کشمیر میں مزید3افرادوائرس میں مبتلاء، تعداد 4ہوگئی

۔7 مشتبہ مریض آیئسولیشن وارڈوں میں داخل، جموں کشمیر میں4765 افراد زیر نگرانی

25 مارچ 2020 (00 : 01 AM)   
(      )

پرویز احمد
سرینگر // جموں و کشمیر میں منگل کو مزید 3افراد کی رپورٹ مثبت آنے کے ساتھ ہی مہلک اور تباہ کن کورونا وائرس میں مبتلا افراد کی تعداد7ہوگئی ہے۔ سرکاری ترجمان روہت کنسل نے سماجی رابطہ گاہ ٹیوٹر پر لکھا ’’ سرینگر میں مزید 2کیسوں کی رپورٹ مثبت آئی ہے جن میں سے ایک بیرون ملک سے آیا تھا جبکہ دوسرے کی سفری تفاصیل کے  بارے میں جانکاری حاصل کی جارہی ہے‘‘۔ضلع ترقیاتی کمشنر سرینگر شاہد اقبال چودھری نے ٹیوٹر پر لکھا ’’ سرینگر میں مزید 2افراد کی رپورٹ مثبت آئی ہے اور قوائد و ضوابط کے تحت محکمہ صحت کی ٹیمیں گرائونڈ پر کام کررہی ہیں‘‘۔ شاہد اقبال چودھری نے مزید لکھا’’ ہمیں زیادہ ہوشیار اور تعاون کی ضرورت ہے‘‘۔ شاہد اقبال چودھری نے بھی اپنی تحریر میں عوام سے اپیل کرتے ہوئے لکھا ’’ براہ مہربانی تعاون دیں‘‘۔ شاہد چودھری نے ایک اور ٹیوٹ میں لکھا کہ دونوں شہریوں کے علاقوں میں 300میٹر کے علاقے کو سرولنس کے دائرے میں لیا گیا ہے اور محکمہ صحت کی ٹیمیں دونوں علاقوں میں لوگوں سے تفاصیل حاصل کررہی ہیں۔ایک اور ٹویٹ میں حکومتی ترجمان نے لکھا ’’ لکھن پور چیک پوائنٹ سیل کردیا گیا ہے اور جن افراد کو کشمیر داخل ہونا ہوگا ، ان کو پہلے کٹھوعہ میں نگرانی میں رکھا جائے گا‘‘۔ عوام کے نام اپیل میں روہت کنسل نے لکھا ’’براہ مہربانی تعاون دیں اور کورونا وائرس سے لڑنے میں ہماری مدد کریں‘‘۔سی ڈی اسپتال سرینگر کے میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر محمد سلیم ٹاک نے بتایا ’ ’ایک متاثر سعودی عرب میں تھا اور وہ بھی اسی پرواز میں سفر کررہا تھا جس میں خانیار کی خاتون سفر کررہی تھی جبکہ دوسرا نوجوان 2ماہ تک بیرون ریاستوں میں رہا ہے، وہ کبھی لکھنو ، کبھی دلی اور کبھی کسی اور جگہ پر گھومتا رہا ہے۔
انہوں نے کہا ’’ وہ ایسی کانفرنسوں میں شامل رہا ہے جہاں انڈونیشا اور ملیشیاء سے آئے مہمان بھی شامل ہوئے تھے اور امکان ہے کہ وہ بھی اسی وجہ سے متاثر ہوا ہے‘‘۔ڈاکٹر ٹاک نے کہا کہ آج اسپتال میں مزید 5مشتبہ مریضوں کو الگ تھلگ وارڈ میں داخل کیا گیا جن کے خون کے نمونے تشخیص کیلئے بھیج دئے گئے ہیں۔اس کے علاوہ نگرانی وارڈ میں 6مشتبہ مریض بھی زیر نگرانی ہیں۔ گورنمنٹ میڈیکل کالج سرینگر کے ترجمان ڈاکٹر محمد سلیم خان نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’دونوں افراد کی عمر 60سال سے زیادہ ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’نٹی پورہ سے تعلق رکھنے والے شخص کو گھر میں ہی نگرانی میں رکھا گیا تھا لیکن 21مارچ 2020کو ابتدائی علامات پیدا ہونے کے بعد اس نے سی ڈی اسپتال سرینگر جاکر ڈاکٹروں سے ملاحظہ کروایا جہاں ڈاکٹروں نے اسکا تشخیصی عمل دوبارہ شروع کیا، سی ڈی اسپتال میں رپورٹ مثبت آنے کے بعد نمونوں کو نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف وائرولاجی بھیجا گیا جہاں سے منگل کو بعد دو پہر رپورٹ موصول ہوئی ، جو مثبت تھی‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ دوسرے شخص کاتعلق سرینگر کے ہی حیدر پورہ سے ہے، جو دلی  سے جموں اور پھر 16مارچ کو پرواز کے ذریعے سرینگر ایئرپورٹ پہنچا ‘‘۔ ڈاکٹر سلیم نے بتایا ’’67سالہ شخص 6دنوں تک گھر میں زیر نگرانی رہا لیکن  22مارچ کو ابتدائی علامات پیدا ہونے کے بعد وہ سی ڈی اسپتال ڈلگیٹ منتقل ہوگیا جہاں ڈاکٹروں نے اسکی تشخیص کیلئے نمونے حاصل کئے لیکن 22کی شام رپورٹ مثبت آنے کے بعد دوبارہ تشخیص کیلئے نمونے کو این آئی سی بھیجا گیا جہاں منگل کو بعد دوپہر اسکی رپورٹ بھی مثبت آگئی ۔ انہوں نے کہا ’’جموں کشمیر میںسماجی رابطے سے وائرس پھیلنے کا یہ پہلا کیس ہوسکتا ہے‘‘۔ انہوں نے یہ بھی کہا ’’ دونوں افراد کے اہلخانہ کو گھروں میں ہی زیرنگرانی رکھا گیا ہے اور انکی تشخیص کا عمل بھی شروع کیا گیا ہے‘‘۔ادھر بارہمولہ میں زیر نگرانی بانڈی پورہ کے ایک اور شخص کی رپورٹ مثبت آئی ہے۔ اس طرح وادی میں ایک ہی دن میں 3کیس سامنے آئے ہیں۔بتایا جاتا ہے کہ مذکورہ نوجوان چند روز قبل دلی سے واپس آیا تھا اور کسی بیرون ملک کے سفر پر نہیں گیا تھا۔مذکورہ کو صورہ میں ائیسولیشن وارڈ میں داخل کردیا گیا ہے۔
ادھر شیر کشمیر انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز صورہ میں منگل کو مزید 2مشتبہ مریضوں کو آئیسولیشن وارڈ میں داخل کیا گیا ہے جبکہ نگرانی کی مدت مکمل کرنے والے 2افراد کو گھر روانہ کردیا گیا ہے۔ شیر کشمیر انسٹی چیوٹ آف میڈیکل سائنسز صورہ کے میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’منگل کو آئیسولیشن وارڈ میں مزید 2افراد کو داخل کیا گیا جبکہ 14دنوں کی مدت مکمل کرنے والے 2افراد کو گھر روانہ کردیا گیا ‘‘۔ انہوں نے کہا کہ آئیسولیشن وارڈ میں خانیار کی خاتون سمیت 3افراد داخل ہیں جبکہ نگرانی وارڈ میں ابھی بھی 18افراد نگرانی میں ہے۔ ادھرحکومت کی طرف سے منگل کی شام جاری روزانہ میڈیا بلٹین میں بتایا گیا ہے کہ جموںوکشمیر میں اب تک 4765 ایسے اَفراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جو یاتو بیرون ممالک سے واپس آئے ہیں یا مشتبہ افراد کے رابطے میں آئے ہیں۔ان میں سے6 اَفراد کو کورونا وائرس میں مبتلا ہونے کی تصدیق ہوئی ہے جبکہ ایک مریض صحتیاب ہوا ہے۔کورونا وائرس کے تعلق سے جاری بلیٹن کے مطابق 2928 اَفراد کو ہوم کورنٹین جبکہ 71اَفراد کو ہسپتال کورنٹین میں رکھا گیا ہے۔جن اَفراد کو اپنے گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے اُن کی تعداد 1268ہے جبکہ 498اَفراد نے 28دِن کی نگرانی کی مدت پوری کی ہے۔بلیٹن میں مزید بتایا گیا ہے کہ اب تک 279 نمونے جانچ کے لئے بھیجے گئے ہیں جن میں سے 253 نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے ، 6 نمونے مثبت پائے گئے ہیں جن میں ایک مریض مکمل طور صحتیاب ہوا ہے۔بلیٹن کے مطابق 24؍مارچ 2020ء کی شام تک 20نمونوں کی رِپورٹ آنا ابھی باقی تھا۔
 

تازہ ترین