تازہ ترین

قومی اردو کونسل کا ذیلی دفتر حیدرآباد کے محبان اردو کے لیے ایک تحفہ : ڈاکٹر شیخ عقیل احمد

4 اگست 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

حیدرآباد//قومی اردو کونسل کے ذیلی دفتر کو بہت جلد فعال کیا جائے گا۔ قومی اردو کونسل بھی یہاںہرسال اردو سے متعلق ایک بڑے پروگرام کا انعقادکرے گی۔یہاں ایک ریڈنگ روم بھی بنایا جائے گا جس میں مقامی لوگ اخبارات ورسائل اور کونسل کی مطبوعات کا مطالعہ کرسکیں گے۔ دفتر کے ہال کو بھی اردو زبان و ادب سے متعلق سرگرمیوں اور تقریبات کے لیے کھول دیا جائے گا۔ حیدرآباد یوں تو اردو زبان و ادب کا گہوارہ ہے لیکن ہم چاہتے ہیں کہ یہاں کے مقامی اردو والے فروغ اردو کی ہماری کوششوں میں تعاون کریں اور قومی اردو کونسل کے ذیلی مرکز تشریف لائیں۔ یہاں موجود کتابوں سے استفادہ کریں اور اپنے پروگرام وتقریبات کا اہتمام ہمارے ہال میں کریں تاکہ ہمارا مرکز اردو سے متعلق سرگرمیوں میں مصروف رہے۔ ہم اپنا ہال اردو سے متعلق پروگراموں کے لیے مفت فراہم کریں گے۔قومی اردو کونسل نے ادب اطفال، زبان و ادب، تعلیم و تربیت، فلسفہ، تاریخ، طب، سائنس جیسے مختلف موضوعات پر تقریباً 1400 کتابیں شائع کی ہیں، یہ کتابیں حیدرآباد کے دفتر سے خریدی جاسکتی ہیں۔اسکولوں کالجوں کے اساتذہ سے درخواست ہے کہ وہ بچوں کی دنیا اور خواتین دنیا خرید کر اس سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔کونسل کے چاروں رسائل بھی یہاں پابندی سے آتے ہیں، انھیں بھی مطالعہ میں رکھا جاسکتا ہے۔قومی اردو کونسل کا ذیلی دفتر حیدرآباد کے محبان اردو کے لیے ایک تحفہ ہے اس سے اہل حیدرآباد کو فیضیاب ہونا چاہیے۔یہ باتیں قومی اردو کونسل کے ڈائرکٹر ڈاکٹر شیخ عقیل احمد نے آج حیدرآباد میں پنے ایک بیان میں کہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ ہمارا دفتر حیدرآباد میں چارمینار کے قریب واقع ہے اور ایسی جگہ پر ہے جہاں قرب وجوار میں ایک بڑی اردو آبادی رہتی ہے۔ہم حیدرآباد کے اردو والوں سے درخواست کرتے ہیں کہ وہ قومی اردو کونسل کی اسکیموں سے فائدہ اٹھائیں اور مزید معلومات کے لیے وہ ہمارے دفتر آسکتے ہیں۔ اردو سے متعلق ہماری تمام اسکیموں کی جانکاری ہمارے دفتر سے حاصل کی جاسکتی ہے ساتھ ہی ہماری ویب سائٹ پر بھی تمام تفصیلات موجود ہیں۔ہمارے دفتر کے آڈیٹوریم میں بچوں اور خواتین سے متعلق پروگراموں کا بھی انعقاد کیا جاسکتا ہے۔ یہاں کے صحافیوںسے اپیل ہے کہ وہ بھی ہمارے دفتر سے فائدہ اٹھائیں اور اپنے پروگرام اورتربیتی ورکشاپ کا یہاں اہتمام کریں۔حیدرآباد میںقومی اردوکونسل کے کمپیوٹر اور کیلی گرافی کے بھی مراکز چل رہے ہیں ان سے بھی مستفید ہوا جاسکتا ہے۔ ہماری کوشش ہے کہ نئی نسل میں اردو کا فروغ ہو اور قومی اردو کونسل حیدرآباد کے ہر گھر میں اردو کو پھلتا پھولتا دیکھنا چاہتی ہے۔اردو آپ کی قیمتی ثقافت کا آئینہ ہے ،اس کی بقا کی کوشش میں ہمارا ساتھ دیں۔ ایک پروگرام کے دوران آل انڈیا اردو ماس سوسائٹی فار پیس کے صدر ڈاکٹر مختار احمد فردین نے گائڈنس اسکول کے بچوں کے لیے کونسل کے رسالے بچوں کی دنیا کی 50 کاپیاں خریدنے کا بھی اعلان کیا۔