تازہ ترین

سرینگر میں سرکاری چھٹیاں منسوخ

وادی میں دوسرے روز بھی آمد و رفت اور ٹرانسپورٹ معطل

22 مارچ 2020 (00 : 01 AM)   
(      )

بلال فرقانی
 سرینگر //انتظامیہ نے سرینگر ضلع میں سبھی گزیٹیڈ چھٹیاں منسوخ کر کے کہا ہے کہ کرونا وائرس کی روکتھام سے منسلک محکموں نیز لازمی سروسز کے افسران اور دیگر اہلکارکوئی چھٹی نہیں لے سکتے اور ایسے محکموں سے وابستہ عملے نے اگر کوئی چھٹی لی ہے تو اسے بھی منسوخ کیا جاتا ہے۔ ادھرشہرسرینگرسمیت پوری وادی میں سنیچر دوسرے روز بھی تقریباً لاک ڈائون کی صورتحال رہی۔ٹرانسپورٹ، دکانات اور دیگرکاروباری مراکز بند رہنے کی وجہ سے بازاروں میں سناٹا چھایارہا۔شہر میں فلائی اوور بھی بند کردیا گیا تھا۔سبھی بازار سنسان تھے اور ہر طرح کی آمد و رفت بند تھی۔پبلک ٹرانسپورٹ مکمل طور پر بند تھا البتہ پرئیویٹ گاڑیاں حسب معمول چلتی رہیں۔ لالچوک سمیت سیول لائنزمیں کے علاوہ ڈائون ٹاون اور کئی اضلاع میں سڑکوں اورچوراہوں پرخاردار تاریں نصب کی گئی تھیں۔بارہمولہ ،کپوارہ ،بانڈی پورہ ،بڈگام ،گاندربل ،پلوامہ ،شوپیان اورکولگام میں اسی طرح کی صورتحال رہی۔ ٹرانسپورٹ سڑکوں سے غائب رہا، بازارنہیں کھلے اور لوگوں کی آمد و رفت معطل رہی۔ادھروادی کے سبھی ضلعی انتظامیہ نے بھی متعلقہ علاقوں میں ٹرانسپورٹ، کاروباری و تجارتی مراکز اور دیگر ایسی تمام جگہیں بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے جہاں لوگوں کے جمع ہونے کے امکانات موجود تھے۔ البتہ سبھی اضلاع میںمیڈیکل شاپ، دودھ،سبزی فروش و میوہ فروش،پیٹرول پمپ اور دیگر ایسی جگہیں جہاں ضروری اشیاء فروخت کی جارہی ہیں، کو اس پابندی سے مستثنیٰ رکھا گیا ہے۔احکامات میں کہا گیا ہے کہ جو کوئی شخص سرکاری احکامات کی خلاف ورزی کریگا اسے قانون کے مطابق دو سال کی سزا دی ہوسکتی ہے۔جموں کشمیر انتظامیہ نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ سماجی طور خود کو محدود کریں، پبلک ٹرانسپورٹ کا استعمال نہ کریں اور جمع ہونے کی جگہوں سے دور ی بنائے رکھے۔لوگوں سے یہ بھی کہا گیا ہے کہ تھوڑی سی علامات ظاہر ہونے کی صورت میں فوری طور پر اسپتال سے رابطہ قائم کریں۔