تازہ ترین

ثقافتی و تہذیبی پروگراموں کا کلینڈر جاری

بادام واری میں ’لوک و صوفیانہ موسیقی‘ آج،’بچہ نغمہ ‘ کی بحالی کیلئے سرگرمیاں شروع

19 جولائی 2019 (28 : 11 PM)   
(   عکاسی: امان فاروق    )

بلال فرقانی
سرینگر// بادام واری میں سنیچر سے2روزہ’’لوک موسیقی و صوفیانہ موسیقی پر مبنی‘‘ ساز و آواز‘‘ منعقد کرنے کا اعلان کرتے ہوئے مرکزی وزارت تمدن کے ادارے شمالی زون ثقافتی مرکز نے کہا کہ ریاست میں ثقافتی و تہذیبی پروگراموں کا کلینڈر مرتب کیا گیا ہے۔ایوان صحافت کشمیر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے شمالی زون ثقافتی مرکز کے ڈائریکٹر پروفیسر سوبھاگیہ وردن نے کہا کہ کشمیر میں ثقافت و تمدن کا مستقبل تاریک نہیں بلکہ روشن ہے۔انہوں نے کہا کہ مقامی فنکاروں کیلئے شمالی زون ثقافتی مرکز کافی کام کر رہی ہے،جبکہ فوت شدہ ہونے والے فن کو زندہ رکھنے اور اس کو عام کرنے کی کاوشیں بھی جاری ہے۔ پروفیسر سوبھاگیہ وردن نے کہا’’بچہ نغمہ‘‘ کی بحالی کیلئے مرکز متحرک ہوگیا ہے اور رپورٹوں کے مطابق اب صرف ایک فنکارہ بچی ہوئی ہے،تاہم مرکز نے مذکورہ فنکارہ کو اعتماد میں لیتے ہوئے‘‘گرو ،شیشہ‘‘( استاد،شاگرد) اسکیم کے تحت انہیں بچہ نغمہ کو مزید شاگردوں تک پہنچانے کیلئے اعتماد میں لیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگرچہ فی الوقت فنکاروں کیلئے پنشن اسکیم نہیں ہے،تاہم بزرگ،اور بیمار فنکاروں کی مدد دیگر اسکیموں کے ذریعے کی جا رہی ہے۔ امسال پروگراموں کے حوالے سے تفصیلات فراہم کرتے ہوئے انہوں کہا کہ شہر کے معروف سیاحتی مقام بادام واری میں سنیچر سے لوک اور صوفیانہ موسیقی کے سنگم پر مبنی2روزہ پروگرام شروع کیا جائے گا اور اسکا اختتام22جولائی کو ٹائیگور ہال سرینگر میں ہوگا۔ انہوں نے مزید کہا کہ10سے14ستمبر تک کشمیر تھیٹر اور15سے21تک قومی تھیٹر میلے کا بھی انعقاد کیا جائے گا۔ شمالی زون ثقافتی مرکز کے ڈائریکٹر پروفیسر سوبھاگیہ وردن نے مزید کہا کہ نظامی برداران کی طرف امسال قوالی کے علاوہ مشاعرئوں کے پروگرام اور دیگر تہذیبی و تمدنی پروگراموں کا بھی انعقاد کیا جا رہا ہے،جن میں قریب2ہزار مقامی فنکاروں کو مصروف رکھا جائے گا۔