تازہ ترین

مزید خبریں

19 مئی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیو ڈسک

مقدس ایام میں بھی عوام امن و سکون سے محروم

وادی کو آ گ و آہن کے سپرد کردیا گیا:صحرائی

سرینگر// تحریک حریت چیئرمین محمد اشرف صحرائی نے پنزگام پلوامہ کے خونین معرکہ میں جاں بحق ہوئے جنگجوئوں شوکت احمد (پنزگام )، عرفان احمد ( سوپور) اور مظفر احمد ( ٹہاب ) کو خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ پوری وادی کو بالعموم اور جنوبی کشمیر کو بالخصوص آگ و آہن کے حوالے کیا گیا ہے۔اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ نوجوانوں کو گولیوں سے بھونا جارہا ہے ،مکانات کو بموں اور بارود سے اُڑایا جاتا ہے ۔صحرائی نے کہا کہ بستی بستی فوجی محاصرے تلاشیاں ،چھاپے ،گرفتاریاں اور ہلاکتوں کا سلسلہ جاری ہے ۔انہوں نے کہا کہ  بھارتی حکمرانوں نے جموں کشمیر میں نسل کشی کا سلسلہ تیز کیا ہے۔صحرائی نے کہا کہ جموں کشمیر کے عوام سات دہائیوں سے حصول حق خود ارادیت کی جدوجہد میں مصروف ہیں اورجدوجہد آزادی کی اس راہ میں آج تک لاکھوں لوگوں نے جانی و مالی قربانیاں دی ہیں لیکن بھارت نے جموں کشمیر کے مطالبہ حق خود ارادیت کو کبھی بھی خاطر میں نہیں لایا۔انہوںنے کہا کہ رمضان کے اس مقدس مہینے میں بھی لوگوں کو امن و سکون سے روزہ رکھنے کے مواقع سے محروم کیا جارہا ہے ۔بیان کے مطابق پنزگام کی بستی کو رات بھر محاصرے میں رکھ کر شدید عذاب میں مبتلا کیا گیا ، نہتے شہریوں پر طاقت کا بیجا استعمال کیا گیا ۔ ٹیر گیس شیلنگ اور پیلٹ گن سے درجنوں جوانوں کو زخمی کردیا گیا ۔صحرائی نے فورسز کی ان کاروائیوں کی مذمت کی اورجاں بحق ہوئے جوانوں کے درجات کی بلندی کے لئے دعا کی ۔
 
 
 

پٹن ہلاکت کے خلاف سرینگر میں احتجاج

ملوث اہلکاروں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ

سرینگر// بانڈی پورہ سمبل کی معصوم بچی کو مبینہ جنسی تشدد کا نشانہ بنانے کے خلاف احتجاج کے دوران نوجوان کی ہلاکت میں ملوث اہلکاروں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے پٹن کے نوجوانوں نے سرینگر میں احتجاج کیا۔احتجاجی نوجوانوں نے سنیچر کو سرینگر کی پریس کالونی میں احتجاج کرتے ہوئے مہلوک نوجوان کے اہل خانہ کو انصاف فرہم کرنے کا مطالبہ کیا۔احتجاجی مظاہرین نے ہاتھوں میں بینر اور پلے کارڑ اٹھا رکھے تھے،جن پر مہلوک نوجوان کی تصویر کو چسپاں کیا تھا۔احتجاجی مظاہرین جان بحق نوجوان کے حق میں نعرہ بازی کر رہے تھے۔ مظاہرین نے الزام عائد کیا کہ ارشد کو تشدد کا نشانہ بنا کر لقمہ اجل بنایاگیا۔انہوں نے کہا’’ واقعہ پر پرامن احتجاج ہو رہا تھااور وہ بھی شاہراہ سے آدھ کلو میٹر اندر مقامی بستی میں،جس دوران اہلکار علاقے میں داخل ہوئے اوراندھا دھند ٹیر گیس شلنگ کی،جس کی زد میں ارشد احمد بھی آگیا اور وہ لقمہ اجل بن گیا‘‘۔ احتجاجی مظاہرین نے کہا کہ اس واقعہ کی باریک بینی سے تحقیقات کی جائے اور ملوث اہلکاروں کو سزا دی جانی چاہئے۔ احتجاجی مظاہرین کا کہنا تھا ’’کہ دانستہ طور پر وادی میں امن و قانون کے ماحول کو درہم برہم کیا جا رہا ہے اور نوجوانوں کو پشت بہ دیوار کیا جا رہا ہے‘‘۔
 
 
 

پارلیمانی انتخابات2019 | کرگل میں ووٹ شماری کیلئے عملے کی تربیت

کرگل//کانفرنس ہال بارو کرگل میں ووٹ شماری کے سلسلے میں عملے کو تربیت دی گئی۔اے ڈی سی کرگل، ڈپٹی ضلع چناؤ افسر، اے آر اوز، کاؤنٹنگ سُپر وائزر، کاؤنٹنگ اسسٹنٹ اور مائیکرو ابزرورز نے تربیتی پروگرام میں شرکت کی۔اس پروگرام کا انعقاد ای سی آئی کے رہنما خطوط کے عین مطابق کیا گیا تا کہ23 مئی2019 کو ہونے والی ووٹ شماری کا کام احسن طریقے پر منعقد کیا جاسکے۔اہلکاروں کو ای وی ایم، وی وی پی اے ٹی کے بارے میں برسر موقعہ جانکاری دی گئی۔ریٹرنگ افسر لداخ پارلیمانی حلقہ اور ڈی ای او لیہہ این وی لواسہ نے کاؤنٹنگ عملے پر زور دیا کہ وہ تمام رہنما خطوط کو مکمل طور سے سمجھ کر مزید تندہی اور لگن کے ساتھ اپنے فرائض کی انجام دہی کو یقینی بنائیں۔اس موقعہ پر ڈی ای او کرگل بصیر الحق چوہدری نے اہلکاروں کو ہدایت دی کہ وہ اپنے آپ کو ای وی ایم اور وی وی پی اے ٹی سمیت ای سی آئی کے دیگر رہنما خطوط سے ہمکنار کرائیں تا کہ ووٹ گننے کا عمل خوش اسلوبی سے اختتام کو پہنچے۔تربیتی پروگرام کے بعد ماہرین نے تربیت پانے والے عملے کے استفسارات کا بھی جواب دیا۔
 
 
 
 
 

خورشید گنائی کا بارہ مولہ کا دورہ | اے ڈی پی کے تحت پیش رفت کا جائیزہ لیا

بارہ مولہ//گورنر کے مشیر خورشید احمد گنائی نے کل پرنسپل سیکرٹری منصوبہ بندی روہت کنسل کے ہمراہ بارہ مولہ کا دورہ کر کے وہاں ایک میٹنگ کے دوران اے ڈی پی کے تحت مختلف پروجیکٹ کے کام کی پیش رفت کا جائیزہ لیا۔میٹنگ میں ڈپٹی کمشنر بارہ مولہ ڈاکٹر جی این یتو، ایس ایس پی اور مختلف محکموں کے سربراہوں نے شرکت کی۔اس موقعہ پر ڈپٹی کمشنر نے مشیر موصوف کو مختلف پروجیکٹوں کی صورتحال کے بارے میں جانکاری دی۔انہوں نے کہا کہ بیشتر پروجیکٹوں پر کام مکمل کیا گیا ہے جبکہ چند ایک تکمیل کے مختلف مراحل میں ہیں۔مشیر موصوف نے کاموں کے بارے میں جانکاری طلب کی جس دوران انہوں نے افسروں پر زوردیا کہ وہ مذکورہ پروگرام کے تحت نشاندہی شدہ مختلف پروجیکٹوں کے بھرپور نتائج حاصل کرنے کے اقدامات کریں۔انہوں نے وسائل کو بھرپور استعمال کرنے پر بھی زور دیا۔دریں اثنا مشیر موصوف سے کئی عوامی وفود ملاقی ہوئے جنہوں نے اپنے مطالبات اُن کے سامنے رکھے۔جن وفود نے مشیر موصوف کے ساتھ ملاقات کی اُن میں گریٹر بارہ مولہ فورم، گردوارہ پربندھک کمیٹی ٹریڈرس فیڈریشن اور اوقاف کمیٹی بارہ مولہ شامل ہیں۔مشیر موصوف نے تمام وفود کو یقین دلایا کہ اُن کے جائیز مطالبات پر ہمدردانہ غور کیا جائے گا۔اس سے قبل مشیر موصوف نے افسروںکے ہمراہ بارہ مولہ کے پُرانے قصبے میں دریائے جہلم کے کنارے واقع شیل پتری مندر پر حاضری دی اور وہاں تجدیدی کام شروع کرنے کے امکانات کا جائیزہ لیا۔اس پوتر استھان کو2017 میں زمین کھسکنے کی وجہ سے نقصان پہنچا تھا۔اس موقعہ پر مشیر موصوف نے مندر انتظامیہ کے ممبران کے ساتھ تبادلہ خیال کیا جنہوں نے کئی مطالبات مشیر موصوف کی نوٹس میں لائے۔مشیر موصوف نے یقین دلایا کہ مندر کی تجدید کے لئے جائیز مطالبات کو متعلقہ افسران تک پہنچایاجائے گا۔
 
 
 

۔23 مئی کو ہونے والی ووٹ شماری  |  آر اوجموں کا پالی ٹیکنک اور ایم اے ایم کالج کا دورہ

جموں//جموں پارلیمانی حلقے کے ریٹرننگ افسر رمیش کمار نے کل پالی ٹیکنک کالج اور ایم اے ایم کالج جموں کا دورہ کر کے وہاں ووٹ شماری کے لئے کئے گئے انتظامات کا جائیزہ لیا۔پالی ٹیکنک کالج جموں اور ایم اے ایم کالج جموں کو ووٹ شماری کے مرکز کے طور نامزد کیا گیا ہے۔جہاں23 مئی کو پارلیمانی انتخابات کے لئے ووٹ شماری ہوگی۔
 
 
 
 

ہائی سکول ترنہ کھڑی محض 4کمروں پر مشتمل 

۔228 بچوں کیلئے ہیڈ ماسٹر سمیت 7اسامیاں برسوں سے خالی ،غریب طلباء کا مستقبل دائو پر 

محمد تسکین
بانہال // ضلع رام بن کے سرکاری سکولوں میں اساتذہ کی کمی کی وجہ سے زیر تعلیم بچوں اور والدین میں سخت تشویش پائی جارہی ہے اور اس تعلیمی سیشن کے کئی ماہ بیت جانے کے باوجود بھی ان سکولوں میں تعلیمی سلسلہ مکمل کرنے کیلئے مکمل انتظامات نہیں کئے جاسکے ہیں ۔تحصیل بانہال سے الگ ہوئی کھڑی تحصیل کے ترنہ ہائی سکول میں  228 بچے زیر تعلیم ہیں جن میں 123 لڑکے اور 105 لڑکیاں ہیںتاہم ان کے بیٹھنے کیلئے جگہ ہی اور نہ ہی پڑھانے کیلئے ضرورت کے مطابق تدریسی عملہ تعینات ہے۔ اس سرکاری ہائی سکول میں تدریسی عملے کی کل 11 اسامیاں موجود ہیں لیکن ان میں سے صرف 4اساتذہ ہی تعینات ہیں اور ہیڈ ماسٹر سمیت 7اسامیاں برسوں سے خالی پڑی ہوئی ہیں جس کی وجہ سے طلباء کی تعلیم بری طرح سے متاثر ہورہی ہے ۔عوامی مطالبے پر مئی 2012 میں اس سکول کو مڈل سے درجہ بڑھاکر ہائی سکول بنایاگیااور تب سے ابتک سکول میں عملے اور سکولی عمارت کی کمی پائی جارہی ہے ۔ترنہ اپر مہو منگت کے سرپنچ محمد رفیق نائیک نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ ہائی سکول کا درجہ بڑھانے کے بعد پہلے تین سال تک اس ادارے میں صرف دو ہی ٹیچر تعینات رہے اور اب پچھلے تین سال سے مزید دو اساتذہ تعینات کئے گئے ہیں لیکن گیارہ اسامیوں میں سے 7خالی ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ حیرانگی کی بات یہ ہے کہ ہیڈ ماسٹر کی اسامی بھی خالی پڑی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سکول کی عمارت سات کمروں پر مشتمل ہے جس میں چار کمرے دس جماعتوں کے زیر استعمال ہیں  جبکہ ایک ایک کمرہ دفتر ، مڈ ڈے میل سٹور اور لیبارٹری کیلئے رکھاگیاہے۔ انہوں نے کہا کہ سکول عمارت اور اساتذہ کی کمی کی وجہ سے 228 غریب بچوں کا مستقبل داؤ پر لگا ہوا ہے اور تعلیم کا نظام راہ راست سے بھٹک چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اساتذہ اور سکول عمارت کی کمی کا اثر ترنہ ترگام کے اس دور افتادہ اور پسماندہ اور غریب عوام پر پڑ رہاہے اور کھڑی کے سیرن ، چھرہ ، کھیل ، آڑا ، لوہارپورہ ، حجام پورہ، ترنہ پنچایت کے AB سے تعلق رکھنے والے غریب بچوں اور والدین کو سکول کی خراب صورتحال نے تشویش میں مبتلا کر رکھا ہے۔ سرپنچ محمد رفیق نے بتایا کہ یہ معاملہ کئی بار زونل اور ضلع تعلیمی حکام کی نوٹس میں لایا گیا مگر کوئی کارروائی نہیں کی گئی جس کے نتیجہ میں غریب طلباء کٹھن مشکلات کاسامناکرنے پر مجبور ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہائی سکول ترنہ کی ایک عمارت 2015 سے زیر تعمیر ہے لیکن نامعلوم وجوہات کی بنا پراسے مکمل نہیں کیاجاسکاہے اور اس کاکام ہی کئی سال سے بند ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہی صورتحال تحصیل کھڑی کے بیشتر پہاڑی علاقوں میں میں قائم دیگرسرکاری سکولوں کی بھی ہے جہاں نظام تعلیم بری طرح سے متاثر ہے۔ انہوں نے کہا کہ اساتذہ اور سکول عمارت کی کمی کے ساتھ ساتھ سکول میں بنیادی سہولیات کا فقدان ہے اورکھیل کود کیلئے میدان اور بچوں کیلئے بیت الخلاء موجود ہی نہیں۔ انہوں نے محکمہ تعلیم کے حکام اور گورنر انتظامیہ سے درخواست کی ہے کہ وہ غریب بچوں کے مستقبل پر رحم کھاکر ہائی سکول ترنہ میں اساتذہ کی کمی کو پورا کریں اور اساتذہ کی کمی میں ملوث افسروں کے خلاف کارروائی کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ اگر اس دور دراز کے علاقے میں قائم سرکاری ہائی سکول میں بچوں کو تعلیمی سیشن میں جاری اساتذہ کی کمی کو پُر نہ کیا گیا تو تنگ آکر لوگ شاہراہ ہر دھرنا دینے پر مجبور ہوں گے۔ رابطہ کرنے پر متعلقہ حکام نے معاملات کی ذمہ داری اعلیٰ حکام پر عائد کردی ۔ایک افسر نے نام مخفی رکھنے کی شرط پر بتایا کہ ترنہ کھڑی کے ہائی سکول میں اساتذہ کی کمی کا معاملہ حکام کی نوٹس میں پہلے ہی لایا گیا ہے لیکن پچھلے دو سال سے کی جارہی درخواست کے باوجود یہاں سٹاف کی کمی کو پورا نہیں کیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ زونل ایجوکیشن دفتر کھڑی سے اس سلسلے میں کی گئی تمام کوششیں ناکام ثابت ہوئی ہیں اور ہائی سکول ترنہ کھڑی کے سینکڑوں غریب بچے سرکاری حکام کی عدم توجہی کا شکار ہیں۔
 
 
 

 یتیموں اوربیوائوں میں خوردنی اشیاء تقسیم

بارہمولہ میں ہیومن ایڈ سو سایٹی کشمیر کا کیمپ

فیاض بخاری
 بارہمولہ //ہیومن ایڈ سو سایٹی کشمیرنے سنیچر کو اپنے ہیڈ آفس واقع دیوان باغ بارہمولہ میں کشمیر ڈیولپمنٹ فانڈیشن یو کے اور ہلپ فانڈیشن جموں کشمیر کے اشترک سے ایک تقریب منعقد کی ۔جس میں ماہ رمضان کے متابرک ایام کے پیش نظر یتیموں ،غریبوں ،بیوائوں اور لاچاروافراد میں میں گھریلواشیائے خوردنی جن میں چاول ،تیل ،آٹا،کپڑے وغیرہ شامل ہے تقسیم کیا گیا جس میں سینکڑوںمرد و، خواتین اور بچے شامل تھے ۔ اس موقع پر کئی لوگوں  کے علاوہ  اِدارہ سے وابسطہ ممبران نے شرکت کی۔ تقریب میں سوسائیٹی کے چیرمین بشیر احمد میرنے سماج میں رہنے والے ذِی حس لوگوں سے اپیل کی کہ وہ اٌن سماجی بدعات کے خلاف صفہ آراہ ہوجائیں جن کی وجہ سے یتیموں اور لاچار لوگوں کی زندہ گی مشکل ہوتی جارہی ہے۔  اِدارہ کے سر پرست اعلی ٰ  حاجی کرامت قیوم نے کہا کہ یتیموں اور مستحق افراد کی امداد کرنا اُن پر کوئی احسان نہیں ہے بلکہ ہم لوگ خوش قسمت ہے کہ خدا نے ہمیں دینے والوں اور لینے والوں کے درمیان بطور پُل چنا ہے ۔
 
 
 

 دُور دراز علاقوں تک آبپاشی سہولیات

سیکرٹری محکمہ زرعی پیداوار کی تمام وسائل کو بروئے کار لانے کی ہدایت

سرینگر//سیکرٹری محکمہ زرعی پیداوار منظور احمد لون نے کل یہاں ایس ایم اے ایم اور پی ایم کے ایس وائی کے تحت طلب کی گئی ریاستی سطح کی ایگزیکٹو کمیٹی میٹنگ کی صدارت کی۔ میٹنگ کا مقصد پی ایم کے ایس وائی کے تحت ایکشن پلان کی منظوری کا جائیزہ لینا تھا۔میٹنگ میں وائس چانسلر سکاسٹ جے ڈاکٹر کے ایس رسم، ڈائریکٹر ایگری کلچر کشمیر سید الطاف اعجاز اندرابی، ڈائریکٹر ایگری کلچر جموں پی ایس راٹھور، ڈائریکٹر ہارٹی کلچر جموں آر کے کٹوچ، ڈائریکٹر ہارٹی کلچر کشمیر اعجاز احمد بٹ، ڈائریکٹر کمانڈ ایریا جموں ڈاکٹر منموہن سنگھ، ڈائریکٹر سریکلچر جے اینڈ کے ریاض احمد اور دیگر متعلقہ افسران بھی موجود تھے۔ سیکرٹری نے ایس ایم اے ایم کا جائیزہ لیتے ہوئے سٹیٹ ایگری کلچر یونیورسٹیوں پر زور دیا کہ وہ محکموں کے سربراہوں کے ساتھ قریبی تال میل رکھتے ہوئے کام کریں اور مشینری، آلات، بیجوں کی خریداری میں آپسی اشتراک رکھیں۔سکاسٹ (جے )اور سکاسٹ (کے) کے لئے اعلیٰ معیار کی سیڈ ٹسٹنگ لیبارٹریوں کے قیام کی تجویز بھی اس موقعہ پر رکھی گئی جس پر468.92 لاکھ روپے لاگت آنے کا اندازہ ہے۔سیکرٹری موصوف نے افسروں کو ہدایت دی کہ وہ آبپاشی سے متعلق تمام وسائل کو بروئے کار لائیں تا کہ ریاست کے دُور دراز علاقوں تک آبپاشی سہولیات پہنچائی جاسکیں۔انہوں نے ہر کھیت کو پانی کی سکیم کے تحت اُن تمام علاقوں تک پانی پہنچانے کی ہدایت دی جہاں ابھی تک یہ سہولیت دستیاب نہیں ہے۔
 
 
 

بچوں کے ساتھ زیادتیاں | چاڈورہ میں اسلامیہ کالج کابیداری پروگرام

چاڈورہ//اسلامیہ کالج آف سائنس اینڈ کامرس نے خیبر پبلک اسکول چاڈورہ کے اشتراک سے بچوں سے زیادتیوں کے موضوع پر ایک بیداری پروگرام وورکشاپ کاانعقاد کیا۔این ایس ایس ونگ اسلامیہ کالج کی سربراہ پروفیسر ریحانہ بٹ نے کہا کہ پروگرام کا مقصد بچوں کو جنسی سمیت مختلف قسم کی زیادتیوں کے بارے میں آگاہ کرناتھا۔ چار سے بارہ سال کے بچوں کے ساتھ بات کرتے ہوئے پروفیسرریحانہ بٹ نے انہیں جسمانی حدودوسلامتی کی تفصیلی جانکاری دی ۔اس موقعہ پر انہوں نے کہا کہ بچوں کے ساتھ زیادتیوں کے95فیصد واقعات کو مناسب معلومات اور بیداری کے ذریعے روکا جاسکتا ہے ۔اس موقعہ پر پروفیسر عرفانہ شفیع نے شکریہ کی تحریک پیش کی جس میں انہوں نے خیبر پبلک اسکول کے شاہ نواز سلطان ،اسٹاف اور این ایس ایس رضاکاروں کا یہ پروگرام منعقد کرانے میں تعاون دینے پر شکریہ ادا کیا۔
 
 
 

اقبال میموریل سکول اجس میں نعتیہ مشاعرے کا انعقاد 

سرینگر//ولراردو ادبی فورم بانڈی پورہ نے کل اقبال میموریل اسکول اجس بانڈی پورہ میں ایک ضلعی سطح کا نعتیہ مشاعرہ بہ اشتراک بزمِ سْخن اجس منعقد جسکی صدارت بزم سخن اجس کے صدر بشیر اجسی نے کی جب کہ ایوان صدارت میں اقبال میموریل سکول کے چیر مین محمد سعداللہ فاروق سمبلی راتھر منظور اور فورم کے صدر طارق شبنم موجود تھے۔مشاعرے میں ساغر سرفراز راتھر مدثر  میر طارق ادارے کے پرنسپل عبدالرزاق مہتاب منظور صیاد منظور فاروق سمبلی نے شرکت کی۔ صاحب صدر نے اپنے خطبے میں فورم کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے مبارک باد پیش کی جب کہ فورم کے صدر طارق شبنم نے اپنے خطبے میں اردو زبان کہ اہمیت اجاگر کرتے ہوئے نوجوان طبقے کو شعر و ادب ذلفیں سنورنے کی فہمائیش کی اس موقعے پر سول سوسائٹی اجس کے چیر مین کے ایم کمال راتھر منظور اور میر طارق نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا آخر پر فہیم جاوید نے مہمانوں کا شکریہ ادا کا مشاعرے کے نظام کے فرائض ح ظہور نے انجام دئے ۔
 
 
 

ڈویثرنل کمشنر جموں نے رِنگ روڈ پروجیکٹ کی پیش رفت کا جائزہ لیا

جموں//ڈویثرنل کمشنر جموں سنجیو ورما نے کل یہاں افسروں کی ایک میٹنگ کے دوران رِنگ روڈ پروجیکٹ کی پیش رفت کا جائیزہ لیا۔میٹنگ میں ڈی سی جموں رمیش کمار، پروجیکٹ ڈائریکٹر این ایچ اے آئی، اجے کمار راجک، اے ڈی سی سانبہ وکاس گپتا اور کئی دیگر افسران بھی موجود تھے۔صوبائی کمشنر نے عمل آوری ایجنسیوں پر زور دیا کہ وہ پروجیکٹ میں حائل تمام رکاوٹوں کو دُور کر کے اس کی بروقت تکمیل کو یقینی بنائیں۔پروجیکٹ منیجر این ایچ اے آئی نے اب تک کے کام کی پیش رفت کے بارے میں جانکاری دی۔ انہوں نے پروجیکٹ کے دیگر معاملات کو بھی اس موقعہ پر اُجاگر کیا۔
 
 
 

با با غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی راجوری میں حمدیہ ونعتیہ نشست

سرینگر//بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی راجوری کے شعبئہ عربی،اردو کے زیر اہتمام ماہ صیام کہ جو رحمت،مغفرت اور جہنم سے خلاصی جیسے عشروں سے تعلق رکھتا ہے ۔اس ماہ کی فضیلت وعظمت کو مدنظر رکھتے ہوئے ایک حمدیہ ونعتیہ نشست منعقد کی گئی جس میں شعبئہ عربی،اردو کے اساتذہ اور طلبہ وطالبات نے شرکت کرکے اللہ تبارک وتعالیٰ کی حمد وثنا کی اور حضرت محمد ﷺ کی شان میں نعتیہ کلام پیش کیا ۔ایوان صدارت میں  شعبئہ عربی،اُردو اوراسلامک اسٹڈیز کے صدر جناب ڈاکٹر شمس کمال انجم،ڈاکٹر مشتاق احمد وانی،ڈاکٹر رفیق انجم اور جناب رشید قمر موجود تھے ۔اس نشست کا آغاز عربی شعبے کے ایک ریسرچ اسکالر عرفان ڈار نے تلاوت کلام پاک سے کیا ۔اردو اساتذہ میں ڈاکٹر رضوانہ شمسی اور ڈاکٹر لیاقت نیر نے اپنی تحریر کردہ نعتیں سامعین کو سنائیں۔اسلامک اسٹڈیز کے اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر رفیق انجم نے جہاں اُردو میں  حمدیہ کلام سنایا تو وہیں انھوں نے اپنی مادری زبان گوجری میں بھی نعت سنانے کا شرف حاصل کیا۔ بزرگ شاعر رشید قمر نے بھی اردو اور پہاڑی زبان میں نعتیں سنائیں  ۔
 
 
 
 

 سریش چُگ کی زخمی فارسٹ گارڈ کی عیادت 

جموں//پی سی سی ایف سریش چُگ نے کئی افسروں کے ہمراہ کل جی ایم سی جموں کا دورہ کر کے وہاں اومکار سنگھ نامی فارسٹ گارڈ کی عیادت کی جو اپنے فرائض کی انجام دہی کے دوران زخمی ہوئے تھے۔اس موقعہ پر پی سی سی ایف نے کہا کہ محکمہ اُن کے علاج ومعالجہ کا سارا خرچ برداشت کرے گا۔اس موقعہ پر بتایا گیا کہ فارسٹ گارڈ انتہائی مشکل حالات میں کام کرتے ہیں اور انہیں روزانہ25 کلو میٹر تک مسافتیں طے کرناپڑتی ہیں اور اس دوران کئی فارسٹ گارڈ زخمی بھی ہوجاتے ہیں۔پی سی سی ایف نے متعلقہ فارسٹ گارڈ کے حق میں فوری طور سے بینو ویلنٹ فنڈ واگذارکرنے کی ہدایت دی۔