تازہ ترین

کرناٹک کے واقعات کے سلسلے میں لوک سبھا میں کانگریس کی نعرے بازی

20 جولائی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نئی دہلی// کرناٹک اسمبلی کے واقعات پر لوک سبھا میں کانگریس اور اس کے اتحادیوں نے جمعہ کو ہنگامہ کیا اور اسپیکر کی نشست گاہ کے قریب نعرے بازی کی۔ صبح 11 بجے جیسے ہی ایوان کی کارروائی شروع ہوا اور اسپیکر اوم برلا نے وقفہ سوال شروع کرنے کا اعلان کیا، کانگریس، نیشنلسٹ کانگریس اور ترنمول کانگریس کے رکن اپنی جگہوں پر کھڑے ہو گئے اور وقفہ سوال ملتوی کرکے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) پر کرناٹک میں کانگریس جنتادل ایس حکومت کو گرانے کی سازش کے بارے میں بات کرنے کا مطالبہ کرنے لگے۔ اپوزیشن کے ممبران اپنے ہاتھوں میں پوسٹر لئے تھے، جن میں انگریزی میں ’سیو ڈیموکریسی‘ یعنی جمہوریت لکھا تھا۔بار بار اپیل کے باوجود اسپیکر نے وقفہ سوال جاری رکھا تو کانگریس کے رکن ایوان کے وسط میں نشست گاہ کے سامنے آ گئے اور ’ سیو ڈیموکریسی‘، 'وی وانٹ جسٹس‘ اور ’آمریت نہیں چلے گی‘ کے نعرے لگانے لگے۔ اس پر اسپیکر نے کہا کہ تمام ارکان نے قوانین کے مطابق طے کیا تھا کہ ریاست ، ریاستی اسمبلی اور ریاست کے آئینی عہدوں پر بیٹھے لوگوں کے موضوعات پارلیمنٹ میں نہیں اٹھائے جائیں گے۔ وقفہ صفر میں بھی اپوزیشن کو دو مرتبہ اس موضوع پر بات کرنے کی اجازت دی جاچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وقفہ صفر ہونے دیں وہ اس کے بارے میں ارکان سے بات کریں گے۔لیکن حزب اختلاف کے ارکان نعرے لگاتے رہے۔ دریں اثنا سوال کا وقفہ سوال چلتا رہا۔ تقریبا ایک ا?دھے گھنٹہ بعد اسپیکر نے اپوزیشن کے ممبروں سے اپیل کی کہ وہ اپنی نشستوں پر واپس آ جائیں۔ وہ وقفہ صفر میں ضروری دستاویزات ایوان پر پیش کرنے کے بعد کانگریس کے رہنما ادھیر رنجن چوہدری کو اپوزیشن کی بات ایوان میں رکھنے کا موقع دیں گے۔ اس کے بعد، اپوزیشن کے ارکان اپنی نشستوں میں واپس آگئے۔یو این آئی