تازہ ترین

گلگام کا غریب کنبہ انصاف سے محروم

معصوم عمر فاروق کے قاتلو ں کو پولیس گرفتار کرنے میں ناکام :لواحقین

16 جولائی 2019 (40 : 10 PM)   
(      )

اشرف چراغ
کپوارہ//ایک سال قبل شمالی ضلع کپوارہ کے گلگام علاقہ میں ایک کمسن بچہ عمر فاروق کو اغوا کرنے بعد قتل کیا گیا تاہم آج تک بھی پولیس ملو ثین کو گرفتار کرنے میں ناکام ہو ئی ۔گلگا م کپوارہ میں منگل کو عمر کی پہلی برسی پر ان کے آبائی گھر میں ایک دعائیہ مجلس کا اہتمام کیا گیا تاہم عمر کی ما ں اور ا س کی 7بہنیں عمر کی یاد میں غم سے نڈھال تھیں ۔عمر فاروق کا والد فاروق احمد ملک جو مزدوری کر کے اپنے عیال کا پیٹ پالتا ہے کسی کام سے کرناہ گیا تھا کہ 16جولائی2018کو ان کے لخت جگر جو 7بہنوں کا اکلو تا بھائی تھا کو اپنے ہی گھر سے تھو ڑی دوری پر نامعلوم افراد نے اغوا کرنے بعد لاپتہ کردیا جس کے بعد عمر کی تلاش شروع کی گئی تاہم اس کا اتہ پتہ نہیں ملا جس کے بعد پورے علاقہ میں عمر کے اغوا کے حوالہ سے تشویش کی لہر دوڈ گئی ۔اغوا کرنے کے چند دن بعد عمر کی لاش نالہ کہمیل کے کنارے گوشی کے مقام سے بر آمد کی گئی ۔اس سلسلہ میں پولیس نے اقدام قتل کے نسبت ایک کیس درج کر کے تحقیقات شروع کی تاہم قاتلو ں کا سراغ نہیں ملا اور کیس کو کرائم برانچ کے حوالہ کیا گیا ۔لواحقین کا کہنا ہے کہ کرائم برانچ بھی آج تک حقیقت کو سامنے لانے میں ناکام ہو گی اور ایک سال کے دوران انہیں انصاف نہیں ملا جس کے لئے انہیں سخت افسوس ہے ۔عمر کی والدہ کا کہنا ہے کہ عمر کو اغوا کرنے بعد کیونکر قتل کیا گیا اور اس معصوم کا کیا قصور تھا جو اس کو بے دردی سے قتل کیا گیا ۔انہو ں نے کہا کہ آج بھی ہم انصاف کے طلب گار ہیں اور ہر گزرتا دن ان کے لئے کسی قیامت سے کم نہیں ہے کیونکہ ان کے اکلوتے لخت جگر کو ان سے جد ا کیا گیا ۔اس موقع پر عمر فاروق کی پہلی برسی پر ان کی یاد میں گلگام میں ایک دعائیہ مجلس کا اہتمام کیا گیا ۔عوامی اتحاد پارٹی کے سر براہ نے گلگام جاکر متا ثرین سے ہمدردی کا اظہار کیا ۔انہو ں نے کہا کہ ایک سال گزر جانے کے باوجود بھی پولیس عمر کے قتل میں ملو ث افراد کو گرفتار کرنے میں ناکام ہو گئی جو ایک المیہ ہے ۔انہو ں نے کہا کہ پولیس کو انسانیت کی بنیادو ں پر عمر کے قتل میں ملو ث قصوروارو ں کو پکڑنا چایئے۔انہو ں نے کہا کہ کرائم برانچ کشمیر عمر فاروق کے قتل کیس میں مزید تا خیر نہ کریں کیونکہ اس دلدہلانے والے قتل نے سب کو ہلا کر رکھ دیا ۔