تازہ ترین

وائس چانسلر جموں یونیورسٹی پرطلباء مخالف پالیسیاں اپنانے کاالزام

21 اپریل 2017 (00 : 02 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
 جموں//جموں یونیورسٹی کیمپس میں مختلف تنظیموں کے لیڈران نے مشترکہ طورپر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یونیورسٹی کے وائس چانسلر پر طلباء مخالف پالیسیاں اپنانے کاالزام عائدکرتے ہوئے حکومت سے وائس چانسلر کو عہدے سے ہٹانے کامطالبہ کیاہے۔ یہاں منعقدہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے نیشنل سٹوڈنٹس یونین آف انڈیاکے لیڈر سنی پریہارنے کہاکہ یونیورسٹی انتظامیہ طلباء کے مفادات کے مخالف کام کررہی ہے۔انہوں نے کہاکہ سپورٹس ایونٹ میں قومی ترانے کی بے حرمتی کرنے والے کشمیری نوجوانوں کے خلاف کارروائی کرنے میں وائس چانسلرناکام رہے ۔انہوں نے کہاکہ وائس چانسلرکاطلباء مخالف رویہ باعث تشویش اورناقابل قبول ہے۔انہوں نے کہاکہ وائس چانسلر نے طلباء کوخوف وہراس کاشکاربنایواہے ۔اس دوران خطاب کرتے ہوئے نزمہ شمشیر ترجمان گوجربکروال سٹوڈنٹس ویلفیئرایسوسی ایشن نے کہاکہ ہماری تنظیم نے گوجربکروال کلچروثقافت کواُجاگرکرنے اورمسائل پرتبادلہ خیال کرنے کی غرض سے ’’صدائے گوجر‘‘ پروگرام منعقدکرنے کافیصلہ لیاتھاجس کے لیے ڈین سٹوڈنٹس ویلفیئرنے 17 اپریل کو جنرل زورآورسنگھ آڈیٹوریم میں پروگرام کیلئے منظوری دیتے ہوئے ہال بُک کیاتھا  لیکن چندروزبعدہمیں بتایاگیاکہ آپ کے پروگرام کیلئے بکنگ منسوخ کردی گئی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ اس کے بعد طلباء تنظیم کاوفد وائس چانسلر جموں یونیورسٹی سے بھی ملااورانہوں نے پروگرام میں نہ صرف مہمان خصوصی کے طورپر آنے کی دعوت قبول کی بلکہ اس کیلئے 25 اپریل کوپروگرام منعقدکرنے کی بھی اجازت دی ۔طالب چوہدری نے کہاکہ اس کے بعدایک مرتبہ پھر ڈین سٹوڈنٹس ویلفیئر نے 28 اپریل کوپروگرام کیلئے ہال بُک کیالیکن پھرسے ہال کی بکنگ منسوخ کردی گئی۔انہوں نے کہاکہ ڈین سٹوڈنٹس ویلفیئرکے مطابق کچھ عناصرنے ان سے کہاہے کہ گوجربکروال ایسوسی ایشن کے صدائے گوجر پروگرام سے یونیورسٹی کے حالات خراب ہوں گے ۔انہوں نے کہاکہ پروگرام کے انعقادکوروکناغیرجمہوری ہے ۔نیشنل سیکولر فورم کے لیڈر رشی کیش رانانے کہاکہ وائس چانسلر کارویہ ڈکٹیٹرانہ ہے جسے طلباء کسی بھی صورت برداشت نہیں کریں گے۔