تازہ ترین

شکیل بخشی پر حملے کی مذمت | گیلانی اور صحرائی نے سازش سے تعبیر کیا

2 اگست 2019 (00 : 12 AM)   
(      )

نیو ڈسک
سرینگر//حریت (گ)چیئرمین سید علی گیلانی نے معروف حریت پسند لیڈر شکیل احمد بخشی پر قاتلانہ حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے واقعات میں ہاتھ چاہے جو بھی استعمال کئے جائیں، لیکن جو ذہن ایسی منصوبہ بند سازشوں کیلئے کام کررہا ہے ، وہ ہی ہے جو یہاں پر آزادی کے نام پر کام کرنے والوں کو ایک دوسرے کی گردن زنی پر اُکسا کر اس لہولہان وادی کو اور زیادہ لال کرنے میں مصروف ہے۔ گیلانی نے کہا کہ ایسی مذموم کارروائیوں سے دشمن ایک تیر سے کئی شکار کرکے ایک تو تحریک آزادی کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا رہا ہے اور دوسری طرف نامعلوم افراد کی آڑ میں معروف اشخاص کو نشانہ بنارہے ہیں۔ حریت چیرمین نے کہا کہ جوافراد سن بلوغت سے ہی کاروان حریت میں شامل رہے ہوں اورجنہوں نے اس پُرخار راہ میں بہت سے مشکلات اور مصائب جھیل کر بھی دامن حق وصداقت تھامے رکھا انہیں اس بزدلی سے نشانہ بنانا ہم سب کیلئے لمحہ فکریہ ہے۔ دشمن دو ربیٹھا تماشا دیکھ رہا ہوگا کہ اس تشویشناک فضا میں بھی یہ قوم ایک دوسرے کے گلے کاٹنے کیلئے بڑی آسانی سے استعمال ہورہا ہے۔ انہوں نے قوم خاصکر جوانوں سے اپیل کی کہ اس دورِ پُرآشوب میں کندھے سے کندھا ملاکر یکسو اور یکجا ہوکر ایک سیسہ پلائی ہوئی دیوار کی طرح دشمن کا مقابلہ کرنے کی اشد ضرورت ہے اور اگر ہم آج بھی سازشوں کا شکار ہو کر ٹکڑوں اور ٹولیوں میں بٹ گئے توہماری آنے والی نسلیں ہمیں کبھی معاف نہیں کریں گی۔ تحریک حریت چیئرمین محمد اشرف صحرائی نے اسلامک سٹوڈنٹس لیگ کے سربراہشکیل احمد بخشی پر نامعلوم افراد کی طرف سے کئے گئے حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ شکیل احمد بخشی پر حملہ ایک گہری سازش کا نتیجہ ہے۔ صحرائی نے کہا کہ مسلمان آپس میں بھائی بھائی ہیں۔ اسلام نے مسلمان کے جان ومال اور عزت وآبرو کے تحفظ کی ہر مسلمان کو تاکید کرتے ہوئے کہا ہے کہ بہترین مسلمان وہ ہے جس کے ہاتھ اور زبان کے شر سے مسلمان محفوظ ہو۔ انہوں نے کہا کہ اسلام کسی عام اور نہتے شہری پر قاتلانہ حملے کی اجازت نہیں دیتا ہے اور قرآن نے کسی بے گناہ انسان کے قتل کو پوری عالم انسانیت کا قتل قرار دیا ہے۔ادھرڈیموکریٹک لبریشن پارٹی کے چیرمین ہاشم قریشی نے شکیل احمد بخشی پر حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ایسے حملے سیاسی انتقام گیری اور نامعلوم بندوق کی کارستانی ہے۔انہوں نے شکیل بخشی سے ہمدردی کا اظہار کیا اور جلد صحتیابی کیلئے دُعا کی ۔ پیپلز لیگ کے سینئر وائس چیئرمین محمد یاسین عطائی نے شکیل احمد بخشی پر حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کی کارروائیاں کسی بھی صورت میں قابل قبول نہیں ہیں ۔ انہوں نے تحریک حریت کے سینئر رکن امتیاز حیدر پر سیفٹی ایکٹ کے اطلاق کو ایک غیر جمہوری عمل قرار دیتے ہوئے اُن کی رہائی کا مطالبہ کیا۔