تازہ ترین

نیشنل کانفرنس کا گورنر راج نافذ کرنے کا مطالبہ

21 اپریل 2017 (00 : 02 AM)   
(      )

منیر خان
راجوری//نیشنل کانفرنس ورکران نے ریاست میں گورنر راج نافذ کرنے کا مطالبہ کیاہے ۔ راجوری کے ڈاک بنگلہ میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے این سی کارکنان نے کہاکہ ریاست میں مخلوط سرکار مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے جس کی وجہ سے تشدد کے واقعات میں روز بروز اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ عام لوگوں کو تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے، اس کے بعد فورسز اپنی پہلوانی دکھانے کے لئے ویڈیوز کو سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کررہے ہیں تاکہ عوام کی آواز کو طاقت کے ذریعہ دبایا جاسکے ۔ضلع صدر شفاعت خان اور ضلع سیکریٹری شفقت میر نے کہا کہ نیشنل کانفرنس صدر وسابق وزیر اعلیٰ فاروق عبداللہ کی جیت کے بعداگر چہ اس بات کا واضح ثبوت ملا ہے کہ باطل پر حق کی جیت ہوئی ہے تاہم فورسزکی یلغار ابھی بھی جاری ہے اوراسکولوں ،کالجوں میں آرمی اور دیگر نیم فوجی دستے داخل ہوکر طلباء وطالبات کو نہ صرف زدوکوب کررہے ہیں بلکہ ہمیشہ کے لئے معذرو بنارہے ہیں جس پر پی ڈی پی سرکار کی شراکت دار بھاجپا سرکار کے کچھ وزیر اس تشدد کو جائز قرار دیتے ہوئے مزید کارروائی کرنے پر زور دے رہے ہیں جو نہایت ہی افسوسناک ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعلیٰ کرسی کو بچانے کے چکر میں نوجوانوں کو موت کے گھاٹ اتارنے میں مصروف ہیں ۔ انہوں نے وزیر اعلیٰ سے اپیل کی کہ وہ مستعفی ہوکر ریاستی گورنر کو ریاست جموں وکشمیر کی باگ ڈور سنبھالنے کیلئے کہیں تاکہ قتل وغارت بندہوسکے ۔اس موقعہ پر دیگر کارکنا ن بھی موجو دتھے ۔