تازہ ترین

سانحہ زینہ کدل : 23 سال قبل جب فورسز نے 7 شہریوں کو دکانوں میں گولیوں سے بھون ڈالا

12 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیو ڈسک
سرینگر// مسلم خواتین مرکز کے ایک وفدنے چیئرپرسن یاسمین راجا کی قیادت میں 10 فروری کو زینہ کدل جا کرمرحوم مشتاق احمد خان کے گھر جاکر انکے اہل خانہ کے ساتھ اظہار یکجہتی کی جنہیں فورسز نے دیگر7 کشمیری نوجوانوں کے ہمراہ  10 فروری 1995 کودکانوں میں گولیاں مارکر جاں بحق کیا۔ یاسین راجا نے کہا شہداء کی عظیم قربانیوں کو رائیگاں نہیں ہونے دیا جائے گا اور انکے مشن کو پایہ تکمیل تک پہنچا کر ہی دم لیا جائے گا۔ انہوں نے کہا اس قتل نہ حق میں ملوث فورسز اہلکار ابھی بھی کھلے عام گھوم رہے ہیں اور جاں بحق افرادکے اہل خانہ ہنوز انصاف سے محروم ہیں۔