تازہ ترین

خوش قسمت

افسانچہ

23 جون 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

ڈاکٹر بشیر احمد گلزار پوری
’تین سال ہوئے ہماری شادی کو۔۔۔‘
فہمیدہ اپنی سہیلیوں کے درمیان چہک چہک کر باتیں کررہی تھی۔
’کیا بتائوں، میں کتنی خوش قسمت ہوں، 
آ ج کل وہ جونہی دفتر سے گھر لوٹتے ہیں، تو سیدھے کچن میں آکر مجھے۔۔۔۔ 
پہلے پہل تو آتے ہی بات بے بات پر آسمان سر پر اُٹھاتے ، 
چیزیں الٹ پلٹ کر رکھ دیتے، موقع بے موقع مجھ سے جھگڑتے رہتے۔ 
آج کل وہ بھیگی بلی بن کر ۔۔۔۔۔، 
واقعی میں بہت خوش ۔۔۔۔۔
کیا بتائوں، صبح اگر میں کوئی چیز مانگوں تو شام تک میری فرمائش۔۔۔۔۔
پہلے تو گھر سے باہرمجھے قدم رکھنے ہی نہیں دیتے تھے، 
آج اگر میں ہفتہ بھر بھی میکے میں گزاروں، وہ کبھی ناراض نہیں ہوتے، اُف تک نہیں کرتے۔ 
کسی بھی بات پر شکایت کرنے کا موقع نہیں دیتے، 
کیا بتائوں میں کتنی خوش قسمت ہوں۔۔۔
کل ہی میرے لئے ایک بہت ہی قیمتی نیا موبائل خرید کے لائے،
آج نہ جانے کس جلدی میں تھے کہ اپنا فون گھر میں ہی بھول گئے۔‘‘
یہ کہہ کر فہمیدہ جھٹ اپنے ہسبنڈ کے کمرے میں گئی۔
اپنا اور اپنے خاوند کا موبائل فون لاکر سہیلیوں کو دکھانے لگی،سب سہیلیاںفون کو الٹ پلٹ کرکے دیکھنے لگیں،
ایک سہیلی کی نظریں اس کے خاوند کے فون کے سکرین پر ٹکیں اور اُس پر سولہ بار مِس کال دیکھ کر ذرا ٹھٹکی۔
اچانک پھر فون کا رنگ ٹیون بج اُٹھا،
اُس نے فوراً فون فہمیدہ کے ہاتھ میں تھما دیا۔
فہمیدہ نے تیزی سے بٹن دبایا،
’’ڈیر ڈیول(Dear Devil)کیا صرف دو مہینوں میں ہی اُکتا گئے۔۔۔ جب سے دفتر پہنچی ہوں،سولہ بار فون کرچکی ہوں۔۔۔۔‘‘
’’خوش قسمت‘‘ بیوی نے چپکے سے فون بند کردیا۔
موبائل نمبر؛9906575631