مودی نے آم کھانا سکھایا،اب بتائیں کہ 5 سال میں کیاکیا

15 مئی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

یواین آئی
 نیمچ//کانگریس صدر راہل گاندھی نے آج وزیراعظم نریندرمودی پر یکے بعد دیگرے حملہ کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم نے ملک کو آم کھانا سکھادیاہے ،اب وہ یہ بتائیں کہ انھوں نے پچھلے پانچ سال میں ملک کے مختلف طبقوں کے لیے کیاکیا۔مسٹر گاندھی مدھیہ پردیش کے نیمچ میں مندسورپارلیمانی سیٹ سے کانگریس امیدوار میناکشی نٹراجن کی حمایت میں منعقد انتخابی جلسہ سے خطاب کررہے تھے ۔انھوں نے کہاکہ وزیراعظم نے ملک کو بتادیا کہ وہ آم کیسے کھاتے ہیں ،کیسے چھیلتے ہیں ۔کرتے کی آستین کاٹ کررکھتے ہیں ،تاکہ سوٹ کیس میں جگہ بنے ۔انھوں نے کہاکہ وزیراعظم نے ملک کو یہ سب بتادیا ،اب وہ یہ بتائیں کہ انھوں نے پچھلے پانچ سال میں بے روزگاروں کے لیے کیاکیا۔اپنے تقریبا نصف گھنٹے کے خطاب کی شروعات میں انھوں نے لوگوں سے پوچھا کہ انکا موڈ کیسا ہے ۔اس دوران انھوں نے چوکیدار سے متعلق متنازعہ نعرے بھی لگوائے اور دعوی کیاکہ وہ اسی کے ذریعہ کانگریس کارکنوں کے موڈ کا پتہ کرتے ہیں ۔انھوں نے مسٹر مودی کے اس مبینہ بیان کا بھی ذکر کیا،جس میں انھوں نے کہاتھاکہ بالاکوٹ حملہ کے وقت یہ بات آئی تھی کہ موسم خراب ہونے کی وجہ سے راڈار جنگی طیارہ کا پتہ نہیں لگاپائے گا ۔اس دوران انھوں نے طنز کیاکہ موسم خراب ہوتاہے تو کیا سبھی ہوائی جہاز آسمان سے غائب ہوجاتے ہیں ۔آج کی ریلی میں بھی انھوں نے مدھیہ پردیش کے سابق وزیراعلی شیوراج سنگھ چوہان کو نشانہ پر لیتے ہوئے انکے رشتہ داروں کانام لیا ،جن کے کانگریس حکومت میں مبینہ طورپر قرض معاف ہوئے ہیں ۔انھوں نے سابقہ بی جے پی حکومت کی مدت کار میں مندسور میں ہوئی فائرنگ کا ذکر کرتے ہوئے کہاکہ مسٹر مودی کسانوں کے دکھ درد میں انکے ساتھ کھڑے نہیں ہوئے ۔انھوں نے کہاکہ نیمچ میں سی آر پی ایف کا مرکز ہے ،لیکن پلوامہ حملے کے بعد وزیراعظم نے یہاں آکر جوانوں کے دل کی بات نہیں سنی ۔انھوں نے کہاکہ نیم فوجی دستوں کے سبھی جوانوں کو کانگریس حکومت بننے کے بعد شہید کا درجہ ملے گا ۔مندسور میں 19مئی کو پولنگ ہے ۔یہاں کانگریس کی محترنہ نٹراجن کا مقابلہ موجودہ رکن پارلیمان اور بی جے پی امیدوار سدھیر گپتا سے ہے ۔