تازہ ترین

اسمبلی چنائو میں این سی اور پی ڈی پی کو سبق سکھانے کی ضرورت: انجینئر

17 جون 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیو ڈسک
بارہمولہ//عوامی اتحاد پارٹی کے صدر انجینئر رشید نے لوگوں سے انکی ذمہ داریاں سمجھنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ نیشنل کانفرنس ،پی ڈی پی اور دیگر روایتی سیاسی جماعتوں کواستحصالی پالیسی کیلئے سبق سکھانے کی ضرورت ہے۔ڈاک بنگلہ بارہمولہ میں پارٹی کارکنوں کے کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے انجینئر رشید نے کہا کہ نیشنل کانفرنس ہر بار لوگوں کو بیوقوف بناکر انکی پیٹھ میں چھرا گھونپنے کے باوجود بھی ان سے ووٹ مانگتی رہی ہے لیکن اب ایسا نہیں ہونے دیا جانا چاہیئے۔انہوں نے کہا’’نہ صرف یہ کہ اٹانومی کا نعرہ فرسودہ ہوچکا ہے بلکہ نیشنل کانفرنس اس نعرے کو ابہام پیدا کرنے اور کشمیریوں کے اصل جذبات و خواہشات کو کمزور کرنے کیلئے استعمال کررہی ہے،یہ ایک ہمالیائی حقیقت ہے کہ نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی کے بیشتر لیڈروں نے رشوت خوری اور کنبہ پروری سے اداروں کی معتبریت کو ختم کرکے بھاری جائیدادیں کھڑا کی ہیں اوراپنے گھر آباد کئے ہیں‘‘۔انجینئر رشید نے کہا کہ عمر عبداللہ کو بھاجپا کے خلاف لوگوں کے جذبات ابھارنے کی کوشش کرنے سے قبل یہ بات یاد کرلینی چاہیئے کہ وہ خود بھاجپا سرکار میں وزیر رہ چکے ہیں۔انہوں نے کہا کہ عمر عبداللہ ابھی اسمبلی میں کچھ سیٹیں حاصل کرنے کیلئے جذباتی سیاست کرنے کی کوشش کررہے ہیں لیکن انتخابی نتائج کے بعد اس بات پر تعجب نہیں ہونا چاہیئے کہ اگر نیشنل کانفرنس نے پی ڈی پی کی طرح بھاجپا کے ساتھ اشتراک کرکے ’’قطبین کا ملاپ‘‘کرلیا کیونکہ مسلم کانفرنس کو نیشنل کانفرنس میں بدلنے سے لیکر محاذ رائے شماری کی تدفین اور گندی نالی کے کیڑوں کو گلے لگانے سے لیکر نئی دلی کے ساتھ غیر حقیقت پسندانہ الحاق کرنے تک نہ صرف اس پارٹی کی شرارتوں کی تاریخ لمبی ہے بلکہ اس نے ان شرارتوں اور سرنڈروں کو جواز بخشنے کی بھی ہمیشہ کوشش کی ہے۔انجینئر رشید نے کہا کہ ’’نیشنل کانفرنس کی ہی طرح پی ڈی پی سے کسی اچھائی کی امید رکھنا سفیدے کے پیڑ سے سیب کا پھل پانے کی امید کرنے کے مترادف ہے کیونکہ یہ پارٹی کانگریس کی کوکھ سے ہی پیدا ہوئی ہے جو بذات خود فساد کی اصل جڑ ہے‘‘۔انجینئر رشید نے کہا’’نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی کیلئے سب سے بڑا مسئلہ یہ ہے کہ یہ پارٹیاں اقتدار میں کیسے آئیں گی لیکن ایک عام کشمیری کا سب سے بڑا مسئلہ یہ ہے کہ مسئلہ کشمیر کا منصفانہ،دیرپا اور آبرومندانہ حل کیسے نکلتا ہے کیونکہ اس مسئلے نے نہ صرف کروڑوں لوگوں کا ذہنی سکون چھین لیا ہے بلکہ اسکی وجہ سے لاکھوں انسانی جانیں بھی ضائع ہوتی آرہی ہیں‘‘۔انہوں نے کہا کہ شمالی کشمیر کے لوگوں نے لوک سبھا کے حالیہ انتخاب میں دکھایا دیا ہے کہ ناممکن کچھ بھی نہیں ہے اور یہ کہ کشمیری عوام اپنے موافق تبدیلی لانے کی ہمت اور حوصلہ رکھتے ہیں۔اس دوران انجینئر رشید نے جموں کشمیر بنک کو آرٹی آئی ایکٹ کے دائرے میں لانے کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ نظام میں شفافیت اورجوابدہی پیداکرنے کے ہر اقدام کا خیر مقدم کیا جانا چاہیئے۔کنونشن میں پارٹی لیڈر اشتیاق قادری،شیبان عشائی،میرخورشید،محمد رفیق بٹ،ملک طارق رشید اور دیگراں نے بھی خطاب کیا۔