تازہ ترین

بجلی کی بحرانی کیفیت مزید شدت اختیار کرنے کا امکان

تھرمل پاور کارپویشن کا نوٹس ،18فروری سے سپلائی منقطع ہوگی

12 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

اشفاق سعید
سرینگر //پہلے سے ہی بجلی کی بحرانی صورتحال سے گزر رہی ریاست کو اب نیشنل تھرمل پاور کارپوریشن (NTPC)نے انتباہ دیا ہے کہ وہ بجلی کے بقایا جات کی عدم ادائیگی کی صورت میں 18فروری سے سپلائی  بند کر دیں گے تاہم ریاستی سرکار کا کہنا ہے کہ کمپنی سے بات کر کے بجلی سپلائی کو بند نہیں ہونے دیا جائے گا ۔ریاست کو بجلی فراہم کرنے والی این ٹی پی سی نامی کارپوریشن کے مطابق ریاستی سرکار 1,600 کروڑ روپے کی مقروض ہے اور اگر یہ رقوم ادا نہ کی گئی تو کمپنی 18فروری کی نصف رات سے ریاست کو یہ بجلی سپلائی بند کر دے گی ۔ کارپوریشن کے مطابق انہوں نے 5فروری کو دیگر ریاستوں جن میں تلنگامہ ، کرناٹکا ،اور آندراپردیش شامل ہیںکے نام بھی نوٹس جاری کی ہے اور اُن سے کہا گیا ہے کہ وہ 60روز کے اندر اندر  4,138.39کروڑ کی بقایارقم ادا کریں۔
اُن ریاستوں کے خلاف کارروائی اس لئے عمل میں نہیں لائی گئی کیونکہ انہوں نے وقت پر رقوم واگزار کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے ۔کارپوریشن کے مطابق جموں وکشمیر سرکار کو بھی اس کیلئے نوٹس جاری کیا گیا تھا، تاہم اُن کی جانب سے کوئی جواب نہیں آیا جس کے بعد کارپوریشن نے سی ای آر سی ایس قوانین کے تحت نوٹس جاری کی ۔کارپوریشن کے مطابق ریاستی سرکار کے پاس کمپنی کا  1,626.01 کروڑ بقایاہے جسے ریاست ادا کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہے ۔کارپوریشن کے مطابق اس فیصلے سے ریاست کو ،دادری ، کولڈیم ، فراکا ، اویرہ ، رہندہ اور انچہار سے ملنے والی 939.03میگاواٹ بجلی کی کمی کا سامنا ہو گا تاہم کارپوریشن نے یہ بھی کہا ہے کہ اگر ریاستی سرکار 18فروری سے پہلے ہی بقایا رقوم فراہم کرتی ہے تو اس صورت میں بجلی نہیں کاٹی جائے گئی اور اگر 18فروری تک اس سلسلے میںہم سے رابطہ نہیں ہوتا تو ریاست میں یہ کارپوریشن بجلی سپلائی کو بند کرنے پر مجبور ہو جائے گی ۔کشمیر عظمیٰ نے جب اس حوالے سے کمشنر سکریٹری پاور ہردیش کمار سے بات کی تو انہوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ ہم اس سلسلے میں بہت جلد کمپنی سے بات کریں گے اور ریاست میں کس بھی صورت میں بجلی سپلائی کو بند نہیں ہونے دیا جائے گا ۔انہوں نے کہا کہ ریاستی سرکار کو بھی اس حوالے سے آگاہ کیا گیا ہے اور آئندہ کچھ دنوں میں کچھ پیسہ ادا بھی کئے جائیں گے ۔