تازہ ترین

۔5 برسوں میں صرف پرچار ہوا کام نہیں : پرینکا

14 مئی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

 رتلام // کانگریس کی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا نے آج وزیر اعظم نریندر مودی اور مرکزی حکومت پر سخت حملہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ گزشتہ پانچ سال میں ملک میں صرف پرچار ہوا، کام نہیں۔محترمہ واڈرا نے آج مدھیہ پردیش کے رتلام پارلیمانی حلقے سے پارٹی کے امیدوار کانتی لال بھوریا کی حمایت میں یہاں انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے ، یہ بات کہی ۔ اس دوران وزیر اعلی کمل ناتھ بھی موجود تھے ۔انہوں نے کہا کہ انتخابات کے دوران، ہر پارٹی کے لیڈر ان چیزوں کے بارے میں بات کرتے ہیں، جن سے عوام کو مطلب ہوتاہے لیکن 2014 میں دوسری روایت شروع ہوئی۔ صرف پرچار ہوا ، کام بالکل نہیں ہوا۔ ایسی باتیں ہوئیں جن سے عوام کو محسوس ہوکہ 70 سال میں ملک میں کچھ نہیں ہوا۔ انہوں نے کہا کہ پرچار اور حقیقت میں فرق ہے ۔انہوں نے وزیر اعظم مودی پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے آپ کو مجاہدہ کرنے والے بتاتے ہیں ، مجاہدہ غرور کو توڑتا ہے ، لیکن اس کا مجاہدہ نے غرور نہیں توڑا۔انہوں نے الزام لگایا کہ موجودہ حکومت نے تحویل اراضی قانون کو تباہ کردیا۔ انہوں نے کہا کہ ایک وقت تھا جس میں قبائلیوں کی رضامندي کے ساتھ ان کی زمین حاصل کی جا سکتی تھی ، لیکن آج صنعت کار زمین لے سکتے ہیں اور ان پر قبائلیوں کا حق نہیں بچا۔کانگریس کی جنرل سکریٹری نے نوٹ کی منسوخی اور منریگاکے سلسلے میں بھی مرکزی حکومت پر الزام لگایا۔ اس دوران، انہوں نے کبیر داس کا ایک دوہا کے ذریعے بھی مودی کو نرغے میں لیا۔انہوں نے کہا کہ اگر وزیر اعظم قوم پرست اور تپسیہ کرنے والے ہیں تو پھر کسانوں، نوجوانوں اور عورتوں کو محفوظ کیوں نہیں رکھتے ؟محترمہ واڈرا نے اپنی دادی اور سابق وزیر اعظم اندرا گاندھی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ قبائلی انہیں جو دیتے تھے وہ ہمیں دکھاتی تھیں۔ انہوں نے دعوی کیا کہ ان کی دادی انہیں جنگل، زمین اور جانوروں سے قبائلیوں کے تعلق کے بارے میں بتاتی تھیں ۔انہوں نے کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی نے انتخابات سے دو مہینے پہلے کسان سمان یوجنا کا آغاز کیا، جس میں ہر دن دو روپے دئے جائیں گے ۔ انہوں نے وہاں موجود لوگوں سے پوچھا کہ یہ کسانوں کا احترام یا توہین ۔اس قبائلی اکثریتی پارلیمانی حلقے میں محترمہ واڈرا کی پہلی ریلی تھی ۔ریلی کے دوران،کئی بار چوکیدار سے متعلق متنازع نعرے لگائے گئے ۔یو این آئی