کرونا کی زنجیر کا توڑ

وادی میںسختی کیساتھ مکمل لاک ڈائون پر عملدر آمد،29دکانداروں کیخلاف کارروائی

27 مارچ 2020 (00 : 01 AM)   
(      )

بلال فرقانی
سرینگر//حکام کی جانب سے کرئونا وائرس کی زنجیر توڑنے کیلئے سخت ترین بندشیں عائد کرنے کے نتیجے میں وادی میں8ویں روز بھی مکمل لاک ڈائون رہا۔پولیس نے دفعہ144کے تحت امتناعی احکامات پر سختی کیساتھ عمل کرایا جس کے دوران29دکانداروں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی گئی جبکہ نصف درجن گاڑیوں کو بھی ضبط کیا گیا۔ ملک گیر سطح پر مکمل لاک ڈائون کا بھر پور اثر وادی کشمیر میں بھی رہا اور نہ صرف شہر سرینگر میں ہو کا عالم رہا بلکہ سبھی ضلع صدر مقامات اور دیگر قصبوں کے علاوہ بیشتر دیہات میں بھی ہر طرح کی آمد و رفت بند رہی۔وادی کے چپے چپے پر پولیس اور فورسز کی گشت رہی اور سڑکوں پر خار دار تاریں نصب کر کے لوگوں کی آمد و رفت بند کردی گئی تھی۔ وادی کی مساجدوں میں شبانہ اذانوں کی صدائیں بھی سنائی دیں،اور لوگ اللہ کے حضور گڑ گڑاتے ہوئے مہلک وبا سے نجات کیلئے دست بہ دعا تھے۔ادھرنامہ نگار ارشاد احمد کے مطابق  گاندربل پولیس نے تین افراد کو گرفتارکیا جنہوں نے سرکاری احکامات کی خلاف ورزی کی تھی ۔ پولیس نے ان کے خلاف ایف آئی آر 59/2020  درج کیا۔ اونتی پورہ پولیس نے سرکاری احکامات کی خلاف ورزی کر نے  والے14 افرادکے خلاف ایف آئی آر نمبر 38/2020 کا اندراج کر کے  انہیںگرفتارکیا ۔ نامہ نگار عارف بلوچ کے مطابق جنوبی ضلع اننت ناگ میں2دکانوں کو خلاف ورزی کرنے پر سربمہر کیا گیا۔نامہ نگار فیاض بخاری کے مطابق بارہمولہ ضلع  کے سنگھ پورہ پٹن میں10دکانداروں کے خلاف کاروائی عمل میں لائی گئی جبکہ نصب درجن گاڑیوں کو بھی ضبط کیا گیا۔چرار شریف میں علمدارِ کشمیر ؒ کے آستانہ عالیہ کے صحن میں درمیانی رات کو زائرین کی ایک بڑی تعداد جمع ہوئی جو توبہ استغفار میں محو تھے ۔ اس دوران انتظامیہ کو اس کی اطلاع ملی جس کے ساتھ ہی پولیس ٹیم جائے موقع پر پہنچی اور لوگوں کی سمجھانے کی کوشش کی  ۔ اس موقعہ پر طرفین میں پتھرائو اور شلنگ ہوئی۔نامہ نگار عازم جان کے مطابق بانڈی پورہ کے پیٹھ کوٹ پولیس تھانے  بندشوں کی خلاف ورزی کرنے والے نامعلوم افراد کے خلاف کیس درج کیا،جبکہ ضلع ترقیاتی کمشنر کا کہنا ہے کہ خفیہ کیمروں کی مدد سے خلاف ورزی کرنے والوں کی نشاندہی کی جائیگی۔
 

عدالت عالیہ سمیت تمام عدالتیں 

۔21دنوں تک کام معطل رہے گا

سید امجد شاہ 
 
جموں //جموں وکشمیر عدالت عالیہ نے مرکزی زیر انتظام علاقوں جموں وکشمیر اور لداخ میں قائم تمام عدالتوں میں 21روز تک کیلئے کام کاج معطل کرنے کا حکم جاری کیاہے ۔کورونا وائرس کے پیش نظر احتیاطی اقدام کے طور پر چیف جسٹس جموں وکشمیر ہائی کورٹ گیتا متل نے جموں وکشمیر اور لداخ کی تمام عدالتوں کو اس معینہ مدت تک کیلئے معطل رکھنے کی ہدایت جاری کی ہے ۔تاہم اہم معاملات کی سنوائی ججوں کی رہائش گاہ پر ضروری انتظامات اور چیف جسٹس کی اجازت سے ہوگی ۔سرکولر میں کہاگیاہے کہ عدالتی افسران و دیگر عملہ اپنے گھروں پر ہی دستیاب رہے گاتاکہ کسی ہنگامی وقت پر اس سے کام لیاجاسکے ۔پرنسپل ضلع و سیشن ججوں کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ غیر معمولی یا اہم معاملات کی سنوائی کیلئے عدالتی افسران کے گھروں پر ہی انتظامات کو یقینی بنائیں ۔اس کے ساتھ ہی عدالتی عملے سے کہاگیاہے کہ وہ سماجی دوریوں کے سلسلہ میں جاری ہونے والے قواعد و ضوابط پر عمل پیرا رہیں اورکورونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے میں تعاون دیں ۔اس کے علاوہ ہائی کورٹ کے دو افسران کو عملہ کی مدد کیلئے نامزد کیاگیاہے جن میں اروند شرما رجسٹرار پروٹوکول ہائی کورٹ جموں وکشمیر جموں (9419254526وای میلarvind.jk0123@gmail.com)اور معراج الدین صوفی رجسٹرار پروٹوکول ہائی کورٹ جموں وکشمیر سرینگر9419970965و ای میل sofimeraj@gmail.com))شامل ہیں ۔اسی طرح سے ضلع سطح پر تعینات عملہ کیلئے متعلقہ پرنسپل ضلع و سیشن جج ایک افسر کو نامزد کریں گے جس کا نام اور رابطہ نمبر کورٹ ویب سائٹ پر جاری کیاجائے گا۔

 

تازہ ترین