کورونا وائرس کا خوف

24 مارچ 2020 (00 : 01 AM)   
(      )

تاجروں کی دکانداروں اور عوام سے ا تظامیہ کے ساتھ مکمل تعاون کی اپیل 

سرینگر// کشمیر ٹریڈرس اینڈ مینو فیکچرس فیڈریشن نے حکومت کی طرف سے31مارچ تک مکمل لاک ڈائون کی حمائت کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ مہلک کروناوائرس کے پھیلائوکی روکتھام کیلئے جو قدم انتظامیہ نے اٹھایا اس کی فی الوقت اشد ضرورت تھی۔فیڈریشن کے قائمقام صدر منظور احمد بٹ نے لوگوں بالخصوص تاجروں سے اپیل کی کہ انتظامیہ کی طرف سے اٹھائے گئے اس قدم کو کامیاب بنانے میں وہ تعاون دیں۔ان کا کہنا تھا کہ یہ قدم لوگوں کے تحفظ کیلئے اٹھایا گیا ہے اور لوگوں کو بھی چاہے کہ وہ انتظامیہ سے تعاون کریں اور اپنے گھروں میں بیٹھ کر اس مہلک وائرس کے پھیلائو کو روکنے میں اپنا رول اد کیا۔انہوں نے کہا کہ ان حالات میں چند لوگ ناجائز منافع خوری اور کالا بازاری کرکے تمام شعبے کی شبیہ بگاڑ رہے ہیں،جن کو ناہی تاجر اور ناہی تاریخ معاف کرے گی۔ انہوں نے تاجروں اور دکانداروں پرزوردیا کہ وہ وافر مقدار میں اشیائے ضروریہ کو دستیاب رکھیں۔ کے ٹی ایم ایف کے قائمقام صدر نے دوا فروشوں سے بھی اپیل کی کہ وہ حیات بخش ادویات اور دیگر ضروری ادویات کا اسٹاک بہم رکھے تاکہ مریضوں کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔انہوں نے کہا کہ ماسکوں اور سینی ٹیئزروں کو بھی دستیاب رکھا جائے اور انہیں چور بازاری میں اضافی نرخوں میں فروخت کرنے والے دکانداروں کو بے نقاب کریں۔ منظور احمد بٹ نے دکانداروں سے اپیل کی کہ اس نازک وقت پر وہ بنیادی اشیاء کی چیزوں میں رعایت کا اعلان کریں اور لوگوں پر زیادہ بوجھ اور دبائو نہ ڈال کر قوت خریداری کو یقینی بنائے،تاکہ ہر ایک شخص خریداری کر سکے۔
 

لاک ڈائون بروقت اور بر محل

انسانی زندگیوں کو بچانااورتحفظ اولین فرض:کشمیرٹرید الائنس

سرینگر//حکومت کی طرف سے لاک ڈائون کو بروقت اور برمحل قرار دیتے ہوئے تجارتی پلیٹ فارم کشمیر ٹریڈ الائنس نے کہا کہ انسانی زندگیوں کو بچانا اور انہیں تحفظ فراہم کرنا اولین فرض ہے تاہم اس دوران باقی معاملات زندگی کو بھی زیر غور لانا لازمی ہے۔ کشمیر ٹریڈ الائنس نے وادی میں کورئونا وائرس کے پھیلائو کا تدارک کرنے اور اس کو مزید پھیلنے سے روکنے کیلئے31مارچ تک مکمل لاک ڈائون کو وقت کی مانگ اور موثر حکمت عملی قرار دیتے ہوئے زندگی کے تمام شعبوں سے تعلق رکھنے والے لوگوں بشمول تاجروں،کاروباریوں،صنعت کاروں، دکانداروں اور چھاپڑی فروشوں سے اپیل کی کہ وہ اپنے گھروں میں رہ کر اپنے افراد خانہ،پڑوسیوں اور دیگر لوگوں کے تحفظ کو یقینی بنائے۔کشمیر ٹریڈ الائنس کے صدر اعجاز احمد شہدار نے کہا کہ کورنا وائرس کے پھیلائو سے جو صورتحال عالمی سطح پر بن رہی ہے وہ نا صرف دہشت ناک اور خوف زدہ ہے،بلکہ اس سے سبق سیکھنے کی ضرورت ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ترقی یافتہ ملکوں کے علاوہ عالمی سپر پائوروں اور یورپی ملکوں کے دانشور اور ماہرین طب اسی فیصلے پر پہنچے کہ اس مہلک بیماری کو پھیلنے سے بچانے کیلئے سماجی روابط کو جتنا چاہے محدود کیا جائے اور غیر ضروری طور پر اپنے گھروں سے باہر نہ آئے۔ان کا کہنا تھا کہ اس صورتحال کے پیش نظر جموں کشمیر کی انتظامیہ نے جو قدم اٹھایا وہ برحق اور بر محل ہیں،اور اس کو ہر صورت میںکامیاب بنانے کی ضرورت ہے۔شہدار نے علمائے کرام اور دیگر مذاہب سے تعلق رکھنے والے لیڈروں،سیول سوسائٹی اور سماجی کارکنوں پر بھی زور دیا کہ وہ اپنے اثر رسوخ اور استطاعت کو بروئے کار لاکر لوگوں تک نہ صرف یہ بات پہنچائے کہ انکا گھروں میں رہنا ہی بہتر ہے،بلکہ انہیں بات پر مائل بھی کریں۔کشمیر ٹریڈ الائنس کے صدر نے اس دوران انتظامیہ سے بھی مطالبہ کیا کہ بیرون ریاستوں کے شہریوں اور مزدوروں کے وادی داخلے پر روک لگا دی جائے اور جو لوگ واپس آرہے ہیں انکی معقول انداز میں سریننگ و سکیننگ اور جانچ کی جائے۔شہدار نے انتظامیہ کو بھی مشورہ دیا کہ ان لوگوں کو گنجان آبادی میں قرنطینہ میں نہ رکھا جائے،تاکہ لوگوں میں وائرس پھیلنے کے خدشات پیدا نہ ہوا۔
 

حکیم یاسین کاغریب طبقے کو بروقت امداد فراہم کرنے کا مطالبہ

سرینگر//پیپلزڈیموکریٹک فرنٹ کے چیئرمین حکیم محمدیاسین نے کروناوائرس کی وباء کی روکتھام کیلئے کئے جارہے اقدامات کی ستائش کرتے ہوئے حکومت پرزوردیا ہے کہ عوامی نقل وحمل پر پابندی کی وجہ سے متاثرہ سماج کے غریب طبقے کوبروقت امداد فراہم کی جائے۔ایک بیان میں حکیم محمدیاسین نے کہاکہ حکومت کی طرف سے عوامی نقل وحمل پر پابندی کو31مارچ تک بڑھاناطبی اعتبار سے وقت کی اہم ضرورت ہے جس کو کسی بھی صورت میں ٹالانہیں جاسکتاتاہم اس کے ساتھ ہی حکومت کوسماج کے غریب طبقے کی طرف بھی دھیان دیناچاہیے جواس وجہ سے نان شبینہ کے محتاج بن گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ سنگین صورتحال کے پیش نظرسماج کے صاحب ثروت اورآسودہ حال لوگوں کوبھی مشکل کی اس گھڑی میں غریبوں کی اعانت کرنی چاہیے۔انہوں نے محلہ اور مسجد کمیٹیوں سے بھی اپیل کی کہ وہ اپنے علاقوں میں غریبوں اورضرورت مندوں کی امدادکیلئے آگے آئیں ۔حکیم محمد یاسین نے جموں وکشمیر کے ارکان پارلیمان سے بھی اپیل کی کہ وہ ممبران پارلیمنٹ ترقیاتی فنڈ کوعلاقائی بھیدبھائواور پارٹی نظریات سے بالاتر ہوکرانتظامیہ کوتفویض کریںتاکہ ان رقومات کوحسب ضرورت منصفانہ بنیاد پر جموں کشمیر کے کسی بھی علاقہ کے لوگوں کی بہبود اور کروناوائرس کی روکتھام کیلئے صرف کیا جاسکے ۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ مہلک کروناوائرس کے خلاف نبردآزماطبی ونیم طبی عملے کی حفاظت کیلئے موثر انتظامات کئے جائیں اوراُن کے حق میں خصوصی مشاہیرے کااعلان کرے۔  
 

گلمرگ اور ٹنگمرگ کے ہوٹلوں میں قرنطینہ

ڈاکٹر مصطفی کمال کو تشویش

سرینگر//نیشنل کانفرنس کے معاون جنرل سیکریٹری ڈاکٹر شیخ مصطفی کمال نے گلمرگ اور ٹنگمرگ کے ہوٹلوں میں باہر سے آنے والے لوگوں کو قرنطینہ میں رکھنے پر تشویش کااظہار کرتے ہوئے کہا کہ اِن لوگوں کو وہیں رکھاجاناچاہیے جہاں محکمہ صحت نے تجویز کیا ہو،تاکہ مستقبل میں کسی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ایک بیان میں ڈاکٹر مصطفی کمال نے کہا کہ جو لوگ باہر سے آتے ہیں انہیں گلمرگ اور ٹنگمرگ کے ہوٹلوں میں رکھا جاتا ہے ۔انہوں نے مشورہ دیا کہ ان لوگوں کو وہیں رکھا جانا چاہیے جہاں محکمہ صحت نے رکھنے کی ہدایت دی ہو۔انہوں نے کہا کہ اسطریقہ کار سے مقامی لوگوں میں خوف وہراس پھیل گیا ہے ۔مصطفی کمال نے مزیدکہا کہ ٹنگمرگ اور اس سے ملحقہ علاقے مسلسل برقی روسے محروم ہیں۔انہوں نے بتایا کہ اگرچہ گزشتہ کچھ ہفتوں سے وادی میں بجلی کی صورتحال میں بہتری آئی ہے تاہم اس کے باوجود یہاں کے لوگوں کو بجلی کی عدم دستیابی کاسامنا ہے ۔  
 

تازہ ترین