیں آئین ہند پر مکمل اعتمادہے جو ہر شہری کو یکساں حقوق دیتا ہے‘۔ان کا کہنا تھا کہ کرگل کے لوگ معصوم اور پوری طرح قوم پرست ہیں لیکن یہ سمجھ سے قاصر ہے کہ ہر بار کرگل کے ساتھ سوتیلی ماں کا سلوک کیوں کی

دفعہ35 اے کادفاع

 نئی دلی// ریاستی حکومت نے سپریم کورٹ سے اجازت طلب کی ہے کہ وہ دفعہ 35اے  کی آئینی اعتباریت کو چیلنج کرنے کے حوالے سے دائر عرضی کی سماعت کو ملتوی کرنے کے لئے فریقین کو خط جاری کرے کیونکہ ریاست میں اس وقت عوامی حکومت نہیں ہے۔ دفعہ35 اے کو ہٹانے کے سلسلے میں دائردرخواست کی سماعت سپریم کورٹ میں رواں ہفتے ہورہی ہے۔چیف جسٹس رنجن گوگوئی اور جسٹس سنجیو کھنہ پر مشتمل ایک بینچ کو وکیل شعیب عالم نے ریاستی حکومت کی نمائندگی کرتے ہوئے بتایا کہ وہ مقررہ سماعت کو ملتوی کرنے کیلئے فریقین کو خط روانہ کرنے کے امکانات کوتلاش کریں۔سماعت کے روز ایڈوکیٹ عالم عدالت میں ایک درخواست دائر کریں گے کہ چونکہ ریاست میں اس وقت منتخب حکومت موجود نہیں ہے لہذا سماعت کی تاریخ بدل دی جائے ۔’’دفعہ 35A کیلئے چیلنج  ایک حساس مسئلہ ہے اور موجودہ حالات بھی موافق نہیں ہیں ۔ریاستی حکومت نے عدالت میں

انتظامیہ کے خلاف احتجاج کرنامہنگا پڑا

جموں//جموں میں درماندہ کشمیری مسافروں کے صبر کا پیمانہ اُس وقت لبریز ہو گیا جب انہوں نے جی جی ایم سائنس کالج کے باہر انتظامیہ کی بدنظمی کے خلاف جم کر نعرہ بازی کی تاہم اس بیچ مقامی کالج کے طلباء کالج سے باہر آئے اور بھارت ماتا کی جے کے علاوہ پاکستان مردہ باد کے نعرے لگائے اور درماندہ مسافروں پر پتھرائو کیا اور اس بیچ طرفین کے مابین شدید جھڑپیں بھی ہوئیں ۔ عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ پچھلے کئی روز سے جموں میں پھنسے یہ مسافر جی جی ایم سائنس کالج کے شعبہ جغرافیائی کے قریب اوقاف اسلامیہ کی طرف سے تعمیر ’مفتی محمد سعید ہوسٹل ‘ کے قریب جمع ہوئے جہاں مسافروں کو بذریعہ ہوائی جہاز سرینگر پہنچانے کیلئے رجسٹریشن ہو رہی تھی، بھاری بھیڑ نے اس دوران انتظامیہ کے خلاف جم کر نعرہ بازی کی اور انہیں اپنے اپنے مقامات تک پہنچانے کا مطالبہ کیا ۔پولیس حکام نے بتایا کہ ’ہزاروں کی تعداد میں وہ

تازہ ترین