کورونا وائرس کیخلا ف جنگ میں عوام سے تعاون کی اپیل

عوام جنتا کرفیو کو کامیاب بنائیں :صوبائی انتظامیہ

22 مارچ 2020 (00 : 01 AM)   
(      )

بلال فرقانی

  سفری تفصیلات چھپانے والا جیل جائیگا

 
سرینگر//صوبائی انتظامیہ نے خبردار کیا ہے کہ جو شخص اپنی ٹرول ہسٹری  چھپانے کی کوشش کریگا، اسے جیل بھیج دیا جائیگا۔انتظامیہ نے وادی میں کرونا وائرس کیخلاف کئے جارہے اقدامات کے پیش نظر 31مارچ تک بندشیں رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔لوگوں سے کہا گیا ہے کہ وہ صرف ہنگامی صورتحال کے پیش نظر ہی گھروں سے باہر آئیں۔صوبائی کشمیرپی کے پولے نے ، آئی جی پی کے ہمراہ سنیچر کی شام سرینگر میںایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ ابھی اس وبا کو ختم کرنے کیلئے کوئی دوائی نہیں ہے تاہم جو احتیاط ضروری ہے، ان میںلوگوںکو گھروں میں رکھنا ،دفعہ144نافذ کرنا اور،غیر اہم سروس کو بند کرنا وغیرہ قابل ذکرہے۔انکا کہنا تھا کہ آج جنتا کرفیو رہے گا جبکہ اسکا اطلاق31مارچ تک رہے گا۔صوبائی کمشنر نے بتایا جتنے لوگ گھروں میں رہیں گے اتنا ہی بہتر ہوگا۔ صوبائی کمشنر نے بتایا سب سے اہم کشمیر میں داخل ہونے والے فضائی و زمینی راستوں پر سکریننگ کا عمل سخت کرنا ہے۔
صوبائی کمشنر نے بتایا کہ جن جگہوں کی کورنٹائن کیلئے نشاندہی کی گئی ہے وہاں رہائشی سہولیات بہتر ہیں۔انہوں نے کہا کہ جو لوگ کشمیر میں داخل ہوکر غلط تفصیلات فراہم کررہے ہیں انہیں جیل بھیج دیا جائیگا۔ انکا کہنا ہے کہ امیگریشن حکام سے تفصیلات فراہم ہوتی ہیں اور ایسے افراد کو پہلے 14روز تک قرنطینہ میں رکھا جائیگا اور بعد میں خلاف ورزی کے مرتکب افراد کیخلاف کیس درج کر کے انہیں جیل میں بند کیا جائیگا۔انہوںنے کہا کہ جن لوگوں کا 14دن کا سفری دورانیہ ہے یا کوئی علامت ہے ان کو کورنٹائن میں لے جا نا بے حد ضروری ہے ۔انہوںنے کہا کہ باہر سے آ رہے ٹرک یا ٹینکر ڈرائیور وںکیلئے بھی وادی داخل ہونے سے قبل اسطرح کے لئے اقدامات اٹھائے گئے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ جواہر ٹنل پر سخت چیکنگ شروع کی گئی ہے جہاں سے خاص کرغیر ریاستی مزدور آتے ہیں، انکی بہتر انداز اور سختی سے سکریننگ کی جا رہی ہے۔ صوبائی کمشنر کا کہنا تھا کہ وادی داخل ہونے والے تمام چھوٹے بڑے راستوں کو سیل کر کے ناکے بٹھائیں گئے ہیں، تاکہ کوئی بھی شخص بنا سکریننگ کے وادی  میںداخل نہ ہو۔۔صوبائی کمشنر نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی جانب سے اتوار کو جنتا کرفیوکی اپیل کی گئی ہے لہٰذا کشمیر میں بھی اسے کامیاب بنایا جائے ۔انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ میڈیکل ایمرجنسی کو چھوڑ کر کسی بھی وجہ سے صبح 7بجے سے شام9بجے تک اپنے گھروں سے باہر نہ آئیں اور ناہی سڑکوں پر چلیں ۔ پریس کانفرنس میں موجود انسپکٹر جنرل آف پولیس وجے کمار نے بتایا کہ کہ 22کو وادی کشمیر میں اضافی سیکورٹی کوتعینات کیا جائے گا۔انہوںنے کہا کہ فورسز کی اضافی نفری جلوس روکنے کے لئے تعینات نہیں بلکہ عوام کی حفاظت کے لئے تعینات کیاجائے گا ۔انہوں نے عوام سے اس سلسلے میں مکمل تعاون کی اپیل کی ہے ۔ آئی جی پی کشمیر نے سماج کے سبھی حلقوں میڈیا ،مسجد کمیٹیوں،مذہبی رہنمائوں کو اس سلسلے میں تعاون کی اپیل کی ہے ۔ 

تازہ ترین