تازہ ترین

بیک ٹو ولیج ۔ چھٹا دن

دویدی کی عوامی مسائل حل کرنے کی افسران کو تلقین

26 جون 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

جموں//حکمرانی کے عمل کو دیہی آبادی کی دہلیز پر لے جانے کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئے کمشنر سیکرٹری اطلاعات و رابطہ عامہ منوج کمار دویدی نے آج افسران کو ہدایت دی کہ وہ الاٹ کی گئی پنچائتوں میں قیام کر کے لوگوں کے مسائل کا جائیزہ لیں ۔ ججر کوٹلی پنچائت میں ایک تبادلہ خیال کی نشست کے دوران انہوں نے کہا کہ لوگوں کے مسائل حل کرنے کیلئے ضروری ہے کہ مختلف محکمے قریبی تال میل قایم کریں ۔ منوج دویدی نے اراضی سے جُڑے معاملات حل کرنے کی محکمہ مال کو خصوصی ہدایات دیں ۔ انہوں نے محکمہ بجلی کو ہدایت دی کہ وہ ان علاقوںکو بجلی پہنچانے کے اقدامات کرے جو ابھی تک اس سہولت سے محروم ہیں ۔ انہوں نے سکولوں ، ہسپتالوں اور آنگن واڑی مراکز کے علاوہ دیگر محکموں اور اداروں کے کام کاج کا جائیزہ لیا ۔ انہوں نے مقامی لوگوں کے ساتھ تبادلہ خیال کے دوران انہیں مرکزی اور ریاستی سرکاروں کی جانب سے عملائی جا رہی فلاحی سکیموں کے بارے میں جانکاری دی ۔ ججر کوٹلی کی قدرتی خوبصورتی کی تعریف کرتے ہوئے منوج کمار دویدی نے کہا کہ اس علاقے میں سیاحتی سرگرمیوں کو فروغ دینے کی وسیع گنجایش ہے اور اس سلسلے میں ٹھوس اقدامات کئے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ اس سے علاقے کے لوگوں کو روز گار کے وسائل فراہم ہوں گے ۔ منوج کمار دویدی نے اُمید ظاہر کی کہ پنچائتی راج ادارے رقومات کا مثبت اور منصفانہ استعمال کریں گے تا کہ دیہی علاقوں میں ترقیاتی پروجیکٹوں کی موثر عمل آوری کو یقینی بنایا جا سکے ۔ گرام سبھا کے دوران مقامی لوگوں نے ججر کوٹلی میں مصنوعی جھیل قایم کرنے اور سب ہیلتھ سنٹر کو ایکسیڈنٹل ہسپتال میں تبدیل کرنے کے علاوہ ڈگری کالج کے قیام کی مانگ کی ۔ لوگوں نے اپنی دیگر ترقیاتی ضروریات بھی افسر موصوف کے سامنے رکھیں ۔ دریں اثنا مقامی لوگوں نے سوشل ویلفئیر محکمہ کی کمزور کارکردگی کی شکائت کرتے ہوئے کہا کہ اس سے مستحقین کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ مقامی لوگوں نے علاقے میں کچھ عرصہ پہلے قایم کئے گئے ویٹر نری ہسپتال کی عمارت کو استعمال میں لانے کی مانگ کی ۔ انہوں نے کہا کہ اس عمارت کیلئے مقامی لوگوں نے زمین فراہم کی ہے ۔ منوج کمار دویدی نے مقامی لوگوں کے مسائل حل کرنے کیلئے افسروں کو مناسب اقدامات کرنے کی ہدایت دی ۔ اس موقعہ پر اے سی ڈی جموں اعجاز قیصر ، بی ڈی او وشو پرتاپ سنگھ ، سرپنچ ججر کوٹلی رینہ تھاپا اور مختلف محکموں کے افسران موجود تھے ۔ 
کٹھوعہ میں بیک ٹو ولیج پروگرام کے تحت آج مختلف پنچائتی حلقوں میں گرام سبھائیں منعقد کی گئیں ۔ اس کے علاوہ سوشل آڈٹ کمیٹیوں کا قیام عمل میں لایا گیا ۔ ضلع میں چار بلاکوں کی 44 پنچائتوں میں بیک ٹو ولیج پروگرام کے تحت مختلف سرگرمیاں ہوئیں ۔ جرائی ، چنگراں ، کھوکھیال ، گوڈال ، دورانگ اور تھنتھو پنچائت حلقوں میں گرام سبھاؤں کے دوران مقامی لوگوں نے اپنے مسائل اور مطالبات نامزد افسروں کی نوٹس میں لائے ۔ڈپٹی کمشنر وکاس کنڈل نے اے ڈی ڈی سی شبرا شرما ، اے سی ڈی سکھ پال سنگھ اور دیگر افسروں کے ہمراہ کئی پنچائتوں کا دورہ کر کے مقامی لوگوں کو ورمن کمپوسٹ یونٹ قایم کرنے کی تلقین کی ۔ مقامی لوگوں کو بتایا گیا کہ دیہات کی ترقی اور خوشحالی کیلئے پنچائتوں کو بااختیار بنایا گیا ہے ۔ نامزد افسروں نے مختلف سکیموں کے تحت مستحقین میں ایم جی نریگا جاب کارڈس اور رسوئی گیس کنیکشن تقسیم کئے ۔ اس موقعہ پر صفائی ستھرائی کی مہمات کا بھی آغاز کیا گیا ۔ نامزد افسروں نے طبی اداروں اور آنگن واڑی مراکز کا بھی دورہ کیا اس موقعہ پر سرپنچوں کے نام وزیر اعظم کا پیغام بھی پڑھ کر سُنایا گیا ۔ 
سانبہ ضلع ترقیاتی کمشنر سشما چوہان نے ضلع افسران کے ساتھ ایک میٹنگ منعقد کی اور کل منعقد ہونے والے بیک ٹو ولیج پروگرام کے تیسرے مرحلے کے لئے تیاریوں کا جائزہ لیا۔میٹنگ میں اے ڈی سی وِکاس گپتا ، پروگرام آفیسر آئی سی ڈی ایس پروجیکٹ جوتی لانی سلاتھیہ ، اے سی ڈی مدثر لطیف تاثیر ، ایس ڈی ایم وِجے کمار کے علاوہ دیگر محکموں کے اعلیٰ افسران اور پروگرام کے نوڈل افسران موجود تھے۔میٹنگ میں تیسرے مرحلے کے دوران سرگرمیوں پر سیر حاصل بحث ہوئی۔ میٹنگ میں بتایاگیا کہ سانبہ ، پر منڈل اور وِجے پور کے تین بلاکوں سے تعلق رکھنے والی 35پنچایتوں کو تیسرے مرحلے کے فلیگ شپ پروگرام میں لایا جائے گا۔ڈی ڈی سی کو بتایا گیا کہ ہرایک محکمہ مختلف بیداری کے پروگرام پنچایت اور دیہی سطح پر عمل میں لائے گا جن میں شجر کاری ، کھیل کود ، مختلف پروجیکٹوں کا افتتاح اور بیداری پروگرام شامل ہے ۔ پروگرام کے تیسرے مرحلے میں صنعت و حرفت کے پرنسپل سیکرٹری نوین کمار چودھری سانبہ بلاک کے چگوال پنچایت کے نامز د افسر ہوں گے۔پروگرام میں نکڑ ناٹک ، کھیل کود ، کنوئوں ، بیت الخلائوں ، کھیل کے میدانوں کا افتتاح ، کسانوں کے لئے تربیتی پروگرام و گرام سبھائیں شامل ہوں گی۔
اودھمپور میں بیک ٹو ولیج  پروگرام کے چھٹے دِن 115پنچایتوں میں سے 112پنچایتوں میں مختلف پروگرام عمل میں لائے گئے۔ اس دوران گرام پنچایتیں ، عوامی بنیادی ڈھانچوں ، سکولوں ، راشن ڈیپوئوں ، آنگن واڑی مراکز کے علاوہ سکولوں میں مڈ ڈے میل پروگرام ،شجرکاری و صفائی کی مہم عمل میں لائی گئی ۔دیگر سرگرمیوں میں سوئیل ہیلتھ کارڈ ، جاب کارڈ ، کے سی سیز کی تقسیم کاری ، پی ایم اے وائی مکانات و کھیل کے میدانوں کا افتتاح ،سماجی آڈٹ کمیٹیوں کی تشکیل بھی عمل میں لائی گئی۔مال کے فائنانشل کمشنر ڈاکٹر پون کوتوال نے بلاک پنچاری کے اَپر میر پنچایت کے دورے کے دوران مقامی لوگوں کے ساتھ استفسار کیا اور لوگوں کو بچوں کے صحت قائم رکھنے و دیگر صحت و صفائی سے متعلق جانکاری فراہم کی۔انہوں نے پنچایت راج اداروں کے ممبران پر زور دیا کہ وہ علاقے کے پانی کے ذخائر کو محفوظ رکھنے کے اقدامات کریں۔مقامی لوگوں نے اس موقعہ پر کئی مسائل پیش کئے اور ان کا ازالہ کرانے کا مطالبہ کیا۔دریں اثنا ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر پیوش سنگلا نے ضلع کی کئی پنچایتوں کا تفصیلی دورہ کیا اور بیک ٹو ولیج پروگرام کی عمل آوری کا جائزہ لیا۔ انہوں نے نامز د افسروں پر زور دیا کہ وہ اس پروگرام کی صد فیصد عمل آوری یقینی بنائیں اور لوگوں کی ترقیاتی ضروریات کا جائزہ لیا۔مقامی لوگوں نے حکومت کی کاوشوں کو سراہا اور اس پروگرام میں جوش و خروش کے ساتھ حصہ لیا۔اس کے علاوہ ڈائریکٹر ٹیکنیکل ایجوکیشن روی شنکر نے چھنی تحصیل مجالٹا کا دورہ کیا اور اسی طرح محکمہ سیاحت جموں کے ناظم او پی بھگت نے پنچایت ڈلسار جب کہ ڈائریکٹر باغبانی جموں راج کمار کٹوچ نے مانسر پنچایت کا دورہ کیا۔