کورونا بحران مزید سنگین | دنیا میں 64774 افراد ہلاک ، 12.03 لاکھ متاثر

بیجنگ / جینیوا / نئی دہلی/ عالمی وبا ء کورونا وائرس رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے اور ابھی تک اس کے انفیکشن کی وجہ سے 64774 افرادکی موت ہوچکی ہے اوراور 12.03 لاکھ افراد اس سے متاثر ہوچکے ہیں ۔ ساتھ ہی اب تک اس وائرس سے متاثر 2.47 لاکھ افراد ٹھیک ہوچکے ہیں۔ یہ وائرس بیشتر ممالک اور خطوں میں پھیل چکاہے ۔ ہندوستان میں بھی کورونا انفیکشن تیزی سے پھیل رہا ہے اور اتوار کی صبح وزارت صحت کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق ، ملک کی مختلف ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں اب تک 3374 افراد متاثر ہوئے ہیں ، جبکہ 77 افراد کی موت ہوگئی ہے ۔ اس وائرس سے متاثر 267 افراد اب تک ٹھیک بھی ہوچکے ہیں۔اٹلی ، جو کورونا وائرس سے سب سے زیادہ سنگین طور پر متاثرہ ملک ہے ، میں اس وائرس سے 15362 اموات ہوئی ہیں ، جب کہ 124632 افراد اس میں مبتلا ہوگئے ہیں۔ اس عالمی وبا ء کے مرکز چین میں اب تک 82574 افراد اس سے م

کوئی ملک لاک ڈاؤن ہٹانے میں جلدی نہ کرے:عالمی ادارہ ٔ صحت

سرینگر//عالمی ادارۂ صحت (ڈبلیو ایچ او) نے دنیا کے تمام ممالک کو خبردار کیا ہے کہ وہ کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے جاری لاک ڈاؤن کو ہٹانے میں جلدی نہ کرے۔ عالمی ادارۂ صحت کے سربراہ ڈاکٹر ٹیڈروس ادھانوم گھیبریوسس کا کہنا ہے کہ لاک ڈاؤن جلد ہٹانے سے طویل عرصے تک منفی معاشی اثرات کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے اور یہ وائرس دوبارہ سر اٹھاسکتا ہے۔ڈاکٹر ٹیڈروس کا کہنا ہے ’’ ہمیں معلوم ہے کہ لاک ڈاؤن کے سماجی اور معاشی اثرات نہایت سخت ہیں تاہم ہمارے پاس صورتحال کو بہتر بنانے کے لیے یہی بہترین راستہ ہے کہ ہم خود وائرس پر حملہ آور ہوں۔‘‘ان کا مزید کہنا ہے کہ تمام ممالک وبا ء پر کنٹرول کے لیے بنیادی ہدایات پر عمل کریں۔دوسری جانب عالمی مالیاتی فنڈ(آئی ایم ایف ) کا بھی کہنا ہے کہ کورونا وائرس کی وجہ سے دنیا کی کم زور معیشتیں مزید بحران کا شکار ہوسکتی ہیں۔آئی ایم ای

مصر میں متاثرین کی تعداد 1000 سے متجاوز

قاہرہ// مصر میں کورونا وائرس کے 1000 سے زیادہ کیس کی تصدیق ہوئی ہے اور اس سے یہاں 85 افراد کی موت ہو چکی ہے ۔ یہ اطلاع وزارت صحت نے دی۔ وزارت کے ترجمان خالد مجاہد نے بتایا کہ ملک میں گزشتہ 24 گھنٹوں میں 86 نئے کیس سامنے آئے ہیں۔  

ٹرمپ نے اپنے شہریوں کوخبردار کیا | ’ کورونا ہلاکتوں کی تعداد بڑھنے کا خدشہ‘

واشنگٹن//امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے ملک کے شہریوں کو وارننگ دی ہے کہ آنے والی ہفتے میں کورونا وائرس کی وجہ سے مرنے والوں کی تعداد میں بڑا اضافہ ہوسکتا ہے ۔ ٹرمپ نے وائٹ ہاؤس میں اپنے خطاب کے دوران کہا کہ آنے والے دنوں میں لوگوں کی اوراموات ہوں گی۔انہوں نے وبا ء سے سب سے زیادہ متاثر ریاستوں کو وباسے نمٹنے میں تعاون کرنے کے لئے طبی سپلائی اور فوجی اہلکارمہیا کرانے کا عزم دہرایا۔جان ہاپکنس یونیورسٹی کے تازہ ترین اعدادو شمار کے مطابق امریکہ میں کورونا کے متاثرین کی تعداد دنیا بھر میں سب سے زیادہ 3,11,301ہوگئی ہے ۔    

دنیا سنگین صورتحال سے دوچار | کرونا سے 59136 ہلاکتیں، 1101674 متاثر

بیجنگ/جنیوا//پوری دنیا کے زیادہ تر (اب تک 185)ممالک میں پھیل چکے کروناوائرس (کووڈ۔19) کی وبا تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے اور اس خطرناک وائرس سے پوری دنیا میں اب تک 59136 لوگوں کی موت ہوچکی ہے اور تقریبا 1101674 لوگ اس سے متاثر ہیں اوراب تک 226669 لوگ ٹھیک ہوچکے ہیں۔وائرس کے سلسلے میں تیار کی گئی ایک رپورٹ کے مطابق چین میں ہوئی موت کے 80 فیصد معاملے 60 برس سے زیادہ عمر کے لوگوں کے تھے۔دنیا کاسپرپاور امریکہ میں یہ وبا تباہ کن شکل لے چکی ہے۔ یہاں پر اب تک 277953 لوگ اس سے متاثر ہوچکے ہیں۔ اس کے بعد کرونا کی سب سے سنگین صورت حال اٹلی اور اسپین کی ہے۔عالمی وبا کرونا وائرس سے بری طرح متاثر اٹلی میں اس انفیکشن سے مرنے والوں کی تعداد 14 ہزار کے پار پہنچ چکی ہے۔ یہاں پر اس جان لیوا وبا کی وجہ سے اب تک 14681 لوگوں کی موت ہوچکی ہے جبکہ 119827 لوگ اب تک اس سے متاثر ہیں۔اسپین میں کرونا وائرس سے مرن

۔14فیصد نوجوان ٹھیک ہونے کے بعد دوبارہ متاثر ہوئے:تحقیق

بیجنگ// ماہرین کی ایک اسٹڈی میں پتہ چلا ہے کہ کورونا وائرس سے متاثر14.5 فیصد نوجوان اسپتال سے چھٹی ملنے کے بعد دوبارہ اس سے متاثر ہو ئے۔کورونا وائرس کی یہ تحقیق چین اورامریکہ کے سائنسدانوں نے کی ہے۔ تحقیق کے مطابق 262 کیسزمیں سے 38 کیس ایسے پائے گئے، جب نوجوان ٹھیک ہونے کے دو ہفتے بعد دوبارہ اس وبا میں مبتلا ہوئے.اس کا مطالعہ جنوبی چین کے صوبہ گوانڈونگ سے ہیلتھ کے حکام نے فروری کے آخر میں کیاتھا،جس میں تقریبا14فیصد معاملات میں یہ پایا گیا کہ نوجوان اس جان لیواوائرس سے ٹھیک ہونے کے دو ہفتے کے اندردوبارہ اس کی زدمیں آ گئے۔ماہرین کے مطابق جو38 افراد دوبارہ اس وائرس سے متاثر ہوئے ان میں صرف ایک شخص کی عمر60 سال سے زیادہ، جبکہ سات کی عمر14 سال سے کم تھی۔ ساتھ ہی ماہرین کوپتہ چلا کہ جو38 لوگ دوبارہ متاثر ہوئے ان میں سے چند لوگوں نے ہلکی کھانسی اورسینے کی جکڑن کی شکایت کی جبکہ کسی کو بھی بخ

ین میں 21 نئے کیسز، 4 اموات

بیجنگ//چین میں کورونا وائرس کے 21 نئے کیس اور 4 نئی اموات رپورٹ ہوئی ہیں۔چین کے نیشنل ہیلتھ کمیشن کے مطابق نئے کیسز میں سے متعدد ایسے کیسز ہیں جن کی تصدیق بیرون ملک سے آنے والوں میں ہوئی ہے۔کمیشن کے مطابق ملک میں کورونا وائرس کے کیسز کی تعداد 81 ہزار 620 ہوگئی ہے جس میں سے ساڑھے 76 ہزار افراد صحت یاب بھی ہو گئے ہیں، جبکہ چین میں کورونا سے 3322 اموات ہوئی ہیں۔ادھرافریقہ میں اس وائرس کی زد میں آنے سے اب تک 284 افراد ہلاک جبکہ تقریبا 7028 لوگ متاثر پائے گئے ہیں۔افریقہ سینٹر فار ڈیزیز کنٹرول اینڈ پریونشن (افریقہ سی ڈی سی) نے بتایا کہ کورونا وائرس اب تک تقریبا 50 افریقی ممالک میں پھیل چکا ہے۔سی ڈی سی نے بتایا کہ جنوبی افریقہ میں کورونا وائرس کے 1462 کیسز، الجیریا میں 847 اور مصر میں 779 کیس درج کئے گئے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ براعظم میں اب تک 779 مریض ٹھیک ہو چکے ہیں۔گزشتہ 24 گھنٹوں کے دور

انتخابات مقررہ وقت پر ہی ہوں گے : ٹرمپ

واشنگٹن// عالمی وبا کورونا وائرس کوووڈ 19' کی وجہ سے پوری دنیا میں مچی اتھل پتھل کے درمیان امریکہ میں اس سال ہونے والے صدارتی انتخابات کی بابت صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ انتخابات اپنے مقررہ وقت 3 نومبر کو ہی ہوں گے۔مسٹر ٹرمپ نے کورونا وائرس کی وجہ سے انتخابات ملتوی کئے جانے کے سوال پر کہا’’عام انتخابات اس سال تین نومبر کو ہی ہوں گے‘‘۔  

کرونا کا قہر : دنیا میں 53179کی موت،متاثرین کی تعداد 1017693ہوگئی

 بیجنگ / جنیوا // دنیا کے بیشتر ممالک میں وبا بن کر قہر برپا نے والے کورونا وائرس (کووڈ 19) کے تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے اور اس وجہ سے دنیا بھر میں اب تک 53179 لوگوں کی موت ہو چکی ہے ، اور 1017693 لوگ اس متاثرہ ہوئے ہیں۔دنیا بھر میں اب تک اس وبا سے 2012072 لوگ ٹھیک ہوئے ہیں۔ یہ اعداد و شمار امریکہ کے جانک ہاپنکس یونیورسٹی کے مطابق ہیں۔دنیا کے سب سے طاقتور ملک امریکہ میں یہ بیماری شدید طور پر پھیل چکی ہے ۔ یہاں پر اب تک 245573 لوگ اس متاثرہ ہوئے ہیں اور اس کی وجہ سے 6088 اموات ہو چکی ہے ۔ وہیں اٹلی بھی اس وبا سے بری طرح متاثر ہے ۔ یہاں پر اس قاتل وائرس کی وجہ سے 13915 اموات ہو چکی ہیں اور 115242 لوگ اس متاثرہ ہوئے ہیں۔اس عالمی وباکے مرکز چین میں اب تک 82،464 لوگ اس متاثرہ ہوئے ہیں اور اس کی وجہ سے 32302 لوگوں کی جان گئی ہے ۔ اس وائرس کو لے کر تیار کی گئی ایک رپورٹ کے مطابق چین می

امریکہ میں مرنے والوں کی تعداد 6ہزار سے متجاوز

واشنگٹن//امریکہ میں کورونا وائرس (کووڈ-19)وبا سے اب تک 6088اموات ہو چکی ہیں۔اور 245573 افراد متاثر ہیں۔جمعہ کے روز جانس ہاپکنز یونیورسٹی کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق ، نیویارک میں اب تک انفیکشن کی وجہ سے اموات کی تعداد سب سے زیادہ ہے ۔اچھی بات یہ ہے کہ اب تک 9228صحت یاب ہوئے ہیں۔امریکہ میں حالیہ دنوں کورونا متاثرین کی تعداد دنیا میں سب سے زیادہ ہے ۔جانس ہاپکنز یونیورسٹی کے مطابق ، اب تک دنیا بھر میں 10 لاکھ سے زائد افراد اس وائرس سے متاثر ہوئے ہیں جبکہ اس وبا سے 53،000 سے زیادہ اپنی جانیں گنوا چکے ہیں۔وائٹ ہاؤس کے ماہرین کا کہنا ہے کہ تقریباً ایک لاکھ سے 2 لاکھ 40 ہزار امریکی اس مرض سے ہلاک ہوسکتے ہیں۔اسی صورتحال کو دیکھتے ہوئے ڈیزاسٹر رسپانس ایجنسی فیما نے امریکی فوج سے لاشوں کو رکھنے کیلئے ایک لاکھ بیگز منگوالیے ہیں۔مزید برآں امریکی میں اس صورتحال کے بعد85 فیصد امریکی کسی نا

ٹرمپ کی دوبارہ جانچ،رپورٹ منفی آئی

واشنگٹن // امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی ایک مرتبہ پھر کورونا وائرس ‘ کووڈ 19 ’ کی جانچ کی گئی جس میں وہ کورونا وائرس سے متاثر نہیں پائے گئے ۔ وائٹ ہاؤس کی ترجمان اسٹیفنی گریشم نے ایک بیان جاری کر کے یہ اطلاع دی ۔ وائٹ ہاؤس کے ڈاکٹر شیان کونلے نے روزانہ وائٹ ہاؤس کورونا وائرس ٹاسک فورس کی بریفنگ سے ٹھیک پہلے ایک میمو جاری کر کے کہا‘‘ کل صبح صدر ٹرمپ کی دوبارہ کورونا وائرس کے تعلق سے جا نچ کی گئی اور وہ صحت مند ہیں اور ان میں کورونا وائرس سے متعلق کوئی علامات نہیں پائی گئی ہیں’’ ۔ ٹرمپ کے جمعرات کے روز کورونا وائرس بریفنگ میں سامنے آنے سے پہلے ہی وہاں موجود صحافیوں کو میمو دے دیا گیا تھا جس میں کہا گیا کہ مسٹر ٹرمپ کی دوبارہ جانچ کی گئی تھی اور 15 منٹ بعد جانچ کی رپورٹ ان کے ہاتھ میں تھی ۔ میمو میں کہا گیا کہ مسٹر ٹرمپ نے جانچ کرائی جس کی رپورٹ صرف 15 م

کورونا وائرس:دنیا میں46291ہلاکتیں،9لاکھ سے زائد متاثر

 بیجنگ / جنیوا // دنیا کے بیشتر ممالک میں جان لیوا کورونا وائرس (کووڈ 19) کا پھیلاؤ رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے اوراس وبا سے دنیا بھر میں اب تک46291 افراد ہلاک اور925132 متاثر ہیں۔کورونا وائرس سے بری طرح متاثر اٹلی میں اس وائرس سے سب سے زیادہ اموات ہوئی ہیں، جہاں مرنے والوں کی تعداد 13،155 تک پہنچ گئی ہے جبکہ 110،574 لوگ اس سے متاثر ہیں۔اس عالمی وبا کے مرکز چین میں اب تک 81،554 افراد کورونا وائرس سے متاثر ہونے کی تصدیق ہوئی ہے جبکہ 3312 لوگوں کی اس وائرس کے زد میں آنے کے بعد موت ہو چکی ہے۔ اس وائرس کے حوالہ سے تیار کی گئی ایک رپورٹ کے مطابق چین میں موت کے 80 فیصد کیسز 60 سال سے زیادہ عمر کے لوگوں کے تھے۔اسپین میں اس وبا سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 9387 ہو گئی ہے۔ تازہ اعداد و شمار کے مطابق اسپین میں کورونا وائرس سے متاثر افراد کی تعداد بڑھ کر 1،04،118 ہو گئی ہے. اس کے علاوہ فرا

اٹلی میں ہلاکتوں کی تعداد سرکاری اعداد و شمار سے زیادہ

واشنگٹن//اٹلی میں کورونا وائرس 'کووڈ -19' سے مرنے والوں کی تعداد رپورٹ کئے جا رہے اعداد و شمار سے کافی زیادہ ہیں۔’وال اسٹریٹ جرنل (ڈبلیو ایس جے) نے اٹلی کے کوکاگلاؤ کے ڈپٹی میئر یوگینی فوساٹی کے حوالے سے یہ اطلاع دیتے ہوئے کہا’’اٹلی میں کورونا وائرس سے حقیقی موت کی تعداد سرکاری طور پر اعلان تعداد سے بہت زیادہ ہے۔ صحیح وقت پر مناسب علاج نہ ملنے کی وجہ سے بہت سے لوگوں کی موت ہو ئی ہے۔ڈبلیو ایس جے نے کہا کہ کورونا وائرس کا ٹسٹ صرف ان ہی لوگوں کا ہو سکا ہے جس میں اس کے علامات دکھائی دیئے۔ اخبار کہتا ہے کہ حقیقت میں اس وائرس سے کئی ملین لوگ متاثر ہوئے ہوں گے۔بریس سیا کے ڈاکٹر ایلونورا یولومبی نے کہا’’کورونا سے متاثر بہت سے مرنے والوں کا پوسٹ مارٹم نہیں ہو پا رہاہے۔ اس وبا سے مرنے والوں میں جن کی جانچ نہیں ہوئی ان میں عمردراز افراد زیادہ ہیں۔ لیکن بہت س

ماحولیاتی تبدیلی پر کو ئی خاص فرق نہیں پڑا:اقوام متحدہ

نیویارک//ماحولیات میں تبدیلی کے حوالہ سے میڈیامیں آنے والی باتوں کے جواب میں اقوام متحدہ کی ایجنسی نے کہا ہے کہ کورونا لاک ڈاؤن کے باعث ماحولیاتی تبدیلی پر کوئی خاص فرق نہیں پڑا۔ فیکٹریاں، جہاز بند ہیں، گاڑیاں بھی کم چل رہی ہیں مگر اس کا اثر عارضی نوعیت کا ہے جس سے ماحولیاتی آلودگی پر کوئی خاص اثر نہیں پڑ رہا۔اقوام متحدہ کی عالمی موسمیاتی تنظیم کے عہدیدار لارس پیٹر نے کہا کہ آلودگی اور کاربن ڈائی آکسائڈ گیسوں کے اخراج میں کمی عارضی طور پر ہوئی ہے، اس کا ماحول پر کوئی خاص اثر نہیں ہوگا۔انہوں نے کہا کہ میڈیا پر بڑی قیاس آرائیاں کی جاری ہیں کہ لاک ڈاؤن سے ماحول پر بڑا فرق پڑ جائے گا، ایسا نہیں ہے کیوں کہ کچھ عرصے میں لاک ڈاؤن ختم اور سرگرمیاں دوبارہ شروع ہو جائیں گی۔یواین آئی  

خا نہ کعبہ میں طواف دوبارہ شروع

مکہ المکرمہ//حرم شریف میں مطاف کے حصے میں طواف کا سلسلہ دوبارہ شروع کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے تاہم اس دوران کم لوگوں کا اجتماع ہی طواف کر سکے گا۔کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے سعودی حکومت نے 23 مارچ سے 21 روز کے لیے جزوی کرفیو کا اعلان کر رکھا ہے۔اس سے قبل حفاظتی اقدامات کے تحت تمام مساجد بشمول مسجد الحرام اور مسجد نبوی کے اندرونی اور بیرونی حصے میں پنجگانہ نماز اور نماز جمعہ کی ادائیگی پر مکمل پابندی عائد کی جا چکی ہے۔سعودی حکام نے اس سے قبل وائرس سے بچائو کے لیے خانہ کعبہ کے اطراف سپرے کے لیے مطاف خالی کرایا تھا اور طواف کے عمل کو روک دیا گیا تھا جب کہ بعد میں مطاف کو زائرین کے لیے کھولا گیا تو انہیں کعبہ کے قریب جانے کی اجازت نہیں دی گئی۔  

سعودی عرب کی مسلمانوں سے حج کی منصوبہ بندی نہ کرنے کی اپیل

ریاض //سعودی عرب نے دنیا بھر کے مسلمانوں کو صلاح دی ہے کہ وہ فی الحال حج بیت اللہ کی منصوبہ بندی نہ کریں ، کوروناوائرس کے تیزی کے ساتھ پھیلنے کے پیش نظر سعودی حکومت نے اگرچہ فی الحال حج 2020کو موقوف کرنے کا فیصلہ نہیں کیا ہے تاہم دنیا بھر کے مسلمانوں کوسے کہا گیا ہے کہ وہ فی الحال دنیا بھر کی صورتحال واضح ہوجانے تک انتظار کریں ۔ الجزیرہ میں نشر ایک خبر کے مطابق سعودی عرب کی حکومت میں حج اور عمرہ کے وزیر محمد صالح بنٹے نے ایک ٹی وی انٹرویو میں لوگوں سے اس سال حج کے منصوبے ابھی سے نہ بنانے کی اپیل کی ہے۔ اس سے قبل ، یہاں سال بھر چلنے والے عمرہ کو گزشتہ ماہ سے ہی بند کر دیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ ، دو ہفتہ قبل کورونا کے پیش نظر یہاں مساجد میں نماز ادا کرنے یا دیگر اجتماعی مذہبی پروگراموں پر بھی فی الحال پابندی عائد ہے۔صالح نے سرکاری ٹی وی چینل الخبریہ سے بات چیت میں دعوی کیا کہ سعودی عرب عمر

امریکہ میں2 لاکھ افراد کی موت کا خطرہ :وائٹ ہاؤس

واشنگٹن // امریکہ میں کورونا وائرس (کووڈ -19) سے دو لاکھ افراد کی موت ہو سکتی ہے ۔وائٹ ہاؤس کی فیڈ بیک کوآرڈی نیٹر ڈے بورا بیرکس نے منگل کو پریس کے نمائندوں کو بتایاکہ ہمارے یہاں کورونا وائرس سے مرنے والوں کی اصل تعداد ایک لاکھ سے دولاکھ ہو سکتی ہے ۔ ہمیں لگتا ہے کہ یہ ایک حد ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہمیں واقعی یقین اور امید ہے کہ ہم روزانہ مزید بہتر کرسکتے ہیں۔محترمہ بیرکس نے ایک چارٹ پیش کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں اس وبا سے ایک لاکھ سے دو لاکھ لوگوں کی موت ہو سکتی ہے ۔جان ہاپکنز یونیورسٹی کے مطابق امریکہ میں کورونا وائرس (کووڈ -19) سے 3700 افراد کی موت ہو چکی ہے اور 185000 متاثر ہیں۔دنیا بھر میں کورونا وائرس (کوویڈ ۔19) کے پھیلنے میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔  

کرونا کا عالمی بحران | 41920ہلاکتیں ،متاثرین کی تعداد 852486 ہوگئی

بیجنگ / جنیوا // دنیا کے سب سے زیادہ (اب تک 185) ممالک میں پھیل چکے کورونا وائرس (کووڈ -19) کا قہر تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے اور اس خطرناک وائرس سے دنیا بھر میں اب تک 41920 لوگوں کی موت ہو چکی  ہے جبکہ قریب 852486 لوگ اس سے متاثر ہیں۔ چین میں اب تک 81518 افراد کورونا وائرس سے متاثر ہونے کی تصدیق ہوئی ہے اور 3305 لوگوں کی اس وائرس کے زد میں آنے کے بعد موت ہو چکی ہے۔ اس وائرس کو لے کر تیار کی گئی ایک رپورٹ کے مطابق چین میں ہوئی موت کے 80 فیصد معاملات 60 سال سے زیادہ عمر کے لوگوں کے تھے۔ کورونا کے سلسلے میں سب سے زیادہ سنگین صورتحال اٹلی اور اسپین کی ہے۔ عالمی وبا کورونا وائرس (کووڈ -19) سے بری طرح متاثر اٹلی میں اس انفیکشن سے مرنے والوں کی تعداد 12 ہزار کا ہندسہ پار کر 12428 پہنچ گئی ہے۔اسپین میں اس سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 8464 ہو گئی ہے۔ تازہ اعداد و شمار کے مطابق اسپی

ترکی میں قومی فنڈ کا قیام | طیب اردگان نے7 ماہ کی تنخواہ عطیہ کردی

انقرہ//ترکی کے صدر رجب طیب اردگان نے کورونا وائرس سے نمٹنے اور وبا سے متاثرین افراد کی مدد کے لئے قومی فنڈ کا قیام کرتے ہوئے اپنی 7 ماہ کی تنخواہ فنڈ میں جمع کرادی۔کورونا کے مریض اس وقت اسلامی ممالک میں ایران کے بعد سب سے زیادہ ترکی میں ہیں اور وہاں 31 مارچ کی صبح تک مریضوں کی تعداد 10 ہزار 827 تک جا پہنچی تھی جب کہ وہاں کورونا سے ہلاکتوں کی تعداد بھی بڑھ کر 168 تک جا پہنچی۔کورونا سے نمٹنے کے لیے ترکی نے بھی جزوی لاک ڈاؤن کا نفاذ کر رکھا ہے جب کہ تعلیمی اداروں سمیت کاروباری اداروں کو بند کردیا گیا ہے اور لوگوں کو گھر میں رہنے کی ہدایات کی گئی ہیں۔ترک خبر رساں ایجنسی ‘اناطو’ کے مطابق ترک صدر نے 30 مارچ کو کورونا سے متاثرہ غریب افراد کے لیے قومی فنڈ قائم کرنے کا اعلان کیا اور ساتھ ہی صدر نے اس فنڈ میں اپنی 7 ماہ کی تنخواہ جمع کروانے کا اعلان کردیا۔خبر رساں ایجنسی نے یہ نہیں ب

کوروناوائرس:ٹینس کورٹس عارضی اسپتال میں تبدیل

واشنگٹن//امریکامیں مہلک عالمی وباکوروناوائرس سیمتاثرہ افرادکی بڑھتی تعداداوراسپتالوں میں جگہ نہ ہونیکی وجہ سیاب یوایس اوپن ٹینس کورٹس کوعارضی اسپتال میں تبدیل کردیاگیاہے۔امریکاکیکوئن اسٹیڈیم کورٹس کواب ہنگامی طورپرکوروناکیمریضوں کیلییعارضی گھرکی سہولت دی گئی ہیجہاں میڈیکل اسٹاف کی نگرانی میں انہیں رکھاجاسکیگا۔اگست میں ان کورٹ پریوایس اوپن گرینڈسلم ٹورنامنٹ کیمقابلیہوتیہیں،ٹینس کورٹس کیساتھ واقع ایک کچن میں روزانہ 25 ہزارکھانیکیپیکٹس تیارکییجائیں گے، جن کوشہرمیں خدمات انجام دینیوالے میڈیکل اوردوسریاسٹاف میں تقسیم کیاجائیگا۔