تازہ ترین

انڈین میڈیکل کونسل کی جگہ نیشنل میڈیکل کمیشن کی تشکیل پر کابینہ کی مہر

18 جولائی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

یو این آئی
نئی دہلی//مرکزی کابینہ نے انڈین میڈیکل کونسل کی جگہ نیشنل میڈیکل کمیشن کی تشکیل سے متعلق بل کو بدھ کے روز منظوری دے دی۔ وزیر اعظم نریندر مودی کی صدارت میں یہاں ہونے والے کابینی اجلاس میں اس نیشنل میڈیکل کمیشن بل کو منظوری دی گئی۔ اس بل کے پاس ہونے کے بعد انڈین میڈیکل کونسل کی جگہ نیشنل میڈیکل کمیشن لے گا۔ بل کے توضیعات کے مطابق ایم بی بی ایس کے آخری سال کے امتحان کو نیشنل ایگزٹ ٹیسٹ (این ای ٹی) کے نام سے جانا جائے گا۔ پوسٹ گریجویٹ سطح کے میڈیکل کورس میں داخلے کے لیے اسے پاس کرنا ضروری ہوگا۔ بیرون ممالک سے ایم بی بی ایس کرکے آنے والے ڈاکٹروں کو بھی ملک میں پریکٹس سے قبل یہ امتحان دینا ہوگا۔  اب تک آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (ایمس) میں داخلہ کے لیے انٹرنس ایگزام ایمس خود ہی منعقد کرتا ہے ۔ اس بل کے پاس ہوجانے کے بعد ایمس سیمت تمامہ نیشنل انسٹی ٹیوٹ میں قومی داخلہ اور اہلیتی امتحان (نیٹ) کامن کاؤنسلنگ اور این ای ٹی کی بنیاد پر ہی داخلہ ہوگا۔ بل کے توضیعات میں کہا گیا ہے کہ پرائیویٹ اور ڈیمڈ میڈیکل کالجز میں بھی 50 فیصد سیٹوں کی فیس اور دیگر چارجز طے کرنے کا حق کمیشن کو ہوگا۔ میڈیکل کالجز کی رینکنگ اور ان کے تجزیہ کے لیے میڈیکل اَسِسمنٹ اینڈ ریٹنگ بورڈ بنایا جائے گا۔ نیشنل میڈیکل کمیشن سے متعلق چار خود مختار بورڈ ہوں گے ۔ یہ بورڈ اَنڈ رگریجویٹ میڈیکل ایجوکیشنل بورڈ، پوسٹ گریجویٹ میڈیکل ایجوکیشن بورڈ، میڈیکل اَسِسمنٹ اینڈ ریٹنگ اور ایتھِکس اینڈ میڈیکل رجسٹریشن بورڈ ہوں گے ۔ خود مختار بورڈ میں اراکین کی تعداد تین سے بڑھا کر پانچ کرنے کی تجویز ہے ۔ ان میں دو دو جزوقتی ارکان کی تقرری کی جائے گی۔