غیر حاضرطبی عملہ کیخلاف کھڑی باوا میں لوگوں کا احتجاج

برفباری متاثرہ بیماروں کیلئے طبی مدد کی اپیل ،ملازمین کیخلاف کارروائی کی جائے گی:سی ایم او

12 جنوری 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

محمد تسکین
 بانہال // ضلع رام بن میں تحصیل کھڑی کی گوجر بستی باوا علاقے میں قائم ایک طبی مرکز کے مسلسل بند ہونے اور طبی عملہ کے غائب ہونے کے خلاف مقامی لوگوں نے باوا کھڑی میں احتجاج کیا اور برفباری اور سردی سے بیماریوں کا شکار ہوئے لوگوں کیلئے فوری طور پر طبی امداد فراہم کرنے کی حکام سے اپیل کی ہے۔ ضلع رام بن میں تحصیل کھڑی میں گوجر بستیوں کے مرکز باوا میں جمعہ کو طبی سہولیات کی عدم دستیابی کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ مہو سڑک پر باوا میں قائم طبی مرکز میں پچھلے دو ہفتوں سے تعینات عملہ موجود  ہی نہیں ہے جس کی وجہ سے آکھرن ، ہل باوا اور آڑمرگ جیسے دور علاقوں سے باوا کے طبی مرکز کا پیدل رخ کرنے کے بعد مریضوں کو مایوس ہونا پڑتا ہے۔انہوں نے کہا کہ علاقہ کی بھاری آبادی کیلئے یہاں تعینات ملازمین مبینہ طور کبھی کبھار اور کسی کے دورے کے دوران ہی رخ کرتے ہیں جس کی وجہ سے اس مرکز کا ہونا یا نہ ہونا ایک ہی بات بن کر رہ گیا ہے۔ ایک مقامی شہری چودھری محمد یوسف نے کشمیرعظمیٰ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ علاقہ میں برفباری کی وجہ سے کئی بیماریوں نے بچوں ، بوڑھوں اور مرد و خواتین کو گھیر لیا ہے جس کی وجہ سے لوگوں کو مشکلات کا سامنا ہے اور ادویات اور طبی مشورہ دستیاب نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ باوا کے طبی مرکز کا رخ کرنے والے مریضوں کو یہاں سے مہو منگت اور کھڑی  بانہال کے ہسپتالوں کا رخ کرنا پڑتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہاں تعینات دونوں ملازمین ہمیشہ کی طرح دو ہفتوں سے غائب ہیں اور طبی مرکز میں موجود ادویات لوگوں کے کام نہیں آرہی ہیں اور لوگ پریشان ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جمعہ کے روز بھی لگ بھگ سات مریض جن میں پانچ بچے بھی شامل تھے کو طبی مرکز باوا لایا گیا لیکن اس کے مقفل ہونے کی وجہ سے کئی بیماروں کو برفباری میں مہو اور منگت میں طبی مدد کے حصول کیلئے جانا پڑا۔ انہوں نے کہا کہ علاقے میں برفباری اور شدید سردی کی وجہ سے معرض وجود آئی تکلیفوں میں مبتلا بیماروں کے علاج کیلئے فوری طور پر ادویات اور یہاں تعینات عملہ کی موجودگی یقینی بنائی جائے تاکہ لوگوں کو مزید مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔ انہوں نے علاقے میں ایک ایم بی ایس ایس ڈاکٹر اور ایک ایمبولینس کی بھی گورنز انتظامیہ سے اپیل کی ہے۔ اس سلسلے میں بات کرنے پر چیف میڈیکل افسر رام بن ڈاکٹر سیف الدین خان نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ علاقے میں ملازمین کی غیر حاضری کا معاملہ اْن کی نوٹس میں بھی آیا ہے اور اس بارے میں ضروری کارروائی کی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہاں تعینات سٹاف کو متعلقہ بلاک میڈیکل افسر کے ذریعے مطلع کیا گیا ہے ہے اور سٹاف کو سنیچر کی صبح باوا ، کھڑی کے طبی مرکز پر حاضر ہونے اور وہاں سے ضلع حکام کومطلع کرنے کی  ہدایت جاری کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس طبی مرکز میں وافر مقدار میں ادویات موجود ہیں اور سنیچر کی صبح یہاں تعینات سٹاف کو یہاں رپورٹ کرنے کی ہدایت دی گئی ہے تاکہ لوگوں کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ 

تازہ ترین