تازہ ترین

شاہراہ پر پابندیاں ہٹائی گئیں

سرکاری فیصلے کا اطلاق 27فروری سے ہوگا

22 مئی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
سرینگر//ریاست میں سیکورٹی صورتحال اور حفاظتی دستوں کی ضرورت کا جائزہ لینے کے بعد ریاستی گورنر نے سرینگر جموں قومی شاہراہ پر عام گاڑیوں کے چلنے پر عائد پابندی کو 27 مئی 2019 سے مکمل طور ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ پلوامہ حملے کے بعد سیکورٹی فورسز کی نقل و حمل مدِ نظر رکھتے ہوئے یہ پابندیاں لازمی بن گئی تھیں ۔ ریاست میں امن و قانون برقرار رکھنے اور عام انتخابات کے انعقاد کیلئے اضافی فورسز کی ضرورت پڑی تھی ۔ فورسز کی کانوائی کی بلا خلل آوا جاہی کو یقینی بنانے کیلئے شاہراہ کے بارہمولہ سے اودھمپور تک کے حصے پر سول ٹریفک کے چلنے پر ہفتے میں دو بار اتوار اور بدھ کو صبح چار بجے سے شام پانچ بجے تک پابندی عائد کی گئی تھی تا ہم پابندی کے دوران مجبوری کی حالت میں سول ٹریفک کے چلنے کیلئے مقامی انتظامیہ نے مناسب انتظامات کئے تھے ۔ اس سے قبل 22  اپریل 2019 کو شاہراہ کے سرینگر بارہمولہ حصے پر عائد پابندی میں نرمی برتی گئی اور اس کو صرف ہر اتوارتک محدود کیا گیا تھا اور بعد میں 2 مئی 2019 سے یہ پابندی مکمل طور ہٹائی گئی تھی جبکہ سرینگر اودھمپور حصے پر عائد پابندی کو 13 مئی 2019 سے نرم کر کے ہفتے میں ایک دن تک محدود کیا گیا تھا ۔ تمام سیکورٹی ایجنسیوں ، پولیس و سول انتظامیہ کے ساتھ تفصیلی تبادلہ خیال کے بعد گورنر نے امر ناتھ  یاترا کے احسن انعقاد کیلئے 27 مئی 2019 سے شاہراہ پر عائد پابندیاں مکمل طور ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ گورنر نے اس سلسلے میں لوگوں کے تعاون کیلئے اُن کا شکریہ ادا کیا ہے ۔