تازہ ترین

مڈل سکول کیری کی حالت ابتر،2014سے مرمت نہ ہوسکی

خستہ حال عمارت طلبا اور اساتذہ کی زندگی کیلئے بڑا خطرہ ،حکام بے پرواہ

4 اگست 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

حسین محتشم
 
پونچھ//سرحدی ضلع پونچھ کی حد متارکہ کے قریب واقع گاوں کیرنی کے گورنمنٹ مڈل اسکول کی عمارت خستہ حالی کا شکار ہے جو اسکول میں زیر تعلیم 97ویں کمسن طلبا ء کے لئے بہت خطر ناک ثابت ہو سکتی ہے۔یہ اسکول جس میںزیادہ تر غریب گھرانوں سے تعلق رکھنے والے بچے پڑھتے ہیں تاہم عمارت کی شکستہ حالت کی وجہ سے بچوں کا مستقبل اور ان کی زندگیاں خطرے سے دوچار ہیں۔اسکول انتظامیہ کے مطابق اسکول کی عمارت کی حالت انتہائی خراب ہے اور مرمت نہ ہونے کے باعث عمارت مخدوش ہوچکی ہے۔سکول ہیڈ ماسٹر فرید حسین شاہ نے بتایا کہ 2014میں آئے تباہ کن سیلاب کی وجہ سے اسکول کی عمارت زمین میں 4فٹ دھنس گئی تھی،اس دوران عمارت کا اگلا حصے کے لینٹر کے نیچے سے پیلر ٹوٹ گئے تھے جس کے بعد انہوں نے لکڑیوں سے اس لینٹر کو روک رکھا ہے۔انہوں نے کہا کہ اسکول میں پچھلے سال110طالب علم داخل تھے لیکن اس بار صرف 97ویں ہیں جس کی اصل وجہ عمارت کی خستہ حالت ہے۔انہوں نے مزید کہا اسکول کے کل 3 کمرے ہیں جن میں 8کلاسوں کے طلبہ بیٹھتے ہیں۔ ان کمروں کی دیواروں میں دراڑیں پڑگئی ہیں جس کے سبب کسی بھی وقت جان لیوا حادثہ رونما ہوسکتاہے۔انہوں نے کہا کہ اسکول میں کیچن نہیں ہے وہ5فٹ کے سٹور میں بچوں کے لئے کھانا تیار کرواتے ہیں جب کہ خانسامان بھی ایک ہی تعینات کی گئی ہے دوسرے خانساماں کے لئے انہوں نے عرضی دائر کر رکھی ہے لیکن ابھی تک کچھ نہیں کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ اسکول میں نہ تو چپراسی ہے اور نہ ہی چوکیدار لگایا گیا ہے۔انہوں نے کہااسکول میںہیڈ ماسٹر کو ملا کر صرف6 اساتذہ ہیں ان میں سے بھی ایک استاد کو کہیں اور اٹیچ کیا گیا ہے جب کہ اسکو ل میں 6اسامیاں خالی پڑی ہیں۔ ان کے مطابق ماضی میں بھی متعدد بار زونل ایجوکیشن افسرکو اور دیگر افسران کو تحریری اور زبانی طور پر شکایات درج کی گئی لیکن سب نے دلاسے دئے ہیں اور اسکول کے لیے کچھ نہیںکیا۔انہوں نے کہا کہ اسکول میں زیادہ تر غریب گھرانوں سے تعلق رکھنے والے بچے پڑھتے ہیں تاہم عمارت کی شکستہ حالت کی وجہ سے بچوں کے والدین فکر مند ہیں۔انہوں نے کہا کہ وہ ایک بار پھر اعلی حکام سے اسکول کی مرمت کرنے کی اپیل کرتے ہیں۔ رابطہ کرنے پر زونل ایجوکیشن آفیسر ننگالی فریدہ بیگم نے بتا کہ انہوں نے خود اس اسکول کا دورہطکر کے جائزہ لیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ وہ تحرری طور پر چیف سیجوکیشن افسر کو لکھ چکی ہیں اور انہوں نے وہاں عمارت کیبتعمیر نو کی منظوری بھی دی ہے جلد ہی کام شروع کیا جائے گا۔