تازہ ترین

ززنہ گاندربل کی فروٹ منڈی | نہ بنیادی ڈھانچہ بن سکا نہ ہی کاروبار شروع ہوسکا

12 جولائی 2019 (52 : 11 PM)   
(      )

ارشاد احمد
گاندربل//گاندربل کے مضافاتی علاقہ ززنہ میں موجود فروٹ منڈی کو سال 2016 میں تیار کرکے عوام کے نام وقف کردیا گیا تھا لیکن تب سے آج تک تین سال گزرنے کے باوجود نہ ہی تعمیر و تجدید کا کام ہاتھ میں لیا گیا اور نہ ہی بنیادی سہولیات کی جانب توجہ مبذول کرائی گئی جس وجہ سے میوہ صنعت سے وابستہ بیوپاریوں کو گوناگوں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔فروٹ منڈی ززنہ جہاں ضلع بھر کے مختلف علاقوں کے فروٹ بیوپاری اپنے پیداوار کو فروخت کرکے روزی روٹی کمارہئے ہیں۔رواں سال ماہ جون سے منڈی میں کاروبار شروع ہوگیا لیکن ضلع انتظامیہ کی عدم توجہی کے باعث میوہ صنعت سے وابستہ بیوپاریوں کو بنیادی سہولیات کی عدم دستیابی کی وجہ سے گوناگوں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ززنہ فروٹ منڈی میں گزشتہ سال 60 کروڑ روپیہ کا مختلف اقسام کا میوہ فروخت کیا گیالیکن اس وقت منڈی کے احاطے کو آج تک نہ ہی میگڈم بچھایا گیا ہے اور نہ ہی دیگر کام ہاتھ میں لئے گئے۔بیوپاریوں کا کہنا ہے کہ لایئٹس کی عدم دستیابی کی وجہ سے دیر رات تک کام کرنے سے رہ جاتے ہیں،پینے کے صاف پانی بھی میسر نہیں جبکہ فروٹ منڈی کے ارد گرد تاربندی (فینسنگ)نہ ہونے سے میوہ کی پیٹیاں چوری ہونے کا امکان بھی موجود رہتا ہے۔فروٹ منڈی میں موجود بیوپاریوں نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ ریاستی سرکار نے ززنہ فروٹ منڈی کے قیام کے وقت لاگت کا تخمینہ 8 کروڑ روپیہ بنایا تھا لیکن آج تک منڈی کی تعمیر و ترقی پر صرف ڈھائی کروڑ روپے ہی خرچ کئے گئے ہیں۔ہم گورنر اور ضلع انتظامیہ سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ززنہ فروٹ منڈی کی تعمیر و تجدید کی جانب توجہ مرکوز کی جائے تاکہ میوہ بیوپاریوں کو کسی قسم کی مشکلات درپیش نہ آئے