تازہ ترین

وراٹ کو تینوں فارمیٹ کی کپتانی، ہاردک کو آرام

21 جولائی 2019 (15 : 10 PM)   
(      )

نیو ڈسک
ممبئی/قومی سلیکٹرز نے ٹیسٹ اور محدود اوورز کی کپتانی کو وراٹ کوہلی اور روہت شرما کے درمیان تقسیم کرنے کی قیاس آرائیوں اور تجاویز کو یکسر مسترد کرتے ہوئے وراٹ کو ویسٹ انڈیز کے آئندہ دورے کے لئے تینوں فارمیٹ میں کپتان مقرر کیا ہے جبکہ مہندر سنگھ دھونی کو ٹیم میں جگہ نہیں ملی ہے اور آل راؤنڈر ہردک پانڈیا کو اس دورے سے مکمل طور آرام دیا گیا ہے ۔ ہندستان کو اگست-ستمبر میں ہونے والے ویسٹ انڈیز کے دورے میں تین ٹوئنٹی -20، تین ون ڈے اور دو ٹیسٹ کھیلنے ہیں۔ یہ دو ٹیسٹ آئی سی سی ورلڈ ٹیسٹ چمپئن شپ کا حصہ ہوں گے ۔ روہت شرما ون ڈے اور ٹوئنٹی -20 میں نائب کپتان ہوں گے جبکہ اجنکیا رہانے ٹیسٹ ٹیم کے نائب کپتان ہوں گے ۔ اس دورے کے لئے وکٹ کیپر مہندر سنگھ دھونی کو جگہ نہیں ملی ہے جنہوں نے خود کو اس دورے کے لئے دستیاب قرار نہیں دیا تھا۔ ایک چونکانے والے فیصلے میں آل راؤنڈر ہردک پانڈیا کو آرام دیا گیا ہے جبکہ فاسٹ بولر جسپریت بمراہ کو محدود اوورز سے آرام دیا گیا ہے ۔  ہندستان کے انگلینڈ میں ہوئے ورلڈ کپ میں سیمی فائنل میں باہر ہو جانے کے بعد اس بات کے قیاس تھے کہ وراٹ اور روہت کے درمیان ٹیسٹ اور محدود اوور کی کپتانی تقسیم کی جا سکتی ہے ۔ اس بات کی بھی قیاس آرائی تھی کہ وراٹ اور تیز گیند باز جسپریت بمراہ کو اس دورے میں آرام دیا جا سکتا ہے لیکن سلیکٹرز نے صرف بمراہ کو محدود اوورز سے آرام دیا ہے جبکہ ٹیسٹ سیریز میں وہ کھیلیں گے ۔تیز گیند باز نودیپ سینی کو ون ڈے اور ٹوئنٹی -20 ٹیموں میں جگہ ملی ہے جبکہ لیگ اسپنر راہل چاھر کو ٹوئنٹی -20 ٹیم میں بلایا گیا ہے ۔ مڈل آرڈر کے بلے بازوں شریس ایر اور منیش پانڈے اور بائیں ہاتھ کے تیز گیند باز خلیل احمد کو ون ڈے ٹیم میں واپس بلایا گیا ہے لیکن وکٹ کیپر دنیش کارتک کی ٹیم سے چھٹی ہو گئی ہے ۔ ورلڈ کپ میں ہاتھ کے انگوٹھے میں چوٹ لگنے کی وجہ سے آسٹریلیا کے خلاف میچ کے بعد باہر ہوئے اوپنر شکھر دھون کے فٹ ہو جانے کے بعد ان کی محدود اوورز کی ٹیم میں واپسی ہوئی ہے لیکن انہیں ٹیسٹ ٹیم میں نہیں رکھا گیا ہے ۔ اگرچہ پیر میں فریکچر کی وجہ سے ورلڈ کپ سے باہر ہوئے آل راؤنڈر وجے شنکر فٹ نہیں ہو پائے ہیں۔ نوجوان اوپنر پرتھوی شا کے بھی فٹ نہ ہونے کے سبب ان پر غور نہیں کیا گیا۔وکٹ کیپر ردھمان ساہا کی ایک سال بعد ٹیسٹ ٹیم میں واپسی ہوئی ہے اور وہ ٹیسٹ ٹیم میں نوجوان رشبھ پنت کے ساتھ دوسرے وکٹ کیپر ہیں۔ ساہا کو 2018 میں جنوبی افریقہ کے دورے کے دوران چوٹ لگی تھی۔ ٹیسٹ اوپنر مرلی وجے کو خراب فارم کی وجہ سے ٹیم سے ہٹا دیا گیا ہے ۔ ٹیسٹ ٹیم میں آف اسپنر روی چندرن اشون بھی لوٹے ہیں جنہوں نے دسمبر 2018 میں آسٹریلیا کے دورے میں ایڈیلیڈ ٹیسٹ کے بعد کوئی بین الاقوامی کرکٹ نہیں کھیلی ہے ۔ ٹیسٹ ٹیم میں اشون کے ساتھ دیگر اسپنر لیفٹ اسپنر رویندر جڈیجہ اور چائنامین بولر کلدیپ یادو ہیں۔ چیف سلیکٹر پرساد نے اس دورے کے لئے اتوار کو ٹیم کا اعلان کیا۔ دھونی کے بارے میں پوچھے جانے پر پرساد نے کہا کہ جب دھونی نے خود کو دستیاب نہیں قرار دیا ہے تو اس صورت میں اور آگے جانے کی کوئی ضرورت نہیں ہے اور ہم نے نوجوان کھلاڑیوں کو تیار کرنے کا کام شروع کر دیا ہے ۔ہندستان اور ویسٹ انڈیز کے درمیان 3 سے 6 اگست تک ٹوئنٹی 20 سریز کھیلی جانی ہے جبکہ ون ڈے میچ 8 سے 14 اگست تک ہونے ہیں۔ وہیں دو ٹسٹ میچوں کی سیریز 22 اگست سے 3 ستمبر تک ہوگی۔ ٹی -20 سیریز کے دو میچ فلوریڈا اور ایک گیانا میں کھیلا جائے گا۔دو ٹیسٹ میچوں کے لئے ٹیم: وراٹ کوہلی (کپتان)، اجنکیا رہانے (نائب کپتان)، مینک اگروال، لوکیش راہل، چتیشور پجارا، ھنوما وھاری، روہت شرما، رشبھ پنت، ردھمان ساہا، روی چندرن اشون، رویندر جڈیجہ، کلدیپ یادو، ایشانت شرما ، محمد سمیع، جسپریت بمراہ اور امیش یادو۔ تین میچوں کی ون ڈے سیریز کے لئے ٹیم:وراٹ کوہلی (کپتان)، روہت شرما (نائب کپتان)، شکھر دھون، لوکیش راہل، شریس ایر، منیش پانڈے ، رشبھ پنت (وکٹ کیپر)، رویندر جڈیجہ، کلدیپ یادو، یجویندر چہل، کیدار جادھو ، محمد سمیع، بھونیشور کمار، خلیل احمد اور نودیپ سینی۔
تین میچوں کی ٹی 20 سیریز کے لئے ٹیم: وراٹ کوہلی (کپتان)، روہت شرما (نائب کپتان)، شکھر دھون، لوکیش راہل، شریس ایر، منیش پانڈے ، رشبھ پنت، کرونال پانڈیا، رویندر جڈیجہ، واشنگٹن سندر ، راہل چاھر، بھونیشور کمار ، خلیل احمد، دیپک چاھر اور نودیپ سینی۔