کنگن میں منافع خوروں کے وارے نیارے

مرغ 250 روپے فی کلو فروخت، مقامی آبادی نالاں

12 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

ارشاد احمد
گاندربل//کنگن میں ناجائز منافع خوروں کی بے تحاشہ لوٹ کھسوٹ جاری رہنے سے مقامی آبادی نے برہمی کا اظہار کیا ہے۔سرینگر جموں شاہراہ کے مسلسل بند رہنے کے باعث اشیاء خورد و نوش کی قلت پیدا ہونے سے ناجائز منافع خوروں نے محکمہ امور صارفین کے مقرر کردہ نرخ ناموں کو بالائے طاق رکھ کر قیمتوں میں ہوشربا اضافہ کرکے صارفین کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے۔اکہال کنگن کے ایک شہری فیاض احمد بٹ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ کنگن میں سبزی فروشوں،میوہ فروشوں، قصابوں،مرغ فروشوں اور ایل پی جی گیس ڈیلروں نے اپنی مرضی کے مطابق  قیمتوں میں اضافہ کردیا ہے۔جموں سرینگر شاہراہ کے بند ہونے سے قبل مرغ 120 روپے فروخت کئے جاتے تھے جو آج 250 روپے فروخت کئے جارہے ہیں۔ اسی طرح سبزیوں اور میوہ جات بھی چوگنی قیمت پر فروخت کئے جارہے ہیںاور ضلع انتظامیہ کی جانب سے کوئی کارروائی نہیں کی جارہی ہے۔ادھر وسن کنگن میں رسوئی گیس 780 روپے کے بجائے 950 روپے فی سلنڈر فروخت کیا جارہا ہے۔ ہیں۔ سب ڈویڑنل مجسٹریٹ کنگن مسرت ہاشم نے اس ضمن میں کہا کہ مارکیٹ چیکنگ کے دوران ناجائز منافع خوروں کے خلاف کارروائی کی  جائے گی ۔