اچھ بل اننت ناگ میں مسلح تصادم میں 3اہلکار مضروب،میجر اور جنگجو جاں بحق

آر ی ہل پلوامہ میں بارودی دھماکہ،6فوجی اہلکاراور2شہری زخمی

18 جون 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

عارف بلوچ +سید اعجاز
اننت ناگ+پلوامہ//اننت ناگ اور پلوامہ میں پیش آئی ملی ٹنسی کی دو الگ الگ وارداتوں میں ایک میجر اور غیر مقامی جنگجو جاں بحق ہوئے جبکہ 9اہلکار اور دو مضروب ہوئے ہیں.بدوڈ اچھ بل میں جنگجوؤں اور فورسز کے درمیان کئی گھنٹوں تک جاری رہنے والی جھڑپ میں ایک غیر ملکی جنگجواورفوج کا کیپٹن ہلاک ہوگئے ہیں جبکہ تصادم آرائی کے دوران میجر سمیت 3 اہلکار زخمی ہوگئے ۔مسلح جھڑپ کے دوران مشتعل نوجوانوں اور فورسز اہلکاروں کے بیچ پرتشددجھڑپیںہوئی جبکہ ضلع میں موبائل انٹرنیٹ سروس معطل رکھی گئی۔سوموار صبح 19 آر آر، سی آرپی ایف اور پولیس کے اسپیشل گروپ نے بدوڈا اچھ بل نامی گاؤں کو محاصرہ میں لیکر تلاشیاں شروع کیں ۔ معلوم ہوا کہ فورسز کو گائوں میں جنگجوئوں کی موجودگی کی مصدقہ اطلاع موصول ہوئی تھی جس کے بعد فورسز کی مشترکہ پارٹی نے گائوں کے ارد گرد سخت محاصرہ عمل میں لاکر فرار کے تمام ممکنہ راستوں پر سخت پہرے بٹھادئے۔ اس دوران تلاشی پارٹی نے جونہی گائوں کے اندر داخل ہوکر چند رہائشی مکانات کی تلاشی لی تو عین اسی دوران قریبی مکان میں موجود جنگجوئوں نے مکان کے اندر سے تلاشی پارٹی پر خود کار ہتھیاروں سے زبردست فائرنگ شروع کی ۔ اس موقعے پر فورسز نے مذکورہ مکان کے ارد گرد گھیرائو کو تنگ کرتے ہوئے جنگجوئوں کی فائرنگ کا جواب دیا جس کے ساتھ ہی گائوں میں جنگجوئوں اور فورسز کے درمیان جھڑپ کا آغاز ہوگیا۔ گائوں میں موجود فورسز دستوں نے اس موقعے پر فورسز کی اضافی کمک کو طلب کرتے ہوئے یہاں جگہ جگہ فورسز کو الرٹ کردیا اور کسی بھی شخص کو باہر آنے کی اجازت نہیں دی۔ اس دوران طرفین کے درمیان گولیوں کا تبادلہ وقفے وقفے سے جاری رہا۔ فوجی ذرائع نے بتایا کہ جھڑپ کی جگہ کے ارد گرد فورسز اہلکاروں نے دوپہر سے قبل تلاشی کارروائی کا سلسلہ شروع کیا تو یہاں 2جنگجوئوں کی لاشیں پائی گئی۔ انہوں نے کہا کہ جنگجوئوں کی شناخت اور تنظیمی وابستگی سے متعلق تحقیقات عمل ہنوز جاری ہے۔
اس دوران جھڑپ کے مقام کی تلاشی لینے کے دوران یہاں ملبے کے اندرموجود جنگجو نے فورسز پر زبردست فائرنگ کی جس کے نتیجے میں فوجی میجر سمیت 4اہلکار شدید طور پر زخمی ہوئے۔ پولیس ذرائع کا کہنا تھا کہ مقام جھڑپ کی تلاشی لینے کے دوران یہاں تیسرے جنگجو نے فورسز پر فائرنگ شروع کی جس کے نتیجے میں میجر سمیت 4اہلکار گولیاں لگنے سے زخمی ہوگئے۔ انہوں نے بتایا کہ زخمی ہوئے اہلکاروں کو قریب ہی واقع فوجی ہسپتال منتقل کیا گیا تاہم یہاں کیپٹن چیتن شرما زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھا۔ انہوں نے بتایا دیگر زخمی اہلکاروں کا فوجی ہسپتال میں علاج و معالجہ جاری ہے۔اس دوران معلوم ہوا کہ گائوں میں جھڑپ شروع ہونے کے ساتھ ہی بڈورہ اکنگام اور متصل بستیوں سے نوجوانوں کی مختلف ٹولیوں نے سڑکوں کا رخ کرکے فورسز کارروائی کے خلاف جم کر نعرے بازی کی۔مظاہرین نے اس موقعے پر فورسز کارروائی میں رخنہ ڈالنے کی کوشش کرتے ہوئے مقام جھڑپ کی جانب پیش قدمی شروع کی تاہم یہاں تعینات فورسز اہلکاروں نے مظاہرین کی کوشش ناکام بناتے ہوئے آنسو گیس کے درجنوں گولے داغنے کیساتھ ساتھ پیلٹ فائرنگ کی جس کے ساتھ ہی گائوں میں افرا تفری کے ماحول میں مزید اضافہ دیکھنے کو ملا۔ اس دوران ضلع بھر میں امن و قانون کی صورتحال کو برقرار رکھنے کیلئے انتظامیہ نے سوموار صبح سے ہی موبائل انٹرنیٹ سروس بند کردی ۔معلوم ہوا کہ بڈورہ اچھ بل اور مضافاتی علاقوں میں جھڑپ کے پیش نظر مکمل ہڑتال سے معمولات کی زندگی بری طرح سے متاثر ہوکر رہ گئی۔ ادھر پلوامہ کے آری ہل علاقے میں جنگجوئوں کی جانب سے زیر زمین بچھائی گئی بارودی سنگ کا لرزہ خیز دھماکہ ہوا جس میں 6فوجی اہلکار اور 2 عام شہری زخمی ہوئے جن کو فوری طور اسپتال منتقل کیا گیا ۔اس دوران دھماکے کے بعد دیگر اہلکاروںنے شدید فائرنگ کی جس کے نتیجے میں علاقے میں خوف و ہراس کا ماحول پیدا ہوا۔ادھر فورسز نے واقعے کے فوراً بعد علاقے میں پہنچ کر حملہ آوروں کی تلاش تیز کر دی ہے۔
سرینگر میں مقیم دفاعی ترجمان نے میڈیا کو بتایا کہ یہ کوئی حملہ نہیں تھا البتہ ایک گاڑی دھماکے کے زد میں آئی ہے جس کے نتیجے مں کچھ اہلکاروں کو معمولی چوٹیں آئیں۔ انہوں نے افواہوں کو مسترد کیا۔جنوبی کشمیر کے ضلع پلوامہ کے آری ہل علاقے میں سوموار کی شام اس وقت خوف و دہشت کا ماحول پیدا ہوا جب علاقے میں شام کے 6:30 بجے کے قریب فوج کے44آر آر سے وابستہ کچھ گاڑیاں کیمپ کی طرف جا رہی تھی جس دوران جب قافلہ لار پل کے نذدیک پہنچا تو اس دوران ایک زوردار دھماکہ ہوا جس کے نتیجے میں فوجی گاڑی (ٹرک) کو شدید نقصان پہنچا جبکہ گاڑی میں سوار 6فوجی اہلکار اور2 عام شہری زخمی ہوئے جن کو فوری طور اسپتال منتقل کیا گیا . ذرائع نے بتایا زخمیوں میں بعض اہلکار شدید زخمی ہوئے ہیں ۔اس دوران ایک عام شہری عبد الاحد میر بھی زخمی ہوا ہے جس کو اسپتال منتقل کیا گیا ۔ مقامی لوگوں نے بتایا ہم شام کے قریب علاقے میں ایک زوردار دھماکے کی آواز آئی جس کے نتیجے میں دور دور تک کے علاقے دہل اٹھے جس کیساتھ ہی شدید فائرنگ سنائی دی جو کچھ دیر جاری رہی جس کے نتیجے میں علاقے میں زبردست خوف و دہشت کا ماحول پیدا ہوا اور عام لوگ گھروں میں سہم ہو کر رہ گئے۔واقعے کے فوراً بعد فورسز کی ایک بڑی تعداد کو علاقے میں طلب کیا گیا۔ اگر چہ حملے کو ابتدائی طور کار بل حملہ بتایا گیا تاہم سرکاری سطح پر اسکی کوئی تصدیق نہیںہوئی ۔جبکہ سرینگر میں مقیم فوجی ترجمان راجیش کالیا نے میڈیا کو بتایا یہ ایک ناکام حملہ تھا جس کو ناکام بنایا گیا ہے ۔انہوں بتایا اس واقعے میں کچھ اہلکاروں کو معمولی چوٹیں آئی۔ ترجمان کے مطابق جنگجوئوں کے حملے کو فوج نے ناکام بنا دیا ہے۔ انہوں نے کہا ایک موبائیل گاڑی دھماکہ کی زد میں آئی جس دوران کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔ 
 

تازہ ترین