تازہ ترین

اپریل فول

کہانی

14 اپریل 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

منتظر یاسر
شام کو اسلم کام سے فارغ ہو کر گھر آ رہا تھا۔وہ کسی سوچ میں ڈوبا تھا اور خود سے ہی ہنس رہا تھاکہ اچانک اس نے اپنے دوست کو دوڑتے ہوئے دیکھا ۔ اس کی شکل ہی تبدیل ہو گئی تھی کیونکہ اسکے کپڑے پھٹے ہوئے تھے اور اس کے ماتھے سے پسینہ ٹپک رہا تھا۔ اسلم  نے اس کو روکا اور اس طرح گھبراہٹ کے عالم میں دوڑنے اور پسینے سے تر بہ تر ہونے کی وجہ پوچھی ،اُس نے خوفزدہ نگاہوں سے دائیں بائیں دیکھتے ہوئے بتایا کہ اُن کے گائوں کے پرائمری سکول میں گرینیڈ پھٹا ہے۔بہت سارے بچے زخمی ہوگئے۔یہ سن کر اسلم کے ہوش اڑ گئے ، کیونکہ اس کے دو بچے بھی اسی اسکول میں پڑھتے تھے ۔ وہ الٹی سیدھی باتیں کرنے لگا اور چیختے چلاتے گھر کی طرف دوڑنے لگا۔
وہ جب گھر پہنچا تو دیکھا کہ اس کے دونوں بچے صحن میں کھیل رہے تھے۔ اس نے دونوں کو گلے سے لگایا اور دونوں کے کپڑے اتار کر ان کے انگ انگ کو دیکھنے لگا ۔ جب اس کی بیوی نے دیکھا تو اس نے اسلم سے کہا ’’کیا تم پاگل ہو گئے ہو جو بچوں کے کپڑے اتاردیئے اور انہیں اس طرح کیا دیکھتے ہو؟‘‘۔اسلم نے تھرتھراتے ہونٹوں سے کہا ’گر‘ ’ گرـ‘ گرنیڈ ’ہ‘  ’ہ‘ ہوا تھا نا ان کے اسکول میں،کیا یہ سچ میں میرے بچے آصف اور عاصم ہیں؟کیا یہ سچ میں زندہ ہیں؟ بیوی نے کہا ہو کیا گیا ہے تم کو گرنیڈ ، اسکول، یہ سب کیا کہہ رہے ہو ۔ آج تو اتوار ہے آج تو اسکولوں کی چھٹی ہوتی ہے ۔ اسلم نے کہا مجھے تو خورشیدنے یہ سب کہا کہ ہمارے گاؤں کے پرائمری اسکول میں گرنیڈ۔۔۔۔۔۔۔ بیوی بولی ارے ہاں ! میں تو بھول ہی گئی تھی خورشید بھائی نے ایک چھٹی دی تھی  اور آپ کو دینے کے لیے کہا تھا یہ لیجئے ، اسلم نے جونہی چٹھی کھولی تو دیکھا اس میں لکھا تھا ’’اپریل فول‘‘۔
فرصل کولگام کشمیر،رابطہ :- 9682649522