کرونا وائرس کی دہشت سے آبادی محصور، قاضی گنڈ سے کرناہ تک مکمل بند

خلاف ورزیوں کے مرتکب59افراد گرفتار،63گاڑیاں ضبط اور 47دکانیں سیل

25 مارچ 2020 (00 : 01 AM)   
(      )

بلال فرقانی
سرینگر// ملک بھر میںکرونا لاک ڈائون کے تیسرے روز سرینگر سمیت وادی میں قاضی گنڈ سے کرناہ تک مکمل بند کے نتیجے میں ہرچہار سو سنا ٹا ،اضطراب اور تذبذب کا ماحول نظر آیا اور لاکھوں لوگ گھروں میں محصور ہوکر رہ گئے ہیں۔حالانکہ وادی میں اس سے تین روز قبل ہی بندشیں عائد کر کے آمد و رفت بند کردی گئی تھی۔ انتظامیہ کی جانب سے دفعہ 144  پر سختی کیساتھ عمل در آمد کیا جارہا ہے اور خلاف ورزی کرنے والوں کو حراست میں لیا جارہا ہے۔منگل کی شام تک وادی بھر میں 59افراد حراست میں لئے گئے،47دکانوں کو سیل کیا گیا اور 65گاڑیاں ضبط کی گئیں۔وادی کے طول ارض میںپولیس نے لائوڈ اسپیکروں سے لوگوں کو گھروں میں رہنے کا مشورہ دیا گیا۔ لوگوں کی آزاد نقل وحرکت روکنے کیلئے جگہ جگہ رکاوٹیں کھڑی کی گئیں اور خار دار تاروں سے سڑکوں اورپلوں کو مکمل طور سیل کیا گیا ۔صرف لازمی خدمات سے وابستہ گاڑیوں اور میڈیا سے وابستہ افراد کو ہی پوچھ تاچھ کے بعد ایک جگہ سے دوسری جگہ آنے جانے کی اجازت دی جاتی رہی۔پوری وادی میں سبھی چھوٹے بڑے بازاربندہیں ،تجارتی مراکز ،کاروباری اداروں اور ہر طرح کے دکانات پر تالے چڑھے ہیں۔سڑکوںسے پبلک ونجی ٹرانسپورٹ غائب رہا ۔سرینگر ،بڈگام ،گاندر بل ،پلوامہ ،کولگام ،اننت ناگ ،شوپیان ،کپوارہ ،بانڈی پورہ اور بارہمولہ میں لاک ڈائون کو یقینی بنانے کیلئے پولیس وفورسز کی بھاری نفری تعینات ہے ۔
سرینگر اور دیگر علاقوں میں لوگوں کی نقل وحرکت جاننے اور صورتحال کا جائزہ لینے کیلئے ڈرون کا استعمال کیا جارہا ہے ۔ڈرون کیمروں کے ذریعے بھی لوگوں کو گھروں میںرہنے کی اپیل کی ۔نامہ نگار ارشاد احمد کے مطابقگاندربل میں کروناوائرس کو روکنے کیلئے ضلع انتظامیہ کی جانب سے نافذ دفعہ 144 کی خلاف ورزی کرنے کی پاداشت میں درجنوں ٹپر ڈرائیوروں کی گرفتاری عمل میں لاتے ہوئے ان کے ٹپرضبط کرلئے۔گاندربل میں ہی دفعہ 144 کی خلاف ورزی کرنے کے پاداش میں ایک دوکاندار سمیت 11افرادکی گرفتاری عمل میں لاتے ہوئے ایک دکان سربمہر کردی ۔ پولیس نے 10ٹپربھی ضبط کر کے ڈرائیوروں اور دوکاندار کے خلاف پولیس اسٹیشن لار اور کھیر بوانی میں کیس زیر نمبر 8/2020 اور 19/2020انڈر سیکشن 188 درج کیا گیا ۔ اشرف چراغ کے مطابق سر حدی ضلع کپوارہ میں پولیس نے لاک ڈائون کی خلاف ورز ی کرنے والے35افراد کو حراست میں لیا  ہے جبکہ23نجی گاڑیو ں کو بھی ضبط کیا گیا ۔ پولیس تھانہ ہندوارہ نے 16افراد کو حراست میں لیا اور ان سے13نجی گا ڑیا ں ضبط کیں ۔پولیس نے ان کے خلاف ایف آئی آر نمبر 71،72, 73 درج کیا ۔پولیس تھانہ کرالہ گنڈ نے 7افراد کو گرفتار کیا جو لاک ڈائو ن کی خلاف ورزی کت مرتکب تھے۔ ان سے7نجی گا ڑیا ں بھی ضبط کی گئیں ۔پولیس تھانہ قلم آ باد نے ایسی ہی ایک کارروائی کے تحت 6جبکہ ویلگام پولیس تھانہ کے اہلکارو ں نے بھی کئی افراد کو گرفتار کیا ۔نامہ نگار عارف بلوچ کے مطابق جنوبی ضلع اننت ناگ میں21دکانوں کو سرکاری ضوابط کی خلاف ورزی کرنے پر سیل کیا گیا۔ حکام کا کہنا ہے کہ دفعہ144 کی خلاف ورزی کی پاداش میں ان دکانوں کو سیل کیا گیا۔
پولیس نے جنوبی کشمیر میں ایک درجن سے زائد گاڑیوں کو بھی ضبط کیا۔ کوکر ناگ پولیس نے 3ٹیپروںکو ضبط کر کے ملوث ڈرائیوروں کے خلاف کیس درج کیا۔ بجہباڑہ پولیس نے ادریس احمد بٹ کو گرفتار کرکے کیس زیر نمبر 31/20 U/S 188270 IPCکے تحت درج کیا ۔پولیس نے آلٹو گاڑی کو بھی ضبط کیا ۔دمحال ہانجی پورہ پولیس نے سرکاری احکامات کی خلاف ورزی کرنے پر 12چھوٹی بڑی گاڑیوں کو ضبط کرکے گاڑی مالکان کے خلاف کیس زیر نمبر19/20 US 188,269 IPCکے تحت درج کیا ۔کنڈ قاضی گنڈ میں پولیس نے خلاف ورزی کرنے والے افراد پر شکنجہ کستے ہوئے 4افراد کو گرفتار کر کے اُن کے خلاف کیس زیر نمبر 6/20 U/S 188,271,353 IPCکے تحت درج کیا ۔دیوسر قاضی گنڈ میں بھی پولیس نے خلاف ورزی کرنے کی پاداش میں20افراد کو حراست میں لے کر اُن کے خلاف کیس زیر نمبر 21/20  درج کیا ۔کولگام پولیس نے بھی 2گاڑیوںکو ضبط کرنے کے ساتھ ساتھ کئی افراد کو حراست میں لیاہے ۔ادھر  شوپیان سے شاہد ٹاک  کے مطابق حکومتی ہدایات کے باوجود جنوبی کشمیر کے شوپیان ضلع میں متعدد مقامات پر شہریوں نے دکانیں کھولی تھیں جس پر تحصیلدار زینہ پورہ فدا محمد بٹ کی سربراہی میں ٹیم نے کارروائی کرتے ہوئے25 دکانوں کو سیل کر دیا۔تحصیلدار نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ یہ کارروائیاں وچی،میلہورہ،اگلر،سفہ نگری،زینہ پورہ، بابہ پورہ، ریبن اور ریشی پورہ  میں کی گئیں۔
 
 
 

کینسر مریضوں کو فون پرطبی مشورے

سکمز کے شعبہ آنکولاجی نے اقدامات کردیئے

پرویز احمد 
 
 سرینگر // جموں و کشمیر میں کورونا وائرس کے پھیلائو کی وجہ سے شیر کشمیر انسٹی ٹیوٹ آف انسٹی ٹیوٹ کے شعبہ آنکولاجی کے ماہرین  24گھنٹے کینسرمریضوں کو آن لائن علاج و معالجہ فراہم کریں گے ۔ سکمز میں شعبہ ریڈینٹ آنکولاجی کے سربراہ ڈاکٹر محمد مقبول لون نے بتایا ’’ہم نے کورونا وائرس کیلئے دی گئی خصوصی ایڈوائزری کے بیچ  کئی اقدامات اٹھائے ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ کینسر مریضوں کو  24گھنٹے خصوصی فون نمبر پر رابطہ کر کے طبی تعاون دیا جائیگا ‘‘۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ سکمز کے ریجنل کینسرسینٹر میں 5ہزار 700افراد کا اندراج ہوا ہے جبکہ سال 2019کے دوران کشمیر میں کل 4ہزار  نئے کینسر مریضوں کی تصدیق ہوئی ہے۔ سکمز کے شعبہ آنکولاجی نے موبائل نمبر 9697863173 مریضوں کیلئے مخصوص رکھا ہے اور مریض ضرورت پڑنے پر اس موبائل نمبر پر رابطہ کرسکتے ہیں۔ 

 

تازہ ترین